خصوصی افراد کی بحالی اورنگہداشت حکومتی ترجیحات میں شامل ہونا چاہئے

خصوصی افراد کی بحالی اورنگہداشت حکومتی ترجیحات میں شامل ہونا چاہئے،ایمل ولی خان

خصوصی افراد ہمارے معاشرے کا ایسا ناقابل فراموش حصہ ہیں جوسماج کیلئے بوجھ نہیں بن سکتے۔

معاشرے میں سماجی،معاشی اورثقافتی وقار کا شعور پیدا کرنے کی ضرورت ہے۔

اے این پی نے خصوصی افراد کی فلاح پر توجہ کے ساتھ ساتھ مختلف اضلاع میں تعلیمی ادارے بھی کھولے۔

بیگم نسیم ولی سوشل ویلفیئر کمپلیکس کا قیام خصوصی افراد کی بحالی کیلئے اہم سنگ میل ہے۔

دین اسلام میں خصوصی افراد کی عزت و تکریم اور ان کا خیال رکھنے کا خصوصی طور پر حکم دیا گیا ہے۔

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی ڈپٹی جنرل سیکرٹری ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ خصوصی افراد ہمارے معاشرے کا ایسا ناقابل فراموش حصہ ہیں جوسماج کیلئے بوجھ نہیں بلکہ یہ بوجھ بانٹنے کیلئے اپنی صلاحیتیں استعمال کر رہے ہیں اور ہم سب کو زندگی کی مصروفیات سے وقت نکال کر خصوصی افراد کی مدد کیلئے وقت نکالنا چاہئے۔خصوصی افراد کے حقوق کے عالمی دن کے موقع پراپنے پیغام میں انہوں نے کہا کہ یہ دن منانے کا مقصدخصوصی افراد کو ملک کا مفید شہری بنانے کیلئے مربوط اقدامات کرنا ہے، دین اسلام میں خصوصی افراد کی عزت و تکریم اور ان کا خیال رکھنے کا خصوصی طور پر حکم دیا گیا ہے اور ان کے حقوق کیلئے کام کرنا ہماری اخلاقی، سماجی اور مذہبی ذمہ داری ہے۔عوامی نیشنل پارٹی نے اپنے دور حکومت میں نہ صرف خصوصی افراد کی فلاح پر خصوصی توجہ دی بلکہ ان کی تعلیم و تربیت کیلئے بھی مخصوص اضلاع میں تعلیمی ادارے بھی کھولے جس میں بیگم نسیم ولی خان سوشل ویلفیئر کمپلیکس سمیت دیگر اضلاع میں قائم کئے گئے ادارے قابل ذکر ہیں،انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی صوبائی حکومت نے عوامی نیشنل پارٹی کے اس حوالے سے انقالابی اقدامات کو فروغ دیا ہوتا تو اس میں نمایاں بہتری آ سکتی تھی تاہم بدقسمتی سے صوبائی حکومت نے اپنے پانچ سالہ دور میں خصوصی افاراد کی بحالی ونگہداشت کو فراموش کئے رکھا۔انہوں نے کہا کہ خصوصی افراد کو معاشرے میں با وقار مقام دلانے کیلئے معاشرے کے ہر طبقے کو اپنا کردارادا کرنا چاہئے کیونکہ خصوصی افراد اپنے عزم ، حوصلے اور جذبے سے زندگی کے نامساعد حالات کا مقابلہ کر رہے ہیں۔
ایمل ولی خان نے کہا کہ خصوصی افراد کوتعلیم و تربیت کی بہترین سہولیات فراہم کر کے انہیں معاشرے کا مفید شہری بنایا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ خصوصی افراد کی بحالی اورنگہداشت کیلئے اقدامات حکومتی ترجیحات میں شامل ہونا چاہئے ،انہوں نے کہا کہ معاشرے میں خصوصی افراد کے حوالے سے سماجی،معاشی اورثقافتی وقار کا شعور پیدا کرنے کی ضرورت ہے اوریہ دن منانے کا مقصد خصوصی افراد کے معاشی و سماجی حقوق سے متعلق لوگوں میں آگاہی پیدا کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ زندگی کے تمام شعبوں میں خصوصی افراد کو مساوی ترقیاتی مواقع فراہم کرنے کیلئے کوششیں تیز کرنی چاہئیں۔

Facebook Comments