May-2015

 

مورخہ 24مئی 2015ء بروز اتوار

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ بلدیاتی انتخابات کے حوالے سے جو سیاسی فضا قائم ہو گئی ہے اس کے نتیجے میں اے این پی کی کامیابی یقینی ہو چکی ہے جبکہ خیبر پختونخوا کے عوام اب دھوکہ دینے والوں کا بوریا بستر گول کر دیں گے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے چوکی ممریز پبی میں ایک بڑے جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا ،،انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی جانب سے تبدیلی کا نعرہ عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکنا تھا تاہم عوام اب بیدار ہو چکے ہیں اور اب وہ خالی خولی نعروں پر یقین نہیں کریں گے ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ بلدیاتی الیکشن کے شیڈول کے بعد کسی بھی ترقیاتی کام کا جواز نہیں بنتا کیونکہ یہ الیکشن کمیشن کے ضابطہ اخلاق اور آئین کی خلاف ورزی ہے اور بدقسمتی سے صوبائی حکومت ہی اس میں ملوث ہے انہوں نے کہا کہ دھاندلی کا شور مچانے والوں نے خیبر پختونخوا میں بدترین دھاندلی پر آنکھیں کیوں بند کر رکھی ہیں ،انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن بلدیاتی الیکشن میں بے دریغ سرکاری مشنری کے استعمال کو روکنے کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھائے انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے اپنے لوگ بھی تحریک انصاف سے نالاں ہیں اور وہ اے این پی کو ہی اپنا نجات دہندہ تصور کرتے ہیں، انہوں نے کہا کہ حکومت بلدیاتی انتخابات میں دھاندلی کا سوچ رہی ہے تاہم اسے ناکامی کے سوا کچھ نہیں ملے گا ۔انہوں نے کہا کہ بلدیاتی انتخابات میں حکومتی جماعتوں کو شکست سے دوچار کریں گے ،اور اے ان پی کے امیدواروں کی جیت کو یقینی بنانے کیلئے کارکن رابطوں کو مزید تیز کریں انہوں نے کہا کہ صوبے کی ترقی کا سفر جاری رکھنے کیلئے عوام بلدیاتی الیکشن میں اے این پی کے امیدواروں کو ووٹ دیں تا کہ عوام اور حوبے کے مفادات کا تحفظ کیا جا سکے۔،انہوں نے کہا کہ اے این پی منافقت پر یقین نہیں رکھتی اور جہاں بھی عوام یا صوبے کے حقوق غصب کرنے کی کوشش کی گئی اے این پی اس کے خلاف بھرپور مزاحمت کرے گی ، انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن بلدیاتی الیکشن میں سرکاری مشنری کے استعمال کو روکنے کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھائے انہوں نے اپیل کی کہ عوام صوبے کی ترقی کا سفر جاری رکھنے کیلئے اپنا قیمتی ووٹ اے این پی کو دیں،میاں افتخار حسین نے کہا کہ عوام پی ٹی آئی کی حکومت سے نالاں ہیں جس نے صوبے کے عوام کو مسائل کی دلدل میں دھکیل دیا ہے اور انشاء اللہ 30مئی کا سورج اے این پی کی فتح کی نوید لے کر طلوع ہو گا ،اور بلدیاتی الیکشن میں کامیابی کے بعد عوام کے دیرینہ مسائل اب ان کی دہلیز پر حل کئے جائیں گے ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ اے این پی عوامی خدمت کا سلسلہ ماضی کی طرح مستقبل میں بھی جاری رکھے گی

مورخہ 25مئی 2015ء بروزپیر
پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر امیر حیدر خان ہوتی نے کہا ہے کہ سہ فریقی اتحاد بلدیاتی انتخابات کے بعد بھی قائم رہے گا ،پختون باہمی اتحاد سے سونامی کو واپس بنی گالہ بھیج کر دم لیں گے ،عمران خان پختون نوجوان سے کئے ہوئے وعدوں میں مکمل طورپر ناکام ہوچکے ہیں 30مئی کو کامیابی اے این پی اور اس کے اتحادیوں کی ہوگی،سرکاری آر اوز حکومتی دباؤ میں نہ آئیں اور صاف وشفاف انتخابات کے انعقاد کو ممکن بنائیں بصورت دیگرانہیں اپنے کئے کا حساب کتاب دینا ہوگا 30مئی نام نہاد تبدیلی والوں کا یوم حساب ہے اورپختون قوم اس دن اپنا حساب چکتا کرے گی، ان خیا لات کا اظہار انہوں نے پشاور کے مختلف علاقوں تہکال پایاں ،سوڑیزئی اور سفید ڈھیری میں بلدیاتی انتخابی مہم کے سلسلے میں منعقدہ جلسوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، امیر حیدر خان ہوتی نے کہا کہ کہ اے این پی نے عوامی حقوق کے تحفظ کا تہیہ کر رکھا ہے اور بلدیاتی الیکشن میں کامیابی کے بعد پارٹی عوامی خدمت کا سلسلہ جاری رکھے گی ،انہوں نے کہا کہ اے این پی بلدیاتی الیکشن میں کلین سویپ کرے گی ، اور انشاء اللہ 30 مئی کا سورج اے این پی کی کامیابی کی نوید لے کر طلوع ہو گا،انہوں نے کہا کہ اے این پی واحد سیاسی جماعت ہے جس نے ہمیشہ عوامی مفادات اور حقوق کا تحفظ کیا ہے ، اور عوام کی پارٹی میں جوق در جوق شمولیت اس بات کا واضح ثبوت ہے ،انہوں نے کہا کہ تبدیلی کا نعرہ لگانے والوں نے عوامی مشکلات میں کمی کی بجائے اضافہ کر دیا ہے اور صوبے کے عوام اب انہیں ووٹ دینے پر پچھتا رہے ہیں، امیر حیدر خان ہوتی نے کہا کہ اے این پی منافقت کی سیاست پر یقین نہیں رکھتی اور سہ فریقی اتحاد کی فتح یقینی ہے ، انہوں نے کہا کہ سہ فریقی اتحاد آنے والے جنرل الیکشن میں بھی کامیابی کی طرف ایک قدم ہے اور پختونوں کے حقوق غصب کرنے والوں کو بھاگنے نہیں دینگے۔ صوبائی صدر نے کہا کہ بلدیاتی الیکشن میں سہ فریقی اتحاد کی کامیابی یقینی ہے اور صوبے کی ترقی کیلئے یہ کامیابی سنگ میل ثابت ہو گی اور فتح کا سورج سہ فریقی اتحاد کے حق میں طلوع ہو گا ، امیر حیدر ہوتی نے کہا کہ اے این پی واحد سیاسی جماعت ہے جو عوام کو موجودہ بحرانوں سے نکالنے کی صلاحیت رکھتی ہے اور اپنی انسان دوست اور مثبت پالیسیوں کے باعث پارٹی کی مقبولیت کا گراف دن بدن بڑھتا جا رہا ہے ، انہوں نے کہا کہ سہ فریقی اتحاد میں شامل جماعتیں بلدیاتی الیکشن میں کلین سویپ کریں گی اور یہ اتحاد مستقبل میں بھی برقرار رہے گا۔اے این پی ضلع پشاور کے صدر ملک نسیم خان ، خوشدل خان ایڈوکیٹ ، ارباب نجیب اللہ ، عالمگیر خلیل اور پیپلز پارٹی کے رہنما شاہ طہماس نے بھی اس موقع پر خطاب کیا ۔

مورخہ 25مئی 2015ء بروزپیر

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ پختون قوم بیدارہوچکی ہے اوراسے لالچ اورسازش سے دبایا نہیں جاسکتا عوام کو جھوٹے وعدوں سے دھوکہ دیاگیا لیکن اب انہیں کوئی مزید سبزباغات دکھاکر ورغلا نہیں سکتا اور نوجوان اور بزرگ مل کر 30مئی کو سونامی کی بیماری سے اس صوبے کو آزاد کرادیں گے ۔ان خٰالات کا اظہار انہوں نے پبی کے علاقے قاسم کلے میں انتخابی مہم کے سلسلے میں جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا ،انہوں نے کہا کہ 30مئی نام نہاد تبدیلی والوں کا یوم حساب ہے اورپختون قوم اس دن جھوٹے دعوے اور وعدے کرنے والوں سے بدلہ لے گی، انہوں نے کہا کہ عمران خان پختون نوجوان سے کئے ہوئے وعدوں میں مکمل طورپر ناکام ہوچکے ہیں بلدیاتی انتخابات میں کامیابی اے این پی اور اس کے اتحادیوں کی ہوگی،سرکاری آر اوز حکومتی دباؤ میں نہ آئیں اور صاف وشفاف انتخابات کے انعقاد کو ممکن بنائیں، پختون قوم کی خدمت اے این پی کی فرض اولین ہے ،بنی گالہ سے حکومت چلانے والوں کو بلدیاتی انتخابات میں اپنے قد کاٹھ کااندازہ ہوجائے گا انہوں نے کہاکہ عوام سوچ سمجھ کر اپنا ووٹ کا استعمال کریں کسی کے خوشنما دعوؤں اوروعدوں پریقین نہ کریں میاں افتخار حسین نے کہاکہ بلدیاتی انتخابات میں کامیابی کے بعد صوبے میں ترقیاتی عمل کا پہیہ جہاں رکا تھا وہاں سے دوبارہ چلے گاانہوں نے تحریک انصاف پر کڑی تنقید کی اورکہاکہ عام انتخابات میں پختونوں کا مینڈیٹ چرالیاگیاہے انہوں نے کہاکہ پختون بیدارہوچکے ہیں اور وہ سونامی والوں سے اپنا بدلہ 30مئی کے بلدیاتی انتخابات میں لیں گے انہوں نے کارکنوں کو ہدایت کی کہ وہ دن رات ایک کرکے حکمرانوں کا اصل چہرہ عوام کے سامنے بے نقاب کریں تاکہ تبدیلی والوں کو واپس بنی گالہ بیجھ دیاجائے ۔انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ 30مئی کو انتخابی نشان لالٹین پر مہر ثبت کریں ۔

مورخہ : 23.5.2015 بروز ہفتہ

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخارحسین نے کہا ہے کہ 30 مئی کو غیور پختون اے این پی کے نامزد اُمیدواروں کو کامیاب کرینگے اور جھوٹے نعروں اور دعوؤں کرنے والوں کو مسترد کردینگے۔ اُنہوں نے کہا کہ عوام تحریک انصاف کی حکومت سے نالاں ہو چکے ہیں اور تحریک انصاف کی حکومت نے عوام کے مسائل اور مشکلات حل کرنے کی بجائے اُن کو مسائل کے دلدل میں دھکیل دیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار اُنہوں نے ضلع نوشہرہ پبی ون خان شیر گڑھی میں بلدیاتی الیکشن کے سلسلے میں منعقدہ جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اے این پی کے رہنما نے کہا کہ اے این پی نے اپنے پانچ سالہ دورحکومت میں اس صوبے اور اس کی عوام کیلئے جو کچھ کیا ہے اور جو کامیابیاں حاصل کی ہیں وہ پاکستان کی 68 سالہ تاریخ میں کسی دوسری سیاسی پارٹی نے حاصل نہیں کیں ہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت عوام کو ٹرانسفارمرز ، سڑکوں ، سیمنٹ اور ترقیاتی منصوبوں کی لالچ دیکر اُن کی رائے بدلنے کی ناکام کوششیں کررہی ہے جبکہ دوسری جانب تحریک انصاف کے نامزد اُمیدواروں نے پولنگ سٹیشنز کو اپنا ذاتی پرائیویٹ سکولوں میں منتقل کی ہیں جو کہ کھلی دھاندلی اور الیکن کے قواعد و ضوابط کی خلاف ورزی ہے۔ اُنہوں نے الیکشن کمیشن سے کہا ہے کہ اس کا فوری طور پر نوٹس لیں۔ اُنہوں نے تمام عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنا قیمتی ووٹ اے این پی کے نامزد اُمیدواروں کے حق میں استعمال کر کے تبدیلی اور نئے پاکستان کا جھوٹا نعرہ لگانے والوں کا بوریا بستر گول کر دے۔

مورخہ : 23.5.2015 بروز ہفتہ
پشاور ( پ ر )سابق وزیراعلیٰ اور اے این پی کے صوبائی صدر امیرحیدرخان ہوتی ایم این اے نے کہاہے کنٹینروں پر ناچنے والے عوام کی خدمت نہیں کرسکتے ، 30مئی کی تاریخ نام نہاد سونامی والوں کی تابوت میں آخری کیل ثابت ہوگی، ،پختون قوم باہمی اتحاد سے نام نہاد تبدیلی والوں اٹک پار بیجھے گی ، بلدیاتی انتخابات میں کامیابی اے این پی اور اس کے اتحادیوں کی ہوگی عمران خان پختون نوجوان سے کئے ہوئے وعدوں میں مکمل طورپر ناکام ہوچکے ہیں وہ حال ہی میں عوامی نیشنل پارٹی میں شامل ہونے والی سابق ایم پی اے شازیہ اورنگ زیب اور ان کے شوہر اورنگ زیب خان کی طرف سے اپنی رہائش گاہ چک ہوتی میں دیئے گئے استقبالیہ تقریب میں خطاب کررہے تھے استقبالیہ میں ہزاروں کارکنوں نے شرکت کی امیرحیدرخان ہوتی کو گاڑیوں کے جلوس میں جلسہ گاہ پہنچایاگیا تو ڈھول کی تاپ پر ان کا استقبال کیاگیا اورپرجوش کارکنوں نے ان پر گل پاشی کی ا س موقع پر جے یو آئی کے صوبائی جنرل سیکرٹری مولانا شجا ع الملک اے این پی اورجے یو آئی کے مشترکہ امیدوار برائے ضلع کونسل حاجی عبدالعزیز خان اورتحصیل کونسلر آصف خان نے بھی خطاب کیااستقبالیہ تقریب سے شازیہ اورنگ زیب نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ وہ سیاسی طورپر بٹھک گئی تھی تاہم ان کے جسم میں سرخ خون تھا اورگھوم پھیر کر اپنے گھر واپس آگئی ہے انہوں نے کہاکہ احسان کا بدلہ احسان ہوتاہے اور امیرحیدرخان ہوتی کی اس دھرتی کے لئے بہت بڑے احسانات ہیں ا س لئے اپنے ووٹ کے ذریعے تبدیلی والوں کا راستہ روکیں تقریب میں یونین کونسل چک ہوتی تحریک انصاف کے صدر محمد حامد خان عرف امیرصیب نے اپنی پارٹی سے مستعفی ہوکر اے این پی میں شمولیت کا اعلان کیا امیرحیدرخان ہوتی نے انہیں پارٹی ٹوپی پہنائی اورمبارک بادی امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ انہیں آج بہت زیادہ خوشی ہے مرحوم عبدالخالق خان کے گھر میں انہوں نے لڑکپن گزاری اورآج انہیں دوبارہ اس گھر میں آنے کی اجازت مل گئی ہے انہوں نے کہاکہ شازیہ اورنگ زیب اور ان کے خاندان کے ساتھ سرخ جھنڈے تلے عمر بھر کارشتہ قائم ہوگیاہے اوراب موت ہی ہمیں جدا کرسکیں گی اے این پی کے صوبائی صدر نے کہاکہ پختون کی بقا اسی میں ہے کہ وہ اپنی پختون قیادت ہی کا انتخاب کریں اور صوبے پر مسلط کردہ نام نہاد تبدیل والوں سے جان چھڑایاجائے امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ کہاکہ30مئی کو کامیابی اے این پی اور اس کے اتحادیوں کی ہوگی اورپختون قوم جھوٹے دعوؤں اور وعدوں کرنے والوں سے بدلہ لے گی انہوں نے لوگوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ جب ان کے پیچھے ووٹ مانگنے کے لئے دیگر امیدوارآئے توان سے سوال اٹھائیں کہ اس علاقے کے لئے ان کی کیا خدمات ہیں کیونکہ ووٹ خدمت کا نام ہے اگر وہ لاجواب ہوجائے تو انہیں بتایاجائے کہ اے این پی نے اپنی پانچ سالہ دورحکومت میں رنگ روڈ،سڑکیں ،یونیورسٹی ،میڈیکل کالج ،ہسپتال اور ون ون ٹوٹو کے ساتھ ساتھ بڑے بڑے میگا پراجیکٹ مکمل کئے ہیں اورووٹ اے این پی کاحق ہے امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ جے یو آئی اور اے این پی نے اس سرزمین کے لئے بہت قربانیاں دی ہیں مولانا مفتی محمود اور رہبر تحریک خان عبدالولی خان نے مل کر صوبائی حقوق کے لئے پارلیمنٹ میں آواز اٹھائی اور تمام تر مخالفتوں کا ڈٹ کر مقابلہ کیا انہوں نے کہاکہ ہمارا اتحاد صر ف صرف بلدیاتی انتخابات تک نہیں بلکہ یہ اتحاد عمران خان کو بنی گالہ واپسی تک قائم رہے گا امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ وزیراعلیٰ پرویزخٹک دعویٰ کررہے ہیں کہ انہوں نے پختونوں کا دوسرے طریقے سے خدمت کی ہے لیکن اسلام آباد کے کنٹیروں پر کھڑے ہوکر ناچنے والے قوم کی خدمت نہیں کرسکتے امیرحیدخان ہوتی نے کہا کہ پرویز خٹک میدان میں آئیں اوراپنی دوسالہ کارکردگی کا موازانہ ہماری سابق حکومت سے کریں اگر ان کی کاکردگی بہتر نکلی تو سیاست چھوڑ دیں گے یاپھر میدان اے این پی کو چھوڑ نا پڑی گی اے این پی کے صوبائی صدر نے کہاکہ پختون قوم کے نوجوان بیدارہوچکے ہیں اور انہوں نے سرخ جھنڈا تھام لیا ہے اس لئے یہ قافلہ رواں دواں ہوگا اورکوئی مائی کالعل بھی اسے نہیں روک سکتا اے این پی کے صوبائی صدر نے کہاکہ پختونوں کو اب مزید دھوکہ نہیں دیاجاسکتا اورنہ یہ غیر ت مند قوم لالچ اورسازش سے دبائی جاسکتی ہے انہوں نے کہاکہ 30مئی حقیقی انقلاب برپاکرنے کا دن ثابت ہوگا ۔

مورخہ : 20.5.2015 بروز بدھ

پشاور ( پ ر ) سابق وزیراعلیٰ اوراے این پی کے صوبائی صدر امیرحیدرخان ہوتی نے کہاہے کہ پختون قوم 30مئی کو سونامی کو مستردکرکے انقلاب کا سنگ بنیاد رکھے گی ، لوگ پوچھ رہے ہیں کہ عمران خان کا نیا پاکستان ،روزگار، انصاف اور ترقی کے دعوے کہاں گئے ، دوسال پہلے ہماری حکومت کو بریک نہ لگتی تو آج خیبر پختون خوامیں ہرطرف ترقی اورخوشحالی کا دور دورہ ہوتا وہ یونین کونسل مردان خاص اور محبت آباد میں الگ الگ انتخابی جلسے سے خطاب کررہے تھے جس سے پارٹی کے صوبائی کونسل کے رکن محمد جاوید یوسفزئی ،ضلعی جنرل سیکرٹری لطیف الرحمان اور یوسی مردان خاص سے ضلع کونسل کے امیدوار منیر خان اورتحصیل امیدوار شاہ فاروق نے بھی خطاب کیا امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ صوبائی حکومت سے عوام مایوس ہوچکے ہیں عام انتخابات میں نوے دن میں تبدیلی کے دعوے کئے گئے دوسال پورے ہوگئے لوگوں نے تبدیلی دیکھی اورنہ ہی کپتان کی سونامی نظر آئی نوجوانوں کو روزگار،تعلیم اورمیرٹ کے نام پر ورغلایا گیاآج پی ٹی آئی کے کارکن خود اپنی حکومت اور حکمرانوں سے نالاں ہوچکے ہیں انہوں نے کہاکہ عوام تحریک انصاف کا اصل چہرہ جان گئے ہیں اور وہ مزید دعوؤں اور وعدوں پر یقین نہیں کریں گے انہوں نے کہاکہ صوبائی حکومت کی ڈوریں بنی گالہ سے ہلائی جارہی ہیں اور عمران خان تخت اسلام آباد کے لئے پنجاب میں سیاسی جنگ میں مصروف ہیں انہوں نے کہاکہ عمران خان کے تبدیلی کے دعوے محض ڈھونگ ہے وہ وزیراعظم کے چکر میں سندھ اور پنجاب میں گم ہوگئے ہیں انہیں پختون قوم اور پختون خوا کے مسائل سے کوئی دلچسپی نہیں انہوں نے کہاکہ بلدیاتی انتخابات عوام کے پاس ایک بہتر ہتھیار ہیں ووٹ کی طاقت کے ذریعے پختون دغا باز وں سے بدلہ لے کر رہیں گے اور سونامی کو واپس بنی گالہ بیجھ کر دم لیں گے اے این پی پختونوں کی سیاست کررہی ہے وقت آگیاہے کہ پختونوں میں قومیت کا جذبہ بیدار ہوں پنجاب میں اگر پنجابی لیڈر شپ جیت رہی ہے ، بلوچ میں بلوچی یا پختون اورسندھ میں سندھی یا مہاجر تو خیبرپختون خوا میں پختون لیڈر شپ ہی کا انتخاب وقت کی اہم ضرور ت ہے انہوں نے کہاکہ پختونوں کے مسائل کا حل اے این پی فرض اولین میں شامل ہے اوراقتدار کے بغیر اپنی دھرتی اور قوم کو مسائل سے نکال کر دم لیں گے انہوں نے کہاکہ ہماری دورحکومت میں پہلے سال صوبہ بھر میں کئی میگا پراجیکٹ شروع کئے گئے موجودہ حکومت اپنی دوسالہ حکومت میں صوبہ تو دور کی بات ہے وزیراعلیٰ اپنے آبائی شہر میں ایک بھی میگا پراجیکٹ شرو ع نہ کرسکے امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ انتخابابی نشانات میں حکومتی نے دھاندلی کی ہے اور معزز پختون امیدواروں کو تضحیک آمیز نشانات الاٹ کئے گئے جبکہ اپنے چہیتے امیدواروں کو من پسند نشانات دیئے گئے انہوں نے کہاکہ عوام اپنے ووٹ کے ذریعے پی ٹی آئی والوں سے بدلہ لیں گے انہوں نے کہاکہ 30مئی انقلاب کا دن ثابت ہوگا اورہر طرف لالٹین روشن ہوگا ۔

مورخہ : 20.5.2015 بروز بدھ
پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ پختونخوا اور بلوچستان کے ڈی ایم جی گروپ اور پی ایس پی گروپ کے افسروں کی پروموشن کو روکنا اور ان کی حق تلفی کیلئے بہانے ڈھونڈنا ظلم اور سراسر ناانصافی ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ سنٹرل سلیکشن بورڈ نے یکطرفہ پروموشن کے فیصلے کر کے پختونخوا اور بلوچستان کے افسروں میں بے چینی اور احساس محرومی میں اضافہ ہوا ہے۔ سنٹرل سلیکشن بورڈ میں اکثر ممبران کا تعلق پنجاب سے ہے جو فیصلوں پر انداز ہوتے ہیں۔
عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما نے کہا کہ سنٹرل سلیکشن بورڈ پر پختونخوا اور بلوچستان صوبے سمیت سندھ صوبے کے بھی تحفظات ہیں کیونکہ قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے اسمبلی کے فلور پر اور الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا کے ذریعے سندھ کے تحفظات کا کھل کر اظہار کیا ہے ۔ اُنہوں نے کہا کہ ہم پختونخوااور بلوچستان سے تعلق رکھنے والے ڈی ایم جی اور پی ایس پی گروپس افسران کی پروموشن کا مسئلہ ہر فلور پر اُٹھائیں گے کہ ان افسران کے ساتھ امتیازی اور معتصبانہ سلوک کیوں کیا جا رہا ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ سنٹرل سلیکشن بورڈ نے جو فیصلے کیے وہ انصاف کے تقاضوں کے برعکس ہیں اس کو روک کر اس کا ازسر نو جائزہ لیا جائے اور موجودہ سنٹرل سلیکشن بورڈ کو بھی ختم کر کے نیا بورڈ تشکیل دیا جائے ۔ اُنہوں نے مزید کہا کہ اٹھارویں ترمیم کی منظوری کے بعد ملکی سطح پر اس قسم کے فیصلوں کیلئے سی سی آئی کا پلیٹ فارم کو استعمال کر کے تمام صوبوں کے مشترکہ حقوق کو تحفظ فراہم کیا جاسکتا ہے۔
اگرچھوٹے صوبوں کے افسران ساتھ بے انصافی نہ ہوئی ہوتی تو وہ اس کیس کو عدالت میں نہیں لے جاتے۔ اے این پی کے رہنما نے مزید کہا کہ وزیر اعظم پاکستان نواز شریف نے بذات خود قومی اسمبلی کے فلور پر کہا کہ میں اپوزیشن لیڈر کو ساتھ بٹھا کر اس کیس کا ازسر نو جائزہ لوں گا۔ یہ ایک احسن اقدام ہے ہم اس موقع پر وزیر اعظم نواز شریف کو یاد دلانا چاہتے ہیں کہ پختونخوااور بلوچستان کے افسران کے مسئلے اور پیداشدہ بحران کوختم کرنے کیلئے خصوصی توجہ دی جائے، اور ان کو انصاف فراہم کر کے ان کے تحفظات کو ترجیحی بنیادوں پر حل کیا جائے تاکہ ان میں جو احساس محرومی پیدا ہوئی ہے وہ جلد از جلد ختم ہو جائے۔ اس معیار کے افسران میں جب بے چینی اور احساس محرومی ہو تو گڈ گورنس کو قائم رکھنا ایک پیچیدہ مسئلہ بن جاتا ہے جو کسی طور ملک کے حق میں نہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ جب تک چھوٹے صوبوں کے افسران کو انصاف فراہم نہیں کیا جاتااُس وقت تک ہماری جدوجہد جاری رہے گی۔

مورخہ 20مئی 2015ء بروز بدھ
پشاور ( پ ر )عوامی نیشنل پارٹی کی صوبائی جائنٹ سیکرٹری شگفتہ ملک نے کہا ہے کہ اے این پی واحد سیاسی جماعت ہے جو صنفی امتیاز پر یقین نہیں رکھتی اور خواتین کو برابری کی بنیاد پر حقوق دینے کیلئے ہمیشہ کوشاں رہی ہے ، اور وہ دن دور نہیں جب عوام اپنے مسائل کے حل کیلئے اے این پی پر اعتماد کا اظہار کرینگے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے یو سی 40تہکال بالا میں ضلعی ممبر ارباب محمد داؤد خان کی رہائش گاہ پر منعقدہ انتخابی مہم کے سلسلے میں خواتین کے ایک اجتماع سے خطاب کر رہی تھیں، انہوں نے کہا کہ عوام اپنے مسائل کے حل کیلئے اے این پی پر بھرپور اعتماد کا اظہار کرینگے کیونکہ صوبے کے عوام موجودہ صوبائی حکومت کی کارکردگی سے نالاں ہیں جس نے انہیں مہنگائی بے روزگاری جیسے مسائل میں دھکیل دیا ہے ، انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا کے عوامی مسائل کیلئے ہدایات پنجاب سے آتی ہیں جو کہ عوام کے ساتھ مذاق ہے ، انہوں نے کہا بلدیاتی الیکشن میں کامیابی کے بعد اے این پی عوامی مسائل لوگوں کی دہلیز پر حل کرے گی اور انہیں اپنے مسائل کے حل کیلئے در بدر ٹھوکریں نہیں کھانا پڑیں گی ۔انہوں نے انتخابی نشانات کے حوالے سے انتہائی افسوس کا اظہار کیا کہ عجیب و غریب قسم کے نشانات الاٹ کر کے امیدواروں کو متنفر کرنے کی کوشش کی جارہی ہے جو نیک فعال نہیں ،قبل ازیں نوشہرہ اضا خیل میں منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت بلدیاتی الیکشن پر مسلسل اثر انداز ہو رہی ہے اور سرکاری مشنری استعمال کی جا رہی ہے ، انہوں نے الیکشن کمیشن سے مطالبہ کیا کہ آئین اور الیکشن کمیشن کے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزیاں روکنے کیلئے ٹھوس اقدامات کئے جائیں ، کیونکہ صوبائی حکومت ترقیاتی کاموں کے اعلانات کرکے سیاسی رشوت دے رہی ہے اور زبر دستی عوامی رائے عامہ تبدیل کرنے کی کوشش کی جارہی ہے ، انہوں نے کہا کہ اے این پی بلدیاتی الیکشن میں کلین سویپ کرے گی ، اور 30مئی کا سورج اے این پی کی کامیابی کی نوید لے کر طلوع ہو گا ۔اس موقع پر ملک ارشد اور سالار رحیم خان نے بھی خطاب کیا ۔

مورخہ : 19.5.2015 بروز منگل

پشاور ( پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سیکرٹری فنانس ارباب محمد طاہر خان خلیل نے کہا ہے کہ اے این پی ہی واحد سیاسی جماعت ہے جو عوام کو موجودہ بحرانوں سے نکالنے کی بھرپور صلاحیت رکھتی ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ اے این پی کی صحیح سیاست اور انسان دوست پالیسیوں کی وجہ سے اس کا گراف روز بروز عوام میں بلند ہورہا ہے۔ ان خیالات کا اظہار اُنہوں نے تہکال بالا وارڈ نمبر40 میں بلدیاتی الیکشن مہم کے سلسلے میں منعقدہ عوامی جلسے سے کیا۔ جس سے وارڈ نمبر40 سے اے این پی ڈسٹرکٹ کونسلر کیلئے نامزد اُمیدوار ارباب داؤد خان نے ٹاؤن اُمیدوار ارباب سیف الحیدر اور جنرل کونسلر اجون خان ایڈووکیت نے بھی خطاب کیا۔ اُنہوں نے کہا کہ 2013 کے جنرل الیکشن میں تحریک انصاف سے عوام سے دھوکے پر ووٹ حاصل کیا تبدیلی اور نئے پاکستان کا جھوٹا نعرہ لگا کر عوام کی آنکھوں میں دھول جھونک دی۔ اُں ہوں نے کہا کہ مختلف اوقات میں تہکال وارڈ نمبر40 کے عوام کو جن لوگوں نے دھوکے میں رکھ کر تعلیم ، روزگار اور دیگر سہولیات سے محروم رکھا 30 مئی کو وہ ان سیاسی مداریوں کی ضمانتیں ضبط کر دینگے اور اے این پی کے نامزد اُمیدواروں کو بھاری اکثریت سے کامیاب کرینگے۔ اے این پی کے رہنما نے کہا کہ عمران خان کنٹینر پر بیٹھ کر صاف ستھری سیاست پر بات کرتے ہیں لیکن آج اُنہوں نے بلدیاتی الیکشن کے دوران سرکاری خزانے کی تجوریاں کھول دی اور اپنی پارٹی کے نامزد اُمیدواروں کو سرکاری خزانے سے فنڈ دیکر عوام کی رائے تبدیل کرنے کی ناکام کوشش کر رہی ہے جو کہ کھلی دھاندلی کا زندہ ثبوت ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ تحریک انصاف بلدیاتی الیکشن مہم کے دوران سڑکوں ، نالیوں ، سیمنٹ ، باجری اور ٹرانسفارمرز کی صورت میں سیاست رشوت دے رہی ہے۔ اس کے علاوہ اُمیدواروں نے پولنگ سٹیشنز اپنے ذاتی پرائیویٹ سکولوں اور مکانات میں لے گئے ہیں ہم الیکشن کمیشن سے درخواست کرتے ہیں کہ فوری طور پر اس کا نوٹس لیا جائے کیونکہ ان لوگوں نے تو الیکشن سے پہلے دھاندلی کی مکمل منصوبہ بندی کی ہے

مورخہ : 19.5.2015 بروز منگل

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ پختونخوا کے اور بلوچستان کے ڈی ایم جی گروپ اور پی ایس پی گروپ کے افسروں کے ساتھ زیادتی اُن کی پروموشن کو روکنا اور ان کی حق تلفی کیلئے بہانے ڈھونڈنا ظلم اور سراسر ناانصافی ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ سنٹرل سلیکشن بورڈ پر اعتراضات ہیں کیونکہ اس میں اکثریت بڑے بھائی پنجاب کی ہے جو فیصلوں پر انداز ہوتا ہے اس لیے بورڈ نے صرف پنجاب کے افسروں کی پروموشن کی ہے اور پختونخوا کے افسروں کے حقوق کو پامال کرتے ہوئے تعصب کا زندہ ثبوت پیش کیا ہے۔
عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما نے کہا کہ پروموشن بورڈ پر ملک کے دیگر صوبوں کے بھی اعتراضات ہیں کیونکہ اس نے صرف اپنے صوبے کے افسران کی پروموشن کی ہے اور دیگر صوبوں کے افسران کو نظر انداز کیا ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ ہم پختونخوااور بلوچستان سے تعلق رکھنے والے ڈی ایم جی اور پی ایس پی گروپس افسران کی پروموشن کا مسئلہ ہر فلور پر اُٹھائیں گے کہ ان افسران کے ساتھ امتیازی اور معتصبانہ سلوک کیوں کیا جا رہا ہے۔ اُنہوں نے واضح کیا کہ اس مسئلہ کو اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے بھی قومی اسمبلی میں اُٹھایا ہے اس نے سندھ کے حوالے سے بات کی ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ سنٹرل سلیکشن بورڈ نے ڈی ایم جی اور پی ایس پی افسروں کی جو پروموشن کی ہے یہ انصاف کے تقاضوں کے برعکس ہے اس کو روک کر اس کا ازسر نو جائزہ لیا جائے اور موجودہ سنٹرل سلیکشن بورڈ کو بھی ختم کر کے نیا بورڈ تشکیل دیا جائے کیونکہ موجودہ بورڈ کے رویے پر چھوٹے صوبوں کے اعتراضات اور تحفظات ہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ چھوٹے صوبوں کے افسران کو انصاف فراہم کیا جائے اگر ان کے ساتھ بے انصافی نہیں ہوئی اور وہ حق پر نہیں ہوتے تو وہ اس کیس کو عدالت میں نہیں لے جاتے۔ اُنہوں نے دوٹوک الفاظ میں کہہ دیا کہ اتنا کافی ہے کہ ہمیں سنٹرل سلیکشن بورڈ کے رویے پر تحفظات ہیں کیونکہ اس نے صوبہ پختونخوا اور بلوچستان کے افسران سے زیادتی اور ناانصافی کی ہے اور ان کے حقوق کو عصب کیے ہیں۔ اے این پی کے رہنما نے مزید کہا کہ وزیر اعظم پاکستان نواز شریف نے بذات خود قومی اسمبلی میں کہا تھا کہ میں اپوزیشن لیڈر کو ساتھ بٹھا کر اس کیس کا جائزہ لوں گا۔ ہم وزیر اعظم سے پر زور مطالبہ کرتے ہیں کہ پختونخوااور بلوچستان کے افسران کو خصوصی اور پوری توجہ دی جائے، اور ان کو انصاف فراہم کیا جائے اور ان کے تحفظات کو ترجیحی بنیادوں پر حل کیے جائیں تاکہ ان میں جو احساس محرومی پیدا ہوا ہے وہ جلد از جلد ختم ہو جائے۔ اُنہوں نے کہا کہ اگر چھوٹے صوبوں کے افسران کو انصاف فراہم نہیں کیا گیا تو انصاف کی فراہمی کیلئے ہم کسی بھی حد تک جا سکتے ہیں۔

مورخہ : 19.5.2015 بروز منگل

پشاور ( پ ر) پختون سٹوڈنٹس فیڈریشن ہری پور یونیورسٹی کے ایک نمائندہ وفد نے یونیورسٹی کے جنرل سیکرٹری ریحان یوسفزئی کی قیادت میں پختون ایس ایف کے صوبائی صدر سردار فخر عالم خان کیساتھ باچا خان مرکز پشاور میں ملاقات کی۔ وفد نے صوبائی صدر کے ساتھ مختلف تنظیمی اُمور پر تبادلہ خیال کیا اوراُن کو اپنی تنظیمی رپورٹ پیش کی۔ صوبائی صدر نے ہری پور یونیورسٹی کی کابینہ کی تنظیمی رپورٹ پر اطمینان کا اظہار کیا اور اُن کو پی ایس ایف کے پوسٹرز اور سٹیکرز دیئے۔ صوبائی صدر نے وفد کو بتایا کہ وہ جلد از جلد ہریپور یونیورسٹی اور ہزارہ ڈویژن کا دورہ کرینگے۔ اُنہوں نے وفد کو 23 مئی کو ہری پور یونیورسٹی میں اور 25 مئی کو سوات یونیورسٹی میں کاشغر گوادر کے پرانے روٹ کی تبدیلی کے خلاف پی ایس ایف کنونشن کرانے کے احکامات دے دئیے۔

مورخہ :19.5.2015 بروز منگل

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی پختونخوا کے جنرل سیکرٹری ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ 30 مئی کا دن جھوٹے اور بلند و بانگ دعوؤں کے ذریعے پختونوں کا مینڈیٹ چرانے والوں کے حساب کا دن ہے اور پختون اسی دن تبدیلی اور نئے پاکستان بنانے کا نعرہ لگانے والوں کا بوریا بستر گول کرے گی۔ ان خیالات کا اظہار اُنہوں نے ریگی میں بلدیاتی الیکشن مہم کے سلسلے میں اے این پی ریگی کے صدر ولایت خان کے زیر صدارت منعقدہ جلسے سے کیا جس سے اے این پی پشاور کے صدر ملک نسیم خان آف لڑمہ اور ٹاؤن کونسلر کیلئے نامزد اُمیدوار فضل ربی نے بھی خطاب کیا۔ جبکہ اس موقع پر اے این پی کے مرکزی فنانس سیکرٹری ارباب محمد طاہر خان خلیل بھی موجود تھے۔ اُنہوں نے کہا کہ تحریک انصاف اور جماعتی اسلامی نے بلدیاتی الیکشن قریب آتے ہی دھاندلی شروع کی ہے اور ٹرانسفرمرز ، شینگل ، سیمنٹ اور سڑکوں کے ذریعے عوام کے ضمیر خریدنے اور ان کی رائے بدلنے کی ناکام کوششیں کر رہے ہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ غیرتمند اور غیورپختون تحریک انصاف کے جھوٹے نعروں اور دعوؤں میں نہیں آئیں گے اور وہ 30 مئی کو سوچ سمجھ کر اپنا قیمتی ووٹ اے این پی اور اس کے اتحادی جماعتوں کے حق میں استعمال کر کے تحریک انصاف اور جماعت اسلامی کی ضمانتیں ضبط کر دیں گے۔ اُنہوں نے اپنے کارکنوں پر زور دیتے ہوئے کہا کہ وہ شب و روز ایک کر کے پارٹی نامزد اُمیدواروں کی کامیابی میں اہم اور کلیدی کردار ادا کرے اور تبدیلی کا نعرہ لگانے والوں کو بنی گالہ تک محدود کرے۔

مورخہ : 19.5.2015 بروز منگل

پشاور( پ ر ) سابق وزیراعلیٰ اور اے این پی کے صوبائی صدر امیرحیدرخان ہوتی ایم این اے نے کہاہے کہ عمران خان کا نیا پاکستان کہاں ہے، پختون قوم جھوٹے دعویداروں کے اصل چہرہ جان گئے ہیں اور30مئی کو سونامی والوں کو بنی گالہ واپس بھیج کر دم لیں گے ، عوامی نیشنل پارٹی اور جمعیت علمائے اسلام ہمیشہ عوام کی ہرآزمائش پر پورا اتری ہیں تاریخ گواہ ہے کہ دونوں جماعتوں نے مل کر انگریزوں کو ملک سے نکالنے کا مشکل مرحلہ طے کیا اب جعلی مینڈیٹ والوں کا صفایاکرنے کے لئے میدان میں نکلے ہیں وہ یونین کونسل بکٹ گنج میں انتخابی جلسے سے خطاب کررہے تھے جس سے رکن اسمبلی احمد بہادرخان ،جے یو آئی کے صوبائی جنرل سیکرٹری مولانا شجا ع الملک ،مولانامحمدادریس،مولانا امانت شاہ حقانی ،عمران ماندوری ،ضلع کونسل کے امیدوار حاجی محمد حسین اور تحصیل امیدوار حیات سیدنے بھی خطاب کیا امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ نوجوان ہمارے دست وبازوبن جائیں سونامی والوں نے سبز باغات دکھاکر دھوکے سے مینڈیٹ لیاہے اب پختون جاگ گئے ہیں اوروہ مزید کسی کے جھوٹے دعوؤں اوروعدوں میں نہیں آئیں گے انہوں نے کہاکہ عمران خان کے سماجی خدمات کا انہیں اعتراف ہے تاہم وہ سیاست کے کھلاڑی نہیں ہوسکتے انہوں نے کہاکہ وہ پشاورکینسر ہسپتال کی زمین کے لئے جگہ جگہ پھررہے تھے ہماری حکومت نے انہیں 50کنال قیمتی اراضی اور پانچ کروڑ عطیہ دیاعمران خان نے پختون خوا سے مینڈیٹ لے کر یہاں کے لوگوں کو بھلادیا اور پنجاب کی سیاست شروع کی امیرحیدرخان ہوتی نے نوجوانوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ تبدیلی اورمیرٹ کے نام پر انہیں دھوکہ دیاگیالیکن وہ مزید دھوکے میں نہ آئیں 30مئی کو اپنا ووٹ بطور ہتھیار استعمال کریں اور صوبے کو سونامی کی بیماری سے نجات دلانے میں اپنا فریضہ پوراکریں امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ عوام پوچھ رہے ہیں کہ عمران خان کا نیا پاکستان کہاں ہے پختونوں کو سبزباغات دکھانے والے سن لیں کہ ’’مسجد اور حجرہ ‘‘ ایک ہوچکے ہیں اوربلدیاتی انتخابات میں انہیں شکست سے کوئی نہیں بچاسکتا انہوں نے کہاکہ اس دھرتی پر جب بھی کڑا وقت آیا تو دونوں جماعتوں نے ڈٹ کر حالات کا مقابلہ کیا ہے باچاخان کے پیروکار اور مولانا مفتی محمود کے جان نثار ایک ہوچکے ہیں سونامی سے دھوکے میں ملنے والا مینڈیٹ واپس لے کر دم لیں گے جلسے سے جے یو آئی (ف) کے جنرل سیکرٹری نے جماعت اسلامی کے مرکزی امیر سراج الحق پر کڑی تنقید کی اورکہاکہ ڈرون حملے پر استعفیٰ کا ڈرامہ رچانے اور مسجد مہابت خان میں فیصلے کرنے کے بلند وبانگ دعویداروں کو آج فخاشی پر کیوں خاموش ہیں انہوں نے کہاکہ پرائیوٹ سود بل پر سراج الحق نے دستخط کرکے قانونی بنادیاہے جے یو آئی (ف) کے صوبائی جنرل سیکرٹری نے کہاکہ جماعت اسلامی اقتدارکی روشنیوں میں گم ہوگئی ہے اورایم ایم دور میں فلکس بورڈوں خواتین کی تصویریں برداشت نہ کرنے والوں کو اسلام آباد کے ڈی چوک میں نیم برہنہ خواتین کی شرکت پر نہ صرف خاموش تھے بلکہ سیاسی جرگے کی سربراہی بھی قبول کرلی تھی انہوں نے کہ جماعت کے قول وفعل میں تضادہے اور عمران خان صوبے میں یہودیوں کا ایجنڈا مسلط کرنا چاہتے ہیں اس موقع پر امیرحیدرخان ہوتی اور مولانا شجا ع الملک نے اپنے اپنے کارکنوں کو ہدایت کی کہ 30مئی کو وہ مکمل طورپر باہمی اتحاد واتفاق سے لالٹین اور کتاب کو ووٹ دیں ۔

قومی حقوق کا دفاع صرف فکری تحریکیں ہی کرسکتی ہیں،قو ل و فعل میں تضاد کی حامل قائدین تاریخ میں جلد گمنام ہوجاتے ہیں۔صدر اے این پی سندھ
کراچی۔ پیر 18مئی 2015
عوامی نیشنل پارٹی سندھ کی جانب سے باچا خان مرکز سے جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق اے این پی ضلع صوابی (خیبر پختون خوا) کے سابقہ صد ر حاجی رحمان اللہ کاکا کے سوئم کے سلسلے میں جدون ہاؤس شیرین جناح کالونی کیماڑی میں قر آن خوانی ،فاتحہ خوانی کا انعقاد کیا ، اس موقع پر صوبائی صدر سینیٹر شاہی سید ،جنرل سیکریٹری یونس خان بونیری سمیت صوبائی کابینہ کے ارکان سمیت کارکنان نے بھی شرکت کی ،اس موقع پر صوبائی صدر سینیٹر شاہی سید نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حاجی رحمان اللہ کاکا کی پارٹی کے ساتھ طویل وابستگی کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہے مرحوم نے حضرت باچا خان بابا کے وقت سے لیکر آج تک قومی تحریک کے ساتھ وابستہ رہے مرحوم کی وفات سے پیدا ہونے والا خلاء جلد پر نا ہوسکے گاموسم کے ساتھ سیاسی وفاداریاں بدلنے والوں کے لیے حاجی رحمان اللہ ایک بڑی مثال ہیں مرحوم آخری سانسوں تک پارٹی کے ساتھ چٹان کی طرح کھڑے رہے ،عوامی نیشنل پارٹی سندھ مرحوم کے اہل خانہ سے مکمل اظہار یکجہتی کرتی ہے،انہوں نے مذید کہا کہاپنی سیاسی فکر ساتھ ڈٹ جانے والے ہی تاریخ میں جگہ بنا پاتے ہیں قوم کو خواب دکھانا قوم دشمنی کے مترادف ہوتی ہے باچا خان بابا کے نظریاتی قافلے میں شامل ارکان کو دنیا کی کوئی طاقت نا خرید سکتی ہے اور نا انہیں جھکاسکتی ہے،قومی حقوق کا دفاع صرف فکری تحریکیں ہی کرسکتی ہیں،قو ل و فعل میں تضاد کی حامل قائدین تاریخ میں جلد گمنام ہوجاتے ہیں، اس موقع پر صوبائی جنرل سیکریٹری یونس خان بونیری اور ضلع جنوبی کے جنرل سیکریٹری سرفراز جدون نے بھی خطاب کیا اور مرحوم کی سیاسی جدوجہد پر روشنی ڈالی ۔

مورخہ 18مئی 2015ء بروز پیر
پشاور ( پ ر )عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے وفاقی وزیر منصوبہ بندی و ترقی احسن اقبال کی پریس بریفنگ پر انتہائی افسوس کا اظہار کرتے ہوئے اسے ایک بار پھر مسترد کر دیا ہے اور کہا ہے کہ موصوف ہمیں غیر ملکی ٹی وی چینلز کا طعنہ دینے کی بجائے تاریخ اٹھا کر حقیقت کا ادراک کریں ، انہوں نے کہا کہ اس منصوبے پر بات چیت کا آغاز مشرف دور میں ہوا تاہم زرداری دور میںیہ منصوبہ طے ہوا تھا اور یہ وہی مغربی روٹ تھا جو پہلے ایک ہی تھا جبکہ بعد میں اسے سنٹرل اور مشرقی کا نام دے تبدیل کر دیا گیا لیکن وزیر موصوف اس سے قبل 20بار بریفنگ دے چکے ہیں لیکن وہ آج تک کسی کو مطمئن نہیں کر سکے ، انہوں نے احسن اقبال سے سوال کیا کہ حکومت کے پاس کردہ منصوبے میں موٹر وے کہاں سے شروع ہوئی ؟ ریلوے لائن سے کہاں سے شروع ہوئی؟ انڈسٹریل سٹیٹ ،؟پاور انرجی کے منصوبے اور فائبر آپٹک کے منصوبے کہاں سے شروع کئے ہیں ؟ میاں افتخار حسین نے کہا کہ قوم کو دھوکہ دینے اور ہمیں غیر ملکی چینلز کا طعنہ دینے کی بجائے منصوبے کو اس کی اصل حالت میں بحال کیا جائے ، انہوں نے کہا کہ منصوبے پر خیبر پختونخوا حکومت اور بلوچستان کے تحفظات تو پہلے سے موجود تھے تاہم اب بلوچستان کے وزیر اعلیٰ اور پنجاب سے بھی اس پر تحفظات آنا شروع ہو گئے ہیں اور یہ واضح کر دیا گیا ہے کہ حکومت نے اسے انا کا مسئلہ بنا کر صوبوں کے حقوق چھیننے کی ٹھان لی ہے ، جبکہ اے این پی نے اسے 2014میں سینیٹ میں ہی رد کر دیا تھا ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ ایک مخصوص لابی حقوق کی خاطر جنگ لڑنے والوں کے خلاف منفی پروپیگنڈے میں مصروف ہے ، تاہم عقل و فہم کا تقاضا یہی ہے کہ حکومت ضد چھوڑ کر پرانے روٹ پر کام کا آغاز کرے اور عوام سے جھوٹ بولنا بند کر دے ورنہ ہم قوم کو سچ بتانے سے گریز نہیں کریں گے ۔انہوں نے کہا کہ ہم پنجاب کی ترقی سے نالاں نہیں تاہم اس کیلئے چھوٹے صوبوں کی قربانی دینا کسی صورت قبول نہیں ،انہوں نے کہا کہ پاک چین راہداری منصوبہ صرف روٹ نہیں بلکہ ایک پراجیکٹ ہے جس میں سڑک کے ساتھ ساتھ ریلوے لائن ، انڈسٹریل زون، اور دیگر سہولیات شامل ہیں لہٰذا پراجیکٹ کو مکمل ختم کیا گیا ہے اور صرف سڑک صوبے کو دینا لوگوں کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کے برابر ہے،میاں افتخار حسین نے کہا کہ چھوٹے صوبوں کے مفادات اور حقوق غصب کئے گئے تو اس کے خوفناک نتائج برآمد ہونگے جس کی تمام تر ذمہ داری مرکزی حکومت پر عائد ہوگی۔

مورخہ 17مئی 2015ء بروز اتوار
پشاور ( پ ر)سابق وزیراعلیٰ اور اے این پی کے صوبائی صدر امیرحیدرخان ہوتی ایم این اے نے کہاہے کہ سہ فریقی اتحاد بلدیاتی انتخابات کے بعد بھی قائم رہے گا ،پختون باہمی اتحاد سے سونامی کو واپس بنی گالہ بھیج کر دم لیں گے ،عمران خان پختون نوجوان سے کئے ہوئے وعدوں میں مکمل طورپر ناکام ہوچکے ہیں 30مئی کو کامیابی اے این پی اور اس کے اتحادیوں کی ہوگی،سرکاری آر اوز حکومتی دباؤ میں نہ آئیں اور صاف وشفاف انتخابات کے انعقاد کو ممکن بنائیں بصورت دیگرانہیں اپنے کئے کا حساب کتاب دینا ہوگا، وہ علاقہ نرے رگ یونین کونسل چمتا رمیں انتخابی جلسے سے خطاب کررہے تھے جس سے جے یو آئی (ف) کے صوبائی جنرل سیکرٹری مولانا شجا ع الملک ،سابق ناظم زیارت گل ،دوجماعتی اتحاد کے امیدوار حاجی شوکت علی اورجنرل سیکرٹری لطیف الرحمان نے بھی خطاب کیا امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ 30مئی نام نہاد تبدیلی والوں کا یوم حساب ہے اورپختون قوم اس جھوٹے دعوے اور وعدے کرنے والوں سے بدلہ لے گی انہوں نے کہاکہ جے یو آئی اور اے این پی نے اس سرزمین کے لئے بہت قربانیاں دی ہیں مولانا مفتی محمود اور رہبر تحریک خان عبدالولی خان نے مل کر صوبائی حقوق کے لئے پارلیمنٹ میں آواز اٹھائی اور تمام تر مخالفتوں کا ڈٹ کر مقابلہ کیا انہوں نے کہاکہ ہمارا اتحاد صرف بلدیاتی انتخابات تک نہیں بلکہ یہ اتحاد عمران خان کی بنی گالہ واپسی تک قائم رہے گا انہوں نے کہاکہ وزیراعلیٰ پرویزخٹک دعویٰ کررہے ہیں کہ انہوں نے پختونوں کی دوسرے طریقے سے خدمت کی ہے امیرحیدر خان ہوتی نے کہا کہ پرویز خٹک میدان میں آئیں اوراپنی دوسالہ کارکردگی کا موازانہ ہماری سابق حکومت سے کریں اگر ان کی کارکردگی بہتر نکلی تو سیاست چھوڑ دیں گے ، انہوں نے کہاکہ بلدیاتی انتخابات میں انتخابی نشانات سے پختون قوم کی تضحیک کی جارہی ہے ۔چوہے ،بوتل،نٹ ،جوتے ،باجہ ،شہنائی سمیت امیدواروں کو ایسے انتخابی نشانات الاٹ کئے گئے ہیں جس کا ذکر تک جلسوں اور مہم میں نہیں کیاجاسکتا امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ اگر حکومت نے اپنی غلطیوں کو دہرانے اور غلط فیصلوں کا روش ترک نہیں کی تو اس کے خلاف اے این پی اتحادیوں سے مل کر گلی گلی اورشہرشہر احتجاج کرے گی انہوں نے کہاکہ بلدیاتی انتخابات میں ترقیاتی کام بطور سیاسی رشوت استعمال کئے جارہے ہیں حکومت لوگوں کو ٹرانسفامروں اور ترقیاتی منصوبوں کے لالچ دے رہی ہے لیکن صوبے کے غیور عوام کو مزید ورغلا یا نہیں جاسکتا امیرحیدرخان ہوتی نے سوال اٹھایاکہ اگر صوبائی حکومت کو مردان عزیز ہے اوریہاں کے لوگوں کے ساتھ محبت ہوتی تو رنگ روڈ ،ڈسٹرکٹ ہسپتال سمیت دیگر منصوبے بروقت مکمل کئے جاتے اورترقیاتی منصوبوں کے فنڈز میں کٹوتی نہ کی جاتی اے این پی کے صوبائی صدر نے کہاکہ پختون قوم بیدارہوچکی ہے اوراسے لالچ اورسازش سے دبایا نہیں جاسکتاانہوں نے مزید کہاکہ یہاں پختون بچوں اورنوجوان سے وعدے کئے گئے تھے کہ تحریک انصاف اقتدار میں آکر اس مٹی کو جنت بنا دے گی میرٹ اورانصاف ہوگا یہاں کے پختونوں کو جھوٹے وعدوں سے دھوکہ دیاگیا لیکن اب انہیں کوئی مزید سبزباغات دکھاکر ورغلا نہیں سکتا اورپختون نوجوان اور بزرگ مل کر 30مئی کو سونامی کی بیماری سے اس صوبے کو آزاد کرادیں گے ۔

مورخہ 17مئی 2015ء بروز اتوار
پشاور ( پ ر )عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ اے این پی خیبر پختونخوا کے عوام کی نمائندہ جماعت ہے اور عوام کے حقوق کا تحفظ اے این پی کی پالیسی کا حصہ رہا ہے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے یوسف خان کلے شبقدر میں انور علی خان کے حجرے میں انتخابی مہم کے سلسلے میں منعقدہ جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کیا ،انہوں نے کہاکہ 30مئی نام نہاد تبدیلی والوں کا یوم حساب ہے اورپختون قوم اس دن اپنا حساب کتاب لے گی، انہوں نے کہا کہ بلدیاتی انتخابات میں ترقیاتی کام بطور سیاسی رشوت استعمال کئے جارہے ہیں دوسال پہلے حکومت کہاں تھی کہ اب لوگوں کو ٹرانسفامروں اور ترقیاتی منصوبوں کے لالچ دیئے جارہے ہیں انہوں نے کہا کہ اے این پی نے عوامی حقوق کے تحفظ کا تہیہ کر رکھا ہے اور بلدیاتی الیکشن میں کامیابی کے بعد پارٹی عوامی خدمت کا سلسلہ جاری رکھے گی ،ایمل خان نے کہا کہ اے این پی بلدیاتی الیکشن میں کلین سویپ کرے گی ، اور انشاء اللہ 30 مئی کا سورج اے این پی کی کامیابی کی نوید لے کر طلوع ہو گا،انہوں نے کہا کہ اے این پی واحد سیاسی جماعت ہے جس نے ہمیشہ عوامی مفادات اور حقوق کا تحفظ کیا ہے ، اور عوام کی پارٹی میں جوق در جوق شمولیت اس بات کا واضح ثبوت ہے ،انہوں نے کہا کہ تبدیلی کا نعرہ لگانے والوں نے عوامی مشکلات میں کمی کی بجائے اضافہ کر دیا ہے اور صوبے کے عوام اب انہیں ووٹ دینے پر پچھتا رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ بلدیاتی انتخابات میں حکومتی جماعتوں کو شکست سے دوچار کریں گے ،اور اے این پی کے امیدواروں کی جیت کو یقینی بنانے کیلئے کارکن رابطوں کو مزید تیز کریں اس موقع پر اے این پی کے ضلعی صدر بیرسٹر ارشد عبد اللہ ، ایم سی ون کے جنرل کونسلر اشرف خان ایم سی ٹو کے سبحان اللہ ایم سی ٹو کے تحصیل کونسلر میاں معراج سہ فریقی اتحاد کے مولوی ہدایت اللہ اور ضمیر گل نے بھی خطاب کیا جبکہ عالمگیر درانی اور لیاقت منیجر بھی اس موقع پر موجود تھے۔

اہم عہدوں پر میرٹ کے بجاے من پسند تعیناتیوں اور سیاسی بھرتیوں نے پولیس جیسے انتہائی اہم ادارے کو تباہ کردیا ہے۔ صدر اے این پی سندھ
کراچی؍ 15مئی 2015ء ؁ ( )
عوامی نیشنل پارٹی سندھ کے صدر سینیٹر شاہی سید نے کہا ہے کہ بد امنی ،غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ ،شدید گرمی اور پانی کی قلت نے شہریوں کا جینا مشکل کردیا ہے پانی کا بحران شہر کو خانہ جنگی کی جانب دھکیلنے کی سازش ہے شدید گرمی ، غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ اور پانی کے سنگین بحران کی وجہ سے شہری بلبلارہے ہیں افسوس کے ارباب اختیار شہریوں کی چیخ و پکار سننے سے قاصر ہیں پانی کا بحران کسی بھی انسانی المیہ کو جنم دے سکتا ہے بنیادی انسانی ضرورت کی کمی پر سیاست نہیں کرنا چاہتے بلکہ عوام کی آوازارباب اختیار تک پہنچانا چاہتے ہیں عوامی مینڈیٹ کا احترام اپنی جگہ مگر حق حکمرانی کی ادائیگی بھی ضروری ہے ،باچا خان مرکز سے جاری کردہ بیان میں اے این پی سندھ کے صدر اور پختون ایکشن کمیٹی(لو یہ جرگہ) کے چیئر مین سینیٹر شاہی سید نے مذید کہا کہ کارکردگی کا عالم یہ ہے کہ گزشتہ دو سال زیادہ عرصے میں ملیر ہالٹ اور ملیر پندرہ کے فلائی اوور بھی تعمیر نہیں کیے جاسکے ہیں ان دونوں پلوں کی عدم تعمیر کی وجہ سے شہری گھنٹوں ٹریفک جام پھنسے رہتے ہیں انہوں نے مذید کہا کہ اہم عہدوں پر میرٹ کے بجاے من پسند تعیناتیوں اور سیاسی بھرتیوں نے پولیس جیسے انتہائی اہم ادارے کو تباہ کردیا گیا ہے ،انہوں نے مذید کہا کہ سانحہ صفورا چورنگی انتہائی سنگین واقعہ ہے شہر کو بد ترین دہشت گردی کا سامنا ہے ارباب اختیار اجلاسوں ، اعلانات اور بیانات کے بجائے اقدامات کے ذریعے حق حکمرانی ادا کریں صوبائی حکومت کے کپتان اور ان کی ٹیم کے ارکان زبانی جمع خرچ کے بجائے میدان عمل میں کرکرددگی دکھائیں ۔

مورخہ : 15.5.2015 بروز جمعہ
پریس ریلیز

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی پختون خوا کے جنرل سیکرٹری ایمل ولی خان نے کہا کہ 30 مئی کو اے این پی اپنے حریفوں کی ضمانتیں تک ضبط کر دے گی۔ اُنہوں نے کہا کہ اے این پی اس صوبے کے عوام کی واحد نمائندہ سیاسی جماعت ہے جو ان کو موجودہ بحرانوں سے نجات دلانے کی بھرپور صلاحیت رکھتی ہے۔ ان خیالات کا اظہار اُنہوں نے پجگی اور بہادر کلی میں بلدیاتی الیکشن کے سلسلے میں منعقد الگ الگ جلسوں سے کیا۔ اُنہوں نے کہا کہ پختون ایک غیرت مند قوم ہے اور 30 مئی کو وہ سہ فریقی اتحاد کے نامزد اُمیدواروں کو کامیاب کرے گی۔ تحریک انصاف کا تبدیلی کا نعرہ ایک جھوٹا نعرہ تھا اس نے عوام سے وعدہ خلاف کر کے ان کی آنکھوں میں دھول جھونک دیا۔ اُنہوں نے کہا کہ پختونوں کو ایک پلیٹ فارم پر جمع کرانا ہمارا منزل مقصود ہے انہوں نے کہاکہ مسائل کے حل کے لئے پختون قوم کو سرخ جھنڈے تلے اکٹھا ہوناہوگا انہوں نے کہاکہ اے این پی اپنے دوراقتدار میں صوبے کو نام کی شناخت ،این ایف سی ایوارڈ سمیت مرکز سے وہ تمام مراعات لی ہیں جو گذشتہ اڑسٹھ سالوں میں کسی بھی صوبائی حکومت نے حاصل نہیں کئے تھے انہوں نے کہاکہ ہمارے دورمیں9 یونیورسٹیاں ،سینکڑوں سکول ، کالجز،ہسپتال ،پارک اور ون ون ٹوٹو جیسے ادارے قائم کئے گئے ایمل ولی خان نے کہاکہ مسائل کاحل صرف اے این پی کے پاس ہے اور پختون قوم کو مسائل کے دلدل سے اے این پی ہی نکال سکتی ہے انہوں نے کہاکہ اقتدار اے این پی کی منزل نہیں ہم کرسی کے بغیر پختونوں کی خدمت اپنا فرض اولین سمجھتے ہیں۔ اے این پی ضلع پشاور کے صدر ملک نسیم خان نے بھی اس موقع پر خطاب کیا۔

مورخہ 15مئی 2015بروز جمعہ

پشاور ( پ ر )عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر امیر حیدر خان ہوتی اور صوبائی پارلیمانی لیڈر و ترجمان سردار حسین بابک نے اے این پی صوابی کے صدر حاجی رحمان اللہ کے انتقال پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے ، اے این پی سیکرٹریٹ سے جاری ایک تعزیتی بیان میں انہوں نے کہا کہ مرحوم کے انتقال سے میں جو خلاء پیدا ہوا ہے وہ کبھی پر نہیں ہو سکے گا انہوں نے مرحوم کی پارٹی کیلئے خدمات کو خراج تحسین پیش کیا اور کہاان کی خدمات تاریخ میں سنہرے حروف سے لکھی جائیں گی ۔انہوں نے مرحوم کی مغفرت اور پسماندگان کے صبر جمیل کیلئے دعا بھی کی۔

مورخہ : 14 مئی 2015 بروز جمعرات

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین کاشغر گوادر روٹ کے سلسلے میں عوامی نیشنل پارٹی کے زیر اہتمام 16 مئی کو منعقد ہونے والی آل پارٹیز کانفرنس کے انتظامات کا جائزہ لینے کیلئے بلوچستان پہنچ گئے ہیں۔

مورخہ : 14.5.2015 بروز جمعرات

پریس ریلیز

پشاور ( پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے ایک وفد نے آج اسلام آباد میں فلپائن ، ناروے ، انڈونیشیا اور ملائیشا کے سفارتخانوں کا دورہ کیا اور وہاں پر موجود سفارتکاروں سے گلگت کے حادثے میں جاں بحق ہونے والے سفیروں اور ان کی بیگمات کے انتقال پر پارٹی کے سربراہ اسفندیار ولی خان اور پارٹی کی اعلیٰ قیادت کی طرف سے تعزیت کا اظہار کیا۔ وفد میں پارٹی کے سینئر نائب صدر حاجی غلام احمد بلور ، جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین ، نائب صدر بشریٰ گوہر اور مرکزی رہنما افراسیاب خٹک شامل تھے۔ اے این پی کے وفد نے گلگت میں ہیلی کاپٹر حادثے میں ممتاز سفارتکاروں کے انتقال پر افسوس کرتے ہوئے کہا کہ اے این پی اور پاکستان کے عوام ان کے دُکھ میں برابر کی شریک ہے اور متاثر ہونے والے ممالک اور وہاں کے عوام کے ساتھ تعزیت کا اظہار کرتے ہیں۔ خصوصاً سفارتکاروں کے خاندانوں کیلئے حادثے کو برداشت کرنے کیلئے صبر کی دُعا کرتے ہیں۔ فلپائن ، ناروے ، انڈونیشیا اور ملائیشیا کے سفارتکاروں نے اے این پی کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ دُکھ اور درد کے اس موقع پر پاکستان کے عوام نے جس طرح حادثے سے متاثرہ لوگوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا ہے اس سے ان کے حوصلے بڑھے ہیں۔ اُنہوں نے وعدہ کیا کہ وہ اے این پی کی تعزیت سے اپنی حکومتوں اور عوام کو آگاہ کرینگے۔

مورخہ : 14 مئی 2015 بروز جمعرات

پشاور ( پ ر ) اے این پی کے صوبائی صدر اورسابق وزیراعلیٰ امیرحیدرخان ہوتی ایم این اے نے کہاہے کہ عمران خان نے تبدیلی کے نام پر پختونوں کو دھوکہ دیاہے وہ پنجاب کی سیاست میں خیبرپختون خوا بھول گئے ہیں ،پختون قوم کی خدمت اے این پی کی فرض اولین ہے ،بنی گالہ سے حکومت چلانے والوں کو بلدیاتی انتخابات میں اپنے قد کاٹھ کااندازہ ہوجائے گاوہ مل بائی پاس روڈ پر پارٹی کے صوبائی کونسل کے رکن حاجی خالد خان کی رہائش گاہ پر یوسی باغ ارم اورروڑیا جبکہ طوروشامت پور میں ڈاکٹر ارشد ندیم کی رہائش گاہ پر الگ الگ انتخابی جلسوں سے خطاب کررہے تھے جس سے جے یو آئی (ف) کے صوبائی جنرل سیکرٹری مولانا شجا ع الملک ،ضلعی جنرل سیکرٹری مولانا امانت شاہ حقانی ،باغ ارم کے ضلع کونسل امیدوار ممتاز بہادر ،روڑیا کے امیدوار مولانا عزت گل ،طورو کے تحصیل امیدوارجہانزیب خان اور شامت پورکے ضلعی امیدوارجلیل الملک نے بھی خطاب کیا اے این پی کے صوبائی صدر نے طورو میں مولانا شجا ع الملک سے مل کر الیکشن آفس کا افتتاح بھی کیا امیرحیدرخان ہوتی نے اپنے خطاب میں کہاکہ پختون بیدارہوچکے ہیں وہ مزید کسی کے جھوٹے وعدوں اوردعوؤں میں نہیں آئیں گے اور30مئی کو نام نہاد سونامی والوں کا بوریابستر گول کردیں گے اے این پی کے صوبائی صدر نے کہاکہ تبدیلی تو بیماری ہے اور پختون قوم اس بیماری سے نجات حاصل کرکے دم لے گی امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ وزیراعلیٰ صوبے کے عوام کو بتائیں کہ دوسال کے عرصے میں ان کی حکومت کی کیا کارکردگی رہی وزیراعلیٰ اپنے حلقے تک کے غریب عوام کے مسائل حل نہ کرسکے پورے صوبے میں تبدیلی کے دعوے محض ڈھونگ ہے انہوں نے کہاکہ اے این پی پختونوں کی سیاست کررہی ہے عمران خان اقتدار کے چکروں میں سندھ اور پنجاب میں گم ہوگئے ہیں انہیں پختون قوم اور پختون خوا کے مسائل سے کوئی دلچسپی نہیں انہوں نے کہاکہ بلدیاتی انتخابات عوام کے پاس ایک بہتر ہتھیار ہیں ووٹ کی طاقت کے ذریعے پختون دغا باز وں سے بدلہ لے کر رہے گی انہوں نے کہاکہ دھاندلی کے خلاف رونا رونے والے خود سرکاری آراوز کے ذریعے دھاندلی پر تلے ہوئے ہیں دوسال میں ایک اینٹ تک نہ رکھنے والوں کو اب گلی کوچوں اورسڑکوں کی تعمیر یاد آگئی ہے لیکن حکمرانوں کو معلوم ہوناچاہئے کہ ترقیاتی کاموں سے پختون قوم کے ضمیرنہیں خریدے جاسکے امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ بلدیاتی انتخابات کے لئے سہ فریقی اتحاد لوہے کی طرح مضبوط ہے مردان میں اے این پی اورجے یو آئی کی دوجماعتی اتحاد میدان مارے گی دونوں جماعتیں نظریاتی اور تاریخی طورپر ایک دوسرے کے بہت قریب ہیں مولانا مفتی محمود اور رہبر تحریک خان عبدالولی خان نے جمہوریت اور صوبے کے حقوق کی جنگ پارلیمنٹ میں اکھٹے مل کر لڑی ہے ان جلسوں سے خطاب کرتے ہوئے مولانا شجا ع الملک نے کہاکہ بلدیاتی انتخابات میں کامیابی لالٹین اور کتاب کی ہوگی ہم پختون کلچر اوراسلام کے تقدس کے لئے متحد ہوچکے ہیں اورہمارا اتحاد صرف بلدیاتی انتخابات تک محدود نہیں رہے گا انہوں نے کہاکہ انتخابابی نشانات میں حکومت نے دھاندلی کی ہے اور معزز پختون امیدواروں کو تضحیک آمیز نشانات الاٹ کئے گئے جبکہ اپنے چہیتے امیدواروں کو من پسند نشانات دیئے گئے انہوں نے کہاکہ عوام اپنے ووٹ کے ذریعے پی ٹی آئی والوں سے بدلہ لیں گے ۔

مورخہ : 13 مئی 2015 بروز بدھ
پریس ریلیز

پشاور(پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی بلدیاتی انتخابات میں اپنے چھینے گئے مینڈیٹ کو دوبارہ حاصل کرے گی۔ اے این پی کے پارلیمانی لیڈر و صوبائی ترجمان سردار حسین بابک نے موضع جنگدرہ بونیر میں ایک شمولیتی تقریب سے خطاب کے دوران کہی۔ اس موقع پر قومی وطن پارٹی کے رہنما ملک امان خان نے خاندان اور ساتھیوں سمیت اے این پی میں شمولیت کا اعلان کیا۔ اُنہوں نے ککہا کہ اے این پی کے کارکن 11 مئی 2013 کے عام انتخابات میں اپنے چھینے گئے مینڈیٹ لینے کیلئے بے تاب ہیں اور 30 مئی کو صوبے میں ایک بار پھر مضبوط قوت کے طور پر اُبھرے گی۔ اُنہوں نے کہا کہ اے این پی کے کارکن پارٹی کا سرمایہ ہیں اور یہی وجہ ہے کہ ہر وقت میں قوم پرستی کے مخالفوں نے پارٹی کو کمزور کرنے کی کوشش کی ہے۔ لیکن دن بہ دن پارٹی مضبوط سے مضبوط تر ہوتی جا رہی ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ پارٹی کارکنان انتخابی مہم میں زور و شور اور منظم انداز میں آگے بڑھنے کیلئے دن رات کام کریں۔

مورخہ : 13 مئی 2015 بروز بدھ
پریس ریلیز

پشاور(پ ر )سابق وزیراعلیٰ اور اے این پی کے صوبائی صدر امیرحیدرخان ہوتی ایم این اے نے کہاہے کہ بلدیاتی انتخابات میں تبدیلی کے نام نہاد دعویداروں کے چھکے چھڑادیں گے،وزیراعلیٰ کو چیلنج دیتاہوں کہ وہ اپنی دوسالہ حکومتی کارکردگی کا موازانہ میری دوماہ کی سابقہ حکومت سے کریں ،کارکردگی کے لحاظ سے اے این پی کاپلڑا بھاری نہ ہوا تو استعفیٰ دوں گاورنہ ناقص کارکردگی پر وزیراعلیٰ کو اپنا منصب چھوڑنا چاہئے وہ یونین کونسل کنڈر میں بلدیاتی مہم کے حوالے سے منعقدہ عوامی اجتماع سے خطاب کررہے تھے جس سے اے این پی کے اتحادی جماعت جے یو آئی (ف ) کے صوبائی رہنما مولانا اسرارالحق اور لیاقت علی باچہ نے بھی خطاب کیا امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ جھوٹ اور بلند وبانگ دعوؤں کے ذریعے پختونوں کا مینڈیٹ چوری کرنے والوں کے حساب کتاب کا وقت آگیاہے عمران خان انتخابی دھاندلیوں کے خلاف تین ماہ تک شورمچاکر دھرنادیالیکن آج بلدیاتی انتخابات میں کھلے عام دھاندلی کی جارہی ہے کہیں ٹرانسفامر پہنچائے جارہے ہیں توکہیں شنگل اور سڑکوں کے ذریعے عوام کی ضمیر خریدنے کی ناکام کوشش کی جارہی ہے انہوں نے کہاکہ انتخابی نشانات میں بھی حکمران جماعت نے دھاندلی کی ہے اوراپنے لوگوں کو من پسند نشانات الاٹ کئے گئے جس کا خمیازہ انہیں انتخابات میں بھگتنا ہوگاامیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ غیور پختون کسی کے دعوؤ ں میں نہیں آئیں گے وہ 2013میں چوری شدہ مینڈیٹ واپس لے کر اے این پی اورا س کے اتحادی جماعتوں کا ساتھ دیں گے امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ عوام سوچ سمجھ کر اپنا ووٹ کا استعمال کریں اور بلدیاتی انتخابات میں حکمران جماعت اور اس کے اتحادیوں کو بری طرح شکست دیں گے اے این پی کے صوبائی صدر نے کہاکہ بلدیاتی انتخابات میں کامیابی کے بعد صوبے میں ترقیاتی عمل کا پہیہ جہاں رکا تھا وہاں سے دوبارہ چلے گاامیرحیدرخان ہوتی نے تحریک انصاف پر کڑی تنقید کی اورکہاکہ عام انتخابات میں پختونوں کا مینڈیٹ چرالیاگیاہے ہم پر دروزار ے بند کرکے تبدیلی کے جھوٹے دعویداروں کے لئے دروزاے کھول دیئے گئے تاہم پختون بیدارہوچکے ہیں اور وہ سونامی والوں سے اپنا بدلہ 30مئی کے بلدیاتی انتخابات میں لیں گے انہوں نے کارکنوں کو ہدایت کی کہ وہ دن رات ایک کرکے حکمرانوں کا اصل چہرہ عوام کے سامنے بے نقاب کریں تاکہ تبدیلی والوں کو واپس بنی گالہ بیج دیاجائے ۔

کراچی۔ بدھ 13مئی 2015
عوامی نیشنل پارٹی سندھ کے صدر سینیٹر شاہی سید نے صفورا چورنگی میں اسماعلی برادری کی بس پر ہونے والی فائرنگ کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ
شہر میں جاری ٹارگٹڈ آپریشن کے باوجود اتنا بدترین واقعہ لمحہ فکریہ ہے بد قسمت شہر کے سانحات کی طویل فہرست میں ایک اور دردناک سانحے کا اضافہ ہوگیاسخت سے سخت ترین الفاط بھی واقعے کی مذمت کے لیے ناکافی ہیں دہشت گردی سے جان چھڑانے کے لیے ایک ہی راستہ ہے کہ عوام متحد ہوکر فوج کی پشت پر کھڑے ہوجائیں جب تک عوام دہشت گردی کے خلاف متحد نہیں ہوں گے دہشت گردی ختم کرنا ممکن نہیں،اس دردناک واقعے سے پوری انسانیت کانپ اٹھی ہے عوامی نیشنل پارٹی پسماندگان کے غم میں برابر کی شریک ہے دریں اثناء اے این پی سندھ کے جنرل سیکریٹری یونس خان بونیری نے باچا خان مرکز سے جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ سانحہ صفورا چورنگی کے خلاف عوامی نیشنل پارٹی نے شہر بھر میں یوم سوگ کا اعلان کیا ہے سانحے کے خلاف باچا خان مرکز اور مردان ہاؤس سمیت تمام پارٹی دفاتر پرسیاہ پرچم لہرائیں جائیں گے کارکنان بازؤں پر سیاہ پٹیاں باندھیں گے اور تمام تنظیمی سرگرمیاں معطل رہیں گیں

مورخہ 13مئی 2015ء بروز بدھ

پشاور ( پ ر )عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ اے این پی نے ہمیشہ عوامی مفادات کا تحفظ کیا ہے اور بلدیاتی انتخابات میں کامیابی کے بعد عوامی خدمت کا سلسلہ جاری رہے گا ،ان خیالات کا اظہار انہوں نے شبقدر بٹگرام میں انتخابی مہم کے سلسلے میں ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، اس موقع پر قومی وطن پارٹی سے سینکڑوں افراد نے اے این پی میں شمولیت اختیار کی ایمل ولی خان نے پارٹی میں شمولیت اختیار کرنے والوں کو سرخ ٹوپیاں پہنائیں اور انہیں مبارکباد پیش کرتے ہوئے اپنے خطاب میں مزید کہا کہ اے این پی واحد سیاسی جماعت ہے جس نے ہمیشہ عوامی مفادات اور حقوق کا تحفظ کیا ہے ، اور عوام کی پارٹی میں جوق در جوق شمولیت اس بات کا واضح ثبوت ہے ،انہوں نے کہا کہ تبدیلی کا نعرہ لگانے والوں نے عوامی مشکلات میں کمی کی بجائے اضافہ کر دیا ہے اور صوبے کے عوام اب انہیں ووٹ دینے پر پچھتا رہے ہیں ، انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے اپنے لوگ بھی تحریک انصاف سے نالاں ہیں اور وہ اے این پی کو ہی اپنا نجات دہندہ تصور کرتے ہیں انہوں نے کہا کہ حکومت بلدیاتی انتخابات میں دھاندلی کا سوچ رہی ہے تاہم اسے ناکامی کے سوا کچھ نہیں ملے گا ۔انہوں نے کہا کہ بلدیاتی انتخابات میں ھکومتی جماعتوں کو شکست سے دوچار کریں گے ،اور اے ان پی کے امیدواروں کی جیت کو یقینی بنانے کیلئے کارکن رابطوں کو مزید تیز کریں ،ایمل ولی خان نے کہا کہ بلدیاتی امیدواروں کو جو نشانات الاٹ کئے جارہے ہیں وہ امیدوارون کو متنفر کرنے کی سازش ہے ، انہوں نے الیکشن کمیشن سے مطالبہ کیا کہ تمام حلقوں میں حکومت کی جانب سے کی جانے والی آئینی خلاف ورزیوں کی روک تھام کیلئے ٹھوس اقدامات کئے جائیں اور انتخابی نشانات پر از سر نو نظر ثانی کی جائے ۔ جلسہ سے شیر شاہ خان اور سید معصوم شاہ نے بھی خطاب کیا ۔

مورخہ 13مئی 2015ء بروز بدھ

پشاور ( پ ر )عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے کراچی میں بس پر فائرنگ کے واقعے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے اور اس میں قیمتی بے گناہ انسانی جانوں نے ضیاع پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے ۔ اے این پی سیکرٹریٹ سے جاری ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ نہتے اور معصوم انسانوں کی جانیں والے دہشتگرد کسی طور انسان کہلانے کے لائق نہیں انہوں نے کہا کہ دہشت گردوں کا کسی نظریے اور مذہب سے کوئی تعلق نہیں اور معصوم انسانوں کی جانیں لینے والوں کے چہرے بے نقاب ہو چکے ہیں ، انہوں نے کہا کہ حکومت فی الفور قاتلوں کو گرفتار کر کے انہیں انصاف کے کٹہرے میں لائے ، اسفندیار ولی خان نے غمزدہ خاندانوں سے اظہار ہمدردی کرتے ہوئے شہداء کی مغفرت کیلئے بھی دعا کی ۔

مورخہ : 11.5.2015 بروز پیر

پریس ریلیز

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی رہنما سینیٹر حاجی محمد عدیل نے بعض اخبارات میں وزارت پانی و بجلی کے جانب سے گیانی بھاشا الیکٹریک ڈیم کے حوالے سے شائع ہونے والے ایک اشتہار پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ مذکورہ ڈیم خیبر پختونخوا اور گلگت بلتستان کا مشترکہ پراجیکٹ ہے لیکن وفاقی حکومت نے اُسے صرف گلگت بلتستان کا پراجیکٹ بنا دیا ہے جبکہ بھاشا دیا میر خیبر پختونخوا کا اور گیانی گلگت بلتستان کا حصہ ہے اُنہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت چاہتی ہے کہ ڈیم صرف گلگت بلتستان میں بنیں اور اس سے حاصل ہونے والا بجلی کا خالص منافع خیبر پختونخوا کو نہ مل سکے۔ اُنہوں نے کہا کہ یہ خیبر پختونخوا کے عوام پر ایک اور بڑا ظلم ہے کہ صوبے کی زمین پر بننے والے ڈیم کو گلگت بلتستان کا ڈیم قرار دیا جا رہا ہے ۔ اُنہوں نے کہا کہ اس کی پیداواری صلاحیت چارہزار آٹھ سو میگا واٹ ہو گی ۔ اُنہوں نے کہا کہ اسی اشتہار میں خیبر پختونخوا کیلئے جس پراجیکٹ کا ذکر ہے اُس سے ملنے والا منافع وفاقی حکومت اپنے پاس رکھے گی اور صوبے کو اس کا حصہ کسی صورت اُسے نہیں دیا جائیگا۔ حاجی محمد عدیل نے کہا کہ وفاقی حکومت کی بددیانتی صاف ظاہر ہو چکی ہے کیونکہ مذکورہ اشتہار میں خیبر پختونخوا کے جن پراجیکٹس کا ذکر کیا گیا ہے ان میں سے کوئی بھی پراجیکٹ وفاقی حکومت نے شروع نہیں کیے اور نہ ہی اس کیلئے کوئی غیر معمولی رقم مختص کی گئی ہے۔ بلکہ یہ تمام پراجیکٹس ماضی کی تمام حکومتوں کے ہیں اور ماضی میں ہی ان پر کام کا آغاز کیا گیا تھا اُنہوں نے کہا کہ جس طرح پاک چائنا اکنامک کولی ڈور کے حوالے سے وفاقی حکومت نے خیبر پختونخوا اور بلوچستان کی عوام کو دھوکہ دیا اسی طرح یہ اشتہار بھی وفاقی حکومت کی بد نیتی کا ایک ثبوت ہے جس کی عوامی نیشنل پارٹی اور دیگر قوم پرست جماعتیں مذمت کرتی ہیں اور اس کے خلاف بھرپور مذاہمت کی جائیگی۔

مورخہ 11مئی 2015ء بروز پیر

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ بلدیاتی انتخابات کے حوالے سے جو سیاسی فضا قائم ہو گئی ہے اس کے نتیجے میں اے این پی کی کامیابی یقینی ہو چکی ہے جبکہ خیبر پختونخوا کے عوام اب دھوکہ دینے والوں کا بوریا بستر گول کر دیں گے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے یو سی لڑمہ توحید آباد شیرو جھنگی میں ایک بڑے جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، عوامی نیشنل پارٹی ضلع پشاور کے صدر ملک نسیم اور پیپلز پارٹی کے ضلعی صدر اور سابق ایم پی اے ملک طہماش سمیت بلدیاتی امیدوار اور کارکنو ں کی کثیر تعداد بھی اس موقع پر موجود تھی انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی جانب سے تبدیلی کا نعرہ عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکنا تھا تاہم عوام اب بیدار ہو چکے ہیں اور اب وہ خالی خولی نعروں پر یقین نہیں کریں گے ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ بلدیاتی الیکشن کے شیڈول کے بعد کسی بھی ترقیاتی کام کا جواز نہیں بنتا کیونکہ یہ الیکشن کمیشن کے ضابطہ اخلاق اور آئین کی خلاف ورزی ہے اور بدقسمتی سے صوبائی حکومت ہی اس میں ملوث ہے انہوں نے کہا کہ دھاندلی کا شور مچانے والوں نے خیبر پختونخوا میں بدترین دھاندلی پر آنکھیں کیوں بند کر رکھی ہیں ،انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن بلدیاتی الیکشن میں بے دریغ سرکاری مشنری کے استعمال کو روکنے کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھائے انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے اپنے لوگ بھی تحریک انصاف سے نالاں ہیں اور وہ اے این پی کو ہی اپنا نجات دہندہ تصور کرتے ہیں، انہوں نے کہا کہ حکومت بلدیاتی انتخابات میں دھاندلی کا سوچ رہی ہے تاہم اسے ناکامی کے سوا کچھ نہیں ملے گا ۔انہوں نے کہا کہ بلدیاتی انتخابات میں حکومتی جماعتوں کو شکست سے دوچار کریں گے ،اور اے ان پی کے امیدواروں کی جیت کو یقینی بنانے کیلئے کارکن رابطوں کو مزید تیز کریں انہوں نے کہا کہ صوبے کی ترقی کا سفر جاری رکھنے کیلئے عوام بلدیاتی الیکشن میں اے این پی کے امیدواروں کو ووٹ دیں تا کہ عوام اور حوبے کے مفادات کا تحفظ کیا جا سکے۔،انہوں نے کہا کہ اے این پی منافقت پر یقین نہیں رکھتی اور جہاں بھی عوام یا صوبے کے حقوق غصب کرنے کی کوشش کی گئی اے این پی اس کے خلاف بھرپور مزاحمت کرے گی ، انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن بلدیاتی الیکشن میں سرکاری مشنری کے استعمال کو روکنے کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھائے انہوں نے اپیل کی کہ عوام صوبے کی ترقی کا سفر جاری رکھنے کیلئے اپنا قیمتی ووٹ اے این پی کو دیں،میاں افتخار حسین نے کہا کہ عوام پی ٹی آئی کی حکومت سے نالاں ہیں جس نے صوبے کے عوام کو مسائل کی دلدل میں دھکیل دیا ہے اور انشاء اللہ 30مئی کا سورج اے این پی کی فتح کی نوید لے کر طلوع ہو گا ،اور بلدیاتی الیکشن میں کامیابی کے بعد عوام کے دیرینہ مسائل اب ان کی دہلیز پر حل کئے جائیں گے ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ اے این پی عوامی خدمت کا سلسلہ ماضی کی طرح مستقبل میں بھی جاری رکھے گی

جاریکردہ
اے این پی سیکرٹریٹ
باچا خان مرکز پشاور

مورخہ 10مئی 2015ء بروز اتوار

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر امیر حیدر خان ہوتی نے کہا ہے کہ اے این پی نے عوامی حقوق کے تحفظ کا تہیہ کر رکھا ہے اور بلدیاتی الیکشن مین کامیابی کے بعد پارٹی عوامی خدمت کا سلسلہ جاری رکھے گی ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے باچا خان مرکز پشاور میں منعقدہ بلدیاتی الیکشن ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، اس موقع پر اے این پی کے صوبائی جنرل سیکر ٹری ایمل ولی خان سمیت دیگر صوبائی قائدین اور اے این پی ضلع پشاور کے صدر ملک نسیم ،سٹی صدر ملک غلام مصطفی سمیت کارکنوں نے کثیر تعداد میں شرکت کی ، امیر حیدر خان ہوتی نے کہا کہ اے این پی بلدیاتی الیکشن میں کلین سویپ کرے گی ، اور انشاء اللہ 30 مئی کا سورج اے این پی کی کامیابی کی نوید لے کر طلوع ہو گا،انہوں نے کہا کہ اے این پی واحد سیاسی جماعت ہے جس نے ہمیشہ عوامی مفادات اور حقوق کا تحفظ کیا ہے ، اور عوام کی پارٹی میں جوق در جوق شمولیت اس بات کا واضح ثبوت ہے ،انہوں نے کہا کہ تبدیلی کا نعرہ لگانے والوں نے عوامی مشکلات میں کمی کی بجائے اضافہ کر دیا ہے اور صوبے کے عوام اب انہیں ووٹ دینے پر پچھتا رہے ہیں ، انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے اپنے لوگ بھی تحریک انصاف سے نالاں ہیں اور وہ اے این پی کو ہی اپنا نجات دہندہ تصور کرتے ہیں، انہوں نے کہا کہ حکومت بلدیاتی انتخابات میں دھاندلی کا سوچ رہی ہے تاہم اسے ناکامی کے سوا کچھ نہیں ملے گا ۔انہوں نے کہا کہ بلدیاتی انتخابات میں ھکومتی جماعتوں کو شکست سے دوچار کریں گے ،اور اے ان پی کے امیدواروں کی جیت کو یقینی بنانے کیلئے کارکن رابطوں کو مزید تیز کریں ،انہوں نے کہا کہ امیدواروں کو ایسے انتخابی نشانات الاٹ کئے جا رہے ہیں جس سے امیدواروں میں بے چینی پھیل رہی ہے ، انہوں نے مطالبہ کیا کہ انتخابی نشانات کی الاٹمنٹ پر نظر ثانی کی جائے ،انہوں نے صوبائی حکومت کی جانب سے ترقیاتی کاموں کے اعلانات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے الیکشن کمیشن سے مطالبہ کیا کہ صوبائی حکومت آئین شکنی میں مصروف ہے اور الیکشن کمیشن کے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزیاں کی جا رہی ہیں ، انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن پری پول رگنگ کیلئے کی جانے والی تیاریوں اور صوبائی حکومت کی خلاف ورزیوں کا نوٹس لے ۔ امیر حیدر ہوتی نے کہا کہ اے این پی کا مقصد اقتدار کا حصول کبھی نہیں رہا بلکہ اپوزیشن میں رہتے ہوئے بھی عوامی خدمت کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہیں ، انہوں نے کہا کہ صوبے کی ترقی کا سفر جاری رکھنے کیلئے عوام بلدیاتی الیکشن میں اے این پی کے امیدواروں کو ووٹ دیں تا کہ عوام اور حوبے کے مفادات کا تحفظ کیا جا سکے۔

کراچی ۔ہفتہ 09 مئی 2015
عوامی نیشنل پارٹی سندھ کی جانب سے باچا خان مرکز سے جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق اے این پی کے شہید رہنماء صادق خٹک اور ان کے بیٹے شہید ایمل زمان خٹک کی دوسری برسی کے سلسلے میں جلسہ کل بروز اتوار شام پانچ بجے کورنگی بلال کالونی مین بازار وارڈ آفس کے سامنے منعقد کیا جائے گاجلسے سے اے ین پی کے قائدین خطاب کریں گے اعلامیہ میں مذید کہا گیا ہے کہ12 مئی کے جلسہ عام کی تیاریوں کے حوالے سے اے این پی ضلع جنوبی کے تحت کل بروز اتوار سہ پہر ڈھائی بجے ریلی کا انعقاد کیا جائے گا ریلی بوٹ بیسن سے شروع ہوکر ہجرت کالونی ،سٹی ریلوے کالونی ،شاہین کمپلیکس براستہ ٹاور ،کھڈہ مارکیٹ،لی مارکیٹ ،لیاری آٹھ چوک،میرا ناکہ ،مرز ادم خان روڈ ،نیٹی جیٹی پل،کیماڑی مسان روڈ سے ہوتی ہوئی کلفٹن شیریں جناح کالونی پر اختتام پزیر ہوگی۔
ضلع شرقی کے تحت کل بروز اتوار شام چار بجے ریلی کا انعقاد کیا جائے گا ریلی ابولحسن اصفہانی روڈ گلشن ویو سے شروع ہوکر ،علی ٹاؤن ،سکندر گوٹھ ،محمد خان کالونی ،نیو سبزی منڈی ،ایوب گوٹھ سے ہوتی ہوئی الآصف اسکوائر پر اختتام پزیر ہوگی ،اس کے علاوہ شہر بھر میں کل ریلیاں نکالی جائیں گی۔

[suffusion-the-author]

[suffusion-the-author display='description']