June-2014

 
مورخہ : 30.6.2014 بروز جمعرات
پشاور: ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی پختونخوا کے صدر امیر حیدر خان ہوتی ، جنرل سیکرٹری میاں افتخارحسین ، سیکرٹری اطلاعات اور صوبائی اسمبلی میں اے این پی کے پارلیمانی لیڈر سردارحسین بابک نے ممتاز خدائی خدمتگار اور باچاخانؒ کے دست راست عظیم اللہ بابا غورغشتو خدوخیل کی وفات پر گہرے رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کے خاندان اور لواحقین سے ہمدردی اور تعزیت کا اظہار کیا ہے ۔
باچاخان مرکز پشاور سے انہوں نے اپنے مشترکہ تعزیتی بیان میں کہا ہے کہ مرحوم باچاخان باباؒ اور رہبر تحریک خان عبدالولی خان باباؒ کے قریب ترین ساتھیوں میں سے تھے اور اُن کے خاندان کی پارٹی کیلئے ناقابل فراموش قربانیاں ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی۔
انہوں نے کہا کہ مرحوم زیرک ، خوش اخلاق اور باکردار شخصیت تھے اور اُن کے بچھڑنے سے پارٹی ایک فعال اور سرگرم رکن سے محروم ہوگئی ۔ اُن کے جانے سے پارٹی میں جو خلاء پیدا ہوا ہے وہ بمشکل پُر ہو سکے گا۔
مورخہ : 30.6.2014 بروز جمعرات
مینگورہ، مرکزی اور صوبائی حکومت متاثرین وزیرستان کیساتھ امداد کی بجائے مذاق کر رہے ہیں یہ بات اے این پی کے صوبائی صدر امیر حیدر خان ہوتی نے اپنے ایک روزہ دورۂ سوات کے دوران اے این پی کے سینئر رہنما افضل خان لالہ کی رہائش گاہ پر صحافیوں سے بات چیت کے دوران کہی۔ اُنہوں نے کہا کہ وزیرستان آپریشن کی وجہ سے لاکھوں متاثرین اس سخت گرمی میں صوبائی اور مرکزی حکومتوں کی عدم توجہ اور بے حسی کی وجہ سے ذلیل و خوار ہو رہے ہیں ۔ اُنہوں نے کہا کہ دونوں حکومتیں سنجیدہ اور عملی اقدامات کے بجائے ایک دوسرے پر الزام تراشی میں مصروف ہیں۔ اے این پی کے صوبائی صدر نے اے این پی کے تمام کارکنوں ، عہدیداروں اور عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ نیشنل یوتھ آرگنائزیشن کے منعقدہ کیمپوں میں متاثرین وزیرستان کیلئے دل کھول کر عطیات دیں۔ اُنہوں نے کہا کہ دہشتگردی کے خلاف آپریشن کو مؤثر اور قلیل عرصہ میں تکمیل تک پہنچانا چاہیے اور بے گناہ لوگوں کی ہلاکتوں کا خاص خیال رکھنا چاہیے۔ اُنہوں نے کہا کہ عمران خان دھاندلی کا واویلا پنجاب میں کر رہے ہیں اور خیبر پختونخوا اسمبلی توڑنے کی دھمکیاں دے رہے ہیں جو کہ سمجھ سے بالاتر ہے۔
اس سے پہلے امیر حیدر خان ہوتی شہید خلیل اللہ کی رہائش گاہ برہ بانڈی گئے جہاں پر اُنہوں نے شہید کے خاندان کیساتھ تعزیت اور ہمدردی کا اظہار کیا اور شہید کی قبر پر حاضری دی۔ بعد میں اے این پی کے صوبائی صدر اور سابق وزیراعلیٰ گاؤں شکردرہ گئے جہاں سے اُنہوں نے دہشتگردی کے ایک حملے میں زخمی ہونے والے اے این پی کے ممتاز کارکن نعمت علی خان کی عیادت کی اور وہاں پر اُنہوں ان کی صحت یابی کیلئے دُعا کی۔ اس موقع پر اے این پی کے صوبائی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین ، صوبائی ترجمان سردار حسین بابک ، سینئر نائب صدر سید عاقل شاہ ، صوبائی جائنٹ سیکرٹری خورشید خٹک ، سابق وزیر جنگلات واجد علی خان ، ایوب خان اشاڑی ، ڈپٹی جنرل سیکرٹری ایمل ولی خان ، اے این پی سوات کے صدر شیر شاہ خان ، عمران خان آفریدی اور اے این پی کے دیگر ضلعی ارکان بھی موجود تھے۔
مورخہ : 27.6.2014 بروز جمعۃ المبارک
عوامی نیشنل پارٹی (یوکے) آرگنائزنگ کمیٹی کے چیئرمین محفوظ جان نے اے این پی پختونخوا انٹرا پارٹی الیکشن میں آئندہ چار سال کیلئے نو منتخب صدر امیر حیدر خان ہوتی ، سینئر نائب صدر سید عاقل شاہ ، جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین ، ڈپٹی جنرل سیکرٹری ایمل ولی خان ، فاٹا نائب صدر عمران خان آفریدی ، سیکرٹری اطلاعات سردار حسین بابک ، خاتون نائب صدر ستارہ عمران ، جائنٹ سیکرٹری شگفتہ ملک ملاکنڈ زون نائب صدر نوید انجم اور صوبائی کابینہ کے دیگر نومنتخب ارکان کو دل کی اتھاہ گہرائیوں سے مبارکباد پیش کی ہے۔
اُنہوں نے کہا ہے کہ اے این پی واحد پارٹی جو قوم کو موجودہ بحرانوں سے نکالنے کی بھرپور صلاحیت رکھتی ہے۔ اور اپنی مثبت اور انسان دوست پالیسیوں کی بدولت روز بروز اس کا گراف بلد ہو رہا ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ نو منتخب صوبائی کابینہ محترم اسفندیار ولی خان کی قیادت میں اپنی تمام تر صلاحیتوں اور توانائیوں کو بروئے کار لا کر اہم اور کلیدی کردار ادا کرے گی اور پارٹی کارکنوں کی توقعات پر پورا اُترے گی۔
عوامی نیشنل پارٹی سندھ کے صدر سینیٹر شاہی سید نے تمام اہل وطن کو ماہ رمضان کی مبارک باد۔
کراچی۔ اتوار 29جون 2014
عوامی نیشنل پارٹی سندھ کے صدر سینیٹر شاہی سید اور جنرل سیکریٹری یونس خان بونیری نے تمام اہلیان وطن کو ماہ رمضان کی مبارک دیتے ہوئے کہا ہے کہ ماہ رمضان کی مبارک گھڑیوں اہلیان پاکستان ملک میں قیام امن کے لیے خصوصی دعاؤں کا اہتمام کریں ماہ رمضان ہمیں برداشت اور صبر کا درس دیتا ہے،تاجر حضرات ماہ رمضان میں غریب عوام کی مشکلات کا بھر پور خیال کریں،ماہ رمضان کا اصل سبق برداشت ، صبر و شکر ہے ،فرض ،سنت کے ساتھ تمام عبادات کا بھر پور اہتمام کیا جائے ،سب سے افضل مہینے ہمیں انسانیت کی کی خدمت سے بڑھ کر اچھا عمل ہو ہی نہیں سکتا، مشکل کی گھڑی میں شمالی و زیرستان آپریشن کی بحالی اپنا کردار اور بھر پور دعائیں کریں کے الیکٹرک کی انتظامیہ سے سحر و افطار میں لوڈ شیڈنگ سے گریز کریں ۔
مورخہ:29-6-2014 برو زپیر
پشاور: ( پ ر ) اے این پی کے صوبائی ترجمان و پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ رمضان المبارک کے بابرکت مہینے میں لوڈ شیڈنگ سے اجتناب کیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ سخت گرمی اور رمضان المبارک کے مہینے میں عوام کے مشکلات اور تکالیف کو مدّنظر رکھتے ہوئے کم سے کم لوڈشیڈنگ کی جانی چاہیے۔
انہوں نے کہا کہ ناروا لوڈشیڈنگ نے عوام کا جینا حرام کر دیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکمران ہوش کے ناخن لیں اور عوام کے مسائل کے حل پر فوری توجہ دیں۔
انہوں نے کہا کہ مرکزی اور صوبائی حکومتیں دونوں ذمہ داری قبول کرنے سے کترا رہے ہیں اور عوام مسائل کے دلدل میں پس رہے ہیں ۔ لہٰذا یہ وقت ایک دوسرے کی ٹانگیں کھینچنے کا نہیں بلکہ عوام کو سہولت دینے اور عوامی مسائل کے حل کرنے کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بجلی لوڈشیڈنگ نے نہ صرف ضروریات زندگی پورا کرنا مشکل ہوگیا ہے بلکہ صوبے اقتصادی و معاشی طور پر تباہ ہو چکا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اے این پی کے خلاف پروپیگنڈہ کرنے والے آج اقتدار میں بیٹھے ہیں لہٰذا وہ قوم کے سامنے جوابدہ ہے آج ان کے ہاتھ میں اختیار ہے پھر آج عوام کیوں لوڈشیڈنگ اور دیگر مسائل کے دلدل میں ذلیل و خوار ہور ہے ہیں۔
مورخہ:29-6-2014 برو ز اتوار
پشاور: ( پ ر )اے این پی کے صوبائی ترجمان و پارلیمانی لیڈر سردارحسین بابک نے کہا ہے کہ پشاور ائیرپورٹ کی بین الاقوامی پروازوں کیلئے بندش صوبائی حکومت کی ناکامی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ائیرپورٹ کے گردو نواح کو محفوظ اور آس پاس کے علاقوں میں پچھلے ایک سال سے رات کے وقت دہشت گردوں کی موجودگی کی رپوٹس تھی لیکن صوبائی حکومت نے اس طرف کوئی توجہ نہیں دی ۔ انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا اور قبائلی علاقوں کے لاکھوں کی تعداد پختون باہر ممالک میں محنت مزدوری کر رہے ہیں اور ملک اور صوبے کیلئے زرمبادلہ کماتے ہیں لیکن بین الاقوامی پروازوں کی بندش نہ صرف صوبے اور قبائلی عوام کی باہر ممالک میں مقیم لوگوں کیلئے نقصان اور تکلیف کا باعث ہے بلکہ صوبے کے معاشی قتل اور بدنامی کا باعث ہے ۔
انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت کو صوبے کے حساس مقامات اور عوام کو تحفظ دینے کی ذمہ داری کو قبول کرنا ہوگا ورنہ آج باچاخان ائیرپورٹ بین الاقوامی پروازوں کیلئے بند ہوگیا کل خدانخوستہ صوبے کے دوسرے حساس مقامات بھی محفوظ نہیں رہیں گے اور نقصان پہنچنے کا احتمال موجود ہے ۔ انہوں نے کہا کہ صوبے کے عوام پہلے ہی سے مصائب و تکالیف میں گِرے ہوئے ہیں لہٰذا موجودہ صوبائی حکومت نمائشی خبروں کی بجائے صوبے کے مسائل پر توجہ دیں تاکہ صوبے کے عوام سُکھ کا سانس لے سکیں
۔مورخہ:28-6-2014 برو ز ہفتہ
پشاور: ( پ ر )اے این پی کے صوبائی ترجمان و پارلیمانی لیڈر سردارحسین بابک نے کہا ہے کہ پشاور ائیرپورٹ کی بین الاقوامی پروازوں کیلئے بندش صوبائی حکومت کی ناکامی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ائیرپورٹ کے گردو نواح کو محفوظ اور آس پاس کے علاقوں میں پچھلے ایک سال سے رات کے وقت دہشت گردوں کی موجودگی کی رپوٹس تھی لیکن صوبائی حکومت نے اس طرف کوئی توجہ نہیں دی ۔ انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا اور قبائلی علاقوں کے لاکھوں کی تعداد پختون باہر ممالک میں محنت مزدوری کر رہے ہیں اور ملک اور صوبے کیلئے زرمبادلہ کماتے ہیں لیکن بین الاقوامی پروازوں کی بندش نہ صرف صوبے اور قبائلی عوام کی باہر ممالک میں مقیم لوگوں کیلئے نقصان اور تکلیف کا باعث ہے بلکہ صوبے کے معاشی قتل اور بدنامی کا باعث ہے ۔
انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت کو صوبے کے حساس مقامات اور عوام کو تحفظ دینے کی ذمہ داری کو قبول کرنا ہوگا ورنہ آج باچاخان ائیرپورٹ بین الاقوامی پروازوں کیلئے بند ہوگیا کل خدانخوستہ صوبے کے دوسرے حساس مقامات بھی محفوظ نہیں رہیں گے اور نقصان پہنچنے کا احتمال موجود ہے ۔ انہوں نے کہا کہ صوبے کے عوام پہلے ہی سے مصائب و تکالیف میں گِرے ہوئے ہیں لہٰذا موجودہ صوبائی حکومت نمائشی خبروں کی بجائے صوبے کے مسائل پر توجہ دیں تاکہ صوبے کے عوام سُکھ کا سانس لے سکیں۔
مورخہ 28 جون 2014 ؁ء بروز ہفتہ
پشاور (پ ر) نیشنل یوتھ آرگنائزیشن کے زیر اہتمام متاثرین شمالی وزیرستان کے لئے چندہ مہم کا اہتمام کیا گیا جس کے لئے صوبے کے مختلف اضلاع میں کیمپ لگائے گئے پارٹی رہنماؤں نے کیمپوں کا دورہ کیا اور دل کھول کر عطیات دیں ان خیالات کا اظہار نیشنل یوتھ آرگنائزیشن کے صوبائی صدر سنگین خان ایڈووکیٹ‘ صوبائی جنرل سیکرٹری حسن بونیری‘ سینئر نائب صدر گلزار خان‘ ضلع پشاور کے صدر عادل ماشووال نے ایک مشترکہ اخباری بیان میں کہا کہ ہم متاثرین شمالی وزیرستان کے ساتھ اس مصیبت کی گھڑی میں برابر کے شریک ہیں اور ان کو کسی صورت تنہا نہیں چھوڑیں گے انہوں نے مرکزی و صوبائی حکومتوں پر زور دیا کہ وہ متاثرین شمالی وزیرستان کو تمام ضروریات زندگی مہیا کریں کیونکہ انہوں نے اپنی دھرتی پر امن کی خاطر اپنے گھر بار چھوڑ دئیے ہیں انہوں نے کہا کہ نیشنل یوتھ آرگنائزیشن پختونوں کی فلاح و بہبود کیلئے آئندہ بھی اسی طرح فلاحی کاموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں گے‘ انہوں نے کہا کہ بروز اتوار بنوں جا کر مستحق خاندان کو 3 ہزار روپے دینگے۔
مورخہ : 27.6.2014 بروز جمعۃ المبارک
پشاور (پ ر) عوامی نیشنل پارٹی پختونخوا کے صدر امیر حیدر خان ہوتی کی ہدایات پر صوبائی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے ملگری اُستاذان کے ایڈوائزر کیلئے سردار حسن بابک ، پختون سٹوڈنٹس فیڈیشن کے ایڈوائزر کیلئے ایمل ولی خان اور نیشنل یوتھ آرگنائزیشن کے ایڈوائزر کیلئے ہارون احمد بلور کے ناموں کی نامزدگی کا نوٹیفیکیشن پارٹی سیکرٹریٹ باچا خان مرکز سے جاری کر دیا ہے۔
باچا خان مرکز سے جاریکردہ نوٹیفیکیشن میں صوبائی صدر نے اُمید ظاہر کی ہے کہ پارٹی کی تینوں ذیلی تنظیموں کے نامزد ایڈوائزرز اپنی تمام تر صلاحیتوں اور توانائیوں کو بروئے کار لا کر اپنی ذمہ داریاں بطریق احسن نبھائیں گے اور پارٹی کی ذیلی تنظیموں کی فعالیت اور ترقی میں اہم کردار ادا کرینگے۔
مورخہ : .6.2014 27 بروز جمعۃ المبارک

پختون سٹوڈنٹس فیڈریشن اسلامیہ کالج کے زیر اہتمام طلبہ اور طالبات کی رہنمائی داخلہ کیمپ لگایا گیا ہے جو کہ 23 جون سے 4 جولائی تک جاری رہے گا۔ اے این پی کے رہنما اور پارلیمانی لیڈر ، سیکرٹری اطلاعات سردار حسین بابک ، سابق صوبائی جنرل سیکرٹری ارباب محمد طاہر خان خلیل ، محترمہ جمیلہ گیلانی نے رہنمائی داخلہ کیمپ کا دورہ کیا۔ اس موقع پر پی ایس ایف اسلامیہ کالج کے صدر ملک احتشام الحق ، سنگین شاہ اور توحید داؤد زئی بھی موجود تھے۔ اے این پی کے رہنماؤں نے طلبہ اور طالبات کی رہنمائی کیلئے ان کی کاوشوں کو سراہا اور کہا کہ یہ ایک اچھا اقدام ہے اُنہوں نے کیمپ کے متنطمین کو خراج تحسین پیش کیا اور نئے آنے والے طلبہ کو خوش آمدید کہا۔

مورخہ : 27.6.2014 بروز جمعۃ المبارک

اے این پی کے صوبائی ترجمان و پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ مرکزی اور صوبائی حکومتیں متاثرین وزیرستان کیلئے فوری طور پر امداد کا انتظام کر لیں۔ اُنہوں نے کہا کہ گرمی کے اس سخت موسم میں لاکھوں کی تعداد میں متاثرین دونوں حکومتوں کی بے حسی اور غیر سنجیدہ روئیے کی وجہ سے ذلیل و خوار ہو رہے ہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ مرکزی اور صوبائی حکومتیں متاثرین کی فوری امداد کیلئے خاطر خواہ انتظام کرنا چاہیے کیونکہ لاکھوں کی تعداد میں پختون متاثرین ملکی بقاء کی جنگ کیلئے قربانی دے رہے ہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ مرکزی اور صوبائی حکومتیں ایک دوسرے پر ذمہ داری ڈالنے کے بجائے مشترکہ طور پر متاثرہ خاندانوں کیلئے اگر ترقیاتی کاموں اور فنڈز کو منجمند کرنا پڑے تو بے جا نہ ہوگا۔
اُنہوں نے کہا کہ اے این پی دورحکومت میں ملاکنڈ ڈویژن کے متاثرین اور سیلاب زدگان کیلئے صوبے کے ترقیاتی فنڈز کو متاثرین کی بحالی اور ضرورتوں پر استعمال کیا گیا تھا۔ اُنہوں نے کہا کہ نیشنل یوتھ آرگنائزیشن کے مختلف اضلاع میں چندہ اکٹھا کرنے کیلئے کیمپ لگائے ہیں۔ لہٰذا پارٹی کارکن اور عوام الناس دل کھول کر اپنے پختون بھائیوں اور بہنوں کی ان سخت حالات میں مدد کریں۔ اُنہوں نے کہا کہ رمضان المبارک قریب ہے لہٰذا مرکزی اور صوبائی حکومتیں مسئلے سے چشم پوشی کے بجائے متاثرہ خاندانوں کے ساتھ زیادہ سے زیادہ مالی معاونت کرلیں۔ اُنہوں نے نیشنل یوتھ آرگنائزیشن کے ساتھیوں کو سراہا جنہوں نے چندہ مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینے کیلئے منصوبہ بندی کر رکھی ہے۔
 مورخہ : 25.6.2014 بروز دبدھ
عوامی نیشنل پارٹی کے نو منتخب صدر امیر حیدر خان ہوتی، جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین، ایمل ولی خان، سردار حسین بابک، ہارون بلور اور کابینہ کے دوسرے ارکان نے اے این پی کے مرکزی رہنما حاجی غلام احمد بلور اور عبدالطیف آفریدی سے اُن کی رہائش گاہوں میں ملاقات کی۔ اُن سے ملکی و بین الاقوامی صورتحال پر تفصیلی بحث کی۔ سابق وزیر اعلیٰ نے پارٹی کے دونوں رہنماؤں سے پارٹی کو مزید مضبوط اور دیگر اُمور پر بھی تبادلہ خیال کیا دونوں رہنماؤں نے امیر حیدر خان ہوتی اور ان کی پوری کابینہ کو منتخب ہونے پر مبارکباد دی اور توقع ظاہر کی کہ وہ پارٹی کو فعال بنانے میں اپنا کردار ادا کرینگے۔ بعد میں امیر حیدر خان ہوتی شہید میاں مشتاق کی رہائش گاہ گئے جہاں پر شہید کے بھائیوں کیساتھ کچھ دیر ملاقات کی اور پارٹی کیلئے شہید میاں مشتاق اور ان کے خاندان کی کوششوں کو سراہا اور کہا کہ شہید نے قوم و ملک کی خاطر شہادت نوش کی ہے اور ان کو مرتے دم تک یاد رکھا جائے گا۔
مورخہ : 25.6.2014 بروز دبدھ
عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی عبوری صدر اور مرکزی الیکشن کمیٹی کے چیئرمین سینیٹر حاجی محمد عدیل نے 22 جون کو لاہور میں ہونے والے صوبائی الیکشن کے دوران اے این پی کے سینئر رہنماؤں سے بد تمیزی کرنے ، ان کو گالی دینے اور تھپڑ مارنے اور ہنگامہ آرائی کی پاداش میں اے این پی راولپنڈی سے تعلق رکھنے والے رئیس خٹک اور اسلام آباد سے تعلق رکھنے والے ریاض بنگش کی پارٹی رکنیت معطل کر دی ہے۔حاجی محمد عدیل نے کہا ہے کہ پارٹی کی جو نئی مرکزی ورکنگ کمیٹی بنے گی اس کے سامنے وہ دونوں اپیل کرسکتے ہیں۔
مورخہ:25-6-2014 برو زبدھ
پشاور: ( پ ر )آج عوامی نیشنل پارٹی کے نو منتخب صدر امیر حیدر خان ہوتی کی صدارت میں باچاخان مرکز میں تعارفی اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں تمام منتخب عہدیداروں نے شرکت کی ۔ اجلاس میں پارٹی کو مزید مضبوط بنانے اور صوبائی سطح سے لیکر نیچے سطح تک موثر بنانے پر زور دیا گیا اور توقع ظاہر کی گئی کہ پارٹی سرگرمیاں اور رابطے کو موثر بنانے کیلئے عملی اقدامات اُٹھائیں گے۔ اس موقع پر صوبائی صدر نے کہا کہ وزیرستان آپریشن میں لاکھوں کی تعداد میں پختونوں کی مدد سب کی ذمہ داری ہے اور سب کو دل کھول کر اپنی بہن بھائیوں کی مدد کرنی چاہیے۔ اے این پی اورنیشنل یوتھ آرگنائزیشن مشترکہ کوششیں کریں گے ، کیمپ لگائیں گے اور وزیرستان کے آئی ڈی پیز کیلئے فنڈز اکٹھا کریں گے اور ان کی ہر ممکن مدد کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک قریب ہے لیکن مرکزی اور صوبائی حکومت کی غیر سنجیدگی نے لاکھوں لوگوں کے مشکلات میں اضافہ کردیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ملکی سطح پر اس نازک صورتحال میں مرکزی اور صوبائی حکومت کے اختلافات اور ایک دوسرے کے خلاف کھل کے بیانات دینا ملکی اور صوبے کے مفادات کے خلاف اور خطرناک ہے ۔ اجلاس میں صوبے میں جاری ناروا لوڈ شیڈنگ پر افسوس کا اظہار کیا گیا اور کہا گیاکہ مہنگائی ، بے روزگاری اور بدامنی کے ساتھ لوڈشیڈنگ نے لوگوں کا جینا حرام کردیا گیا ہے اور حکومت ٹس سے مس نہیں ہو رہی ۔ اجلاس میں صوبائی حکومت کے پیش کردہ بجٹ کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ صوبے میں بھتہ خوری اور ٹارگٹ کلنگ کی وجہ سے صوبے کے لوگ ہجرت کرنے پر مجبور ہیں اور موجودہ صوبائی حکومت نے غریب عوام پر ٹیکسوں کی بھرمار کردی ہے ۔ سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ نہ ہونے کے برابر ہے ۔ روزانہ کی بنیاد پر سرکاری ملازمین اپنے مطالبات کیلئے ہڑتالوں پر مجبور ہیں۔
مورخہ : 25.6.2014 بروز بدھ
پختون ایس ایف کے صوبائی چیئرمین امتیاز وزیر ، کیمپس چیئرمین مقرب خان بونیری ، یونیورسٹی کیمپس پشاور کے صدر سنگین شاہ اور جنرل سیکرٹری توحید خان داؤد زئی نے ایک مشترکہ بیان میں اے این پی کے نو منتخب صوبائی صدر امیر خان ہوتی ، صوبائی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حیسن ، ڈپٹی جنرل سیکرٹری ایمل ولی خان ، سینئر نائب صدر سید عاقل شاہ ، نائب صدور ہارون بلور ، عمران خان آفریدی ، محمد ایوب خان اشاڑی ، سیکرٹری اطلاعات سردار حسین بابک ، جائنٹ سیکرٹری شگفتہ ملک ، نائب صدر ستارہ ایاز ، مسرت شفیع ، ایاز وزیر اور کابینہ کے دیگر منتخب عہدیداروں کو کامیابی پر دلی مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ انشاء اللہ وہ دن دور نہیں کہ نو منتخب کابینہ کی قیادت میں اے این پی صوبہ بھر میں مزید مضبوط اور فعال ہوگی جو کہ وقت کا اولین تقاضہ ہے۔ امتیاز وزیر نے کہا کہ اے این پی کے سابقہ حکومت میں امیر حیدر خان ہوتی کا بحیثیت وزیر اعلیٰ اور میاں افتخار حسین کا بطور ترجمان کارکردگی مثال رہی ہے۔ ہم کو اچھی طرح یاد ہے کہ اُن دنوں بلوچستان کے وزیر اعلیٰ ڈگری جعلی ہو یا اصلی ڈگری ڈگری ہوتی ہے کے نام سے مشہور ہوا۔ وزیر اعلیٰ پنجاب گستاخ وزیر اعلیٰ مشہورہوا جبکہ وزیر اعلیٰ سندھ کی بے بسی کے حوالے سے ذوالفقار مرزا کے بیانات سب کے سامنے ہیں لیکن اے این پی کے وزیر اعلیٰ امیر حیدر خان ہوتی کا کردار بے نظیر رہا۔ سابق وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی نے خود اعتراف کر کے امیر حیدر خان ہوتی کو مثالی اور قابل وزیر اعلیٰ کا خطاب دیا۔ جبکہ دوسری طرف دیکھا جائے تو حیدر خان ہوتی کے خلاف روایات کے برعکس اپوزیشن کا اسمبلی کے اندراور باہر کوئی بیان ریکارڈ پر موجود نہیں۔ میاں افتخار حسین مردِ میدان رہا اور مشکل کی ہر گھڑی میں قوم کا حوصلہ بڑھاتے رہے۔ یہی وجہ ہے کہ امیر حیدر خان ہوتی ، میاں افتخار حسین اور ایمل ولی خان کی قیادت میں اے این پی دن دوگنی رات چوگنی ترقی کرے گی۔ ملی قائد اسفند یار ولی خان کی قیادت میں جاری اے این پی اور اے این پی کے ذیلی تنظیموں کے اندر جمہوری عمل کے خوشگوار اور میوہ دار ثمرات سامنے آئیں گے۔ امتیاز وزیر نے کہا کہ پی ایس ایف ملی قائد اسفندیار ولی خان اور ایمل ولی خان کے تمام فیصلوں پر مکمل اعتماد کرتا ہے۔
کارکنان ہرگز مایوس نا ہوں خوف و دہشت کے تاریک سائے جلد ختم ہونے کو ہیں۔جنرل سیکریٹری اے این پی سندھ
کراچی۔پیر 23 جون 2014ء
عوامی نیشنل پارٹی صرف ایک سیاسی جماعت نہیں بلکہ سو سال سے زائد ایک فکری تحریک کا نام ہے دنیا کی کوئی طاقت ہمارے عزم،جوش اور جنون کو ختم نہیں کرسکتی ،پہلے بھی تشدد سے نفرت اور امن پرچار کرتے چلے آئیں ہیں اور آئندہ بھی کرتے رہے ہیں گے کارکن اپنے آپ کو ذہنی اور فکری طور پر تیار رکھیں قومی حقوق کے لیے شہداء کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی ،ڈوبتے سیاسی یتیم اپنے لیے تنکوں کا سہارا تلاش کررہے ہیں قوم سیاسی مداریوں ، سازشی عناصر اور شعبدہ بازوں اور سازشی عناصر سے ہوشیار رہے ،الیکٹرونک میڈیاگزشتہ چند روز سے سیاسی یتیموں کو عوام کی سوچ پر مسلط کرنے کی کوشش کررہا ہے ہم سوال کرتے ہیں کہ کیا ملک و قوم کے کے لیے بے پناہ قربانیاں دینے والی قوتوں کو بھی اتنی طویل کوریج دی جاتی ہے ؟ہم نے ملک و قوم کو دہشت کو دہشت گردی و انتہاء پسندی سے نجات دلانے کے لیے سب سے زیادہ قربانیاں دیں ہیں،ملک و قوم کے لیے سب سے سنگین خطرہ دہشت گردی و انتہاء پسندی ہے خدارا قوم کا دھیان کسی دوسری طرف نا موڑا جائے حکومت خود اپنی سب سے بڑی دشمن بنی ہوئی ہے ان خیالا ت کا اظہار عوامی نیشنل پارٹی سندھ کے قائم مقام صدر حاجی اورنگزیب بونیری نے اپنی نو منتخب کابینہ کے ہمراہ باچا خان مرکز میں پارٹی عہدیداران سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر صوبائی جنرل سیکریٹری یونس خان بونیری نے کہا کہ قوم سے جھوٹے نعروں کے ذریعے ووٹ لیکر آنے والے بے نقاب ہورہے ہیں
قوم کو زیادہ دیر اندھیروں میں نہیں رکھا جاسکتاکارکنان ہرگز مایوس نا ہوں خوف و دہشت کے تاریک سائے جلد ختم ہونے کو ہیں اس موقع پر صوبائی سیکریٹری اطلاعات حمید اللہ خٹک اور کلچرل سیکریٹری نوراللہ اچکزئی،ضلع ویسٹ کے صدر ڈاکٹر ضیاء الدین اور جنرل سیکریٹری مراد خان نے بھی خطاب کیا۔
مورخہ:23-6-2014بروز پیر
پشاور ( پ ر ) پختون ایس ایف اسلامیہ کالج کا رہنمائی داخلہ کیمپ آج 23جون سے لیکر 4جولائی تک جاری رہے گی ۔ کیمپ کی رہنمائی اسلامیہ کالج کے صدر ملک احتشام الحق اور اعجاز خان کر رہے ہیں ۔ کیمپ میں داخلہ کیلئے نئے آنے والے طلباء کی بہترین رہنمائی کی جاتی ہے اور طلباء کو داخلہ پراسس میں تمام مسائل میں مدد کر رہے ہیں۔ آج پختون ایس ایف یونیورسٹی کے جنرل سیکرٹری توحید خان داؤدزئی ، پختون ایس ایف کے صوبائی رہنما سردار فخر عالم ، تاج محمد وزیر اور اے این پی ڈسٹرکٹ پشاور کے ڈپٹی جنرل سیکرٹری عبدالرحیم خان نے کیمپ کا دورہ کیا اور طلباء کی حوصلہ افزائی کی اور طلباء کو یقین دلایا کہ پختون ایس ایف اور اے این پی تمام تعلیمی اداروں میں طلباء کے حقوق اور پُرامن تعلیمی ماحول میں کوئی کسر نہیں چھوڑے گی ۔مورخہ:22-6-2014 برو زاتوار
پشاور: ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی ضلع لوئر کوہستان کا الیکشن زیر نگرانی سابق صوبائی وزیر اوقاف اور آرگنائزنگ کمیٹی کے ممبر حاجی نمروز خان منعقد ہوا۔ جس میں ضلع لوئر کوہستان کابینہ کے عہدیداروں کا انتخاب عمل میں لایا گیا۔ جس میں ہمایون خان صدر ، سینئر نائب صدر محمد علی ، نائب صدور عبدالوہاب ، شیر محمد ، ملک قیوم ، جنرل سیکرٹری کامریڈ محمد حنیف خان مغل ، ڈپٹی جنرل سیکرٹری محمد ریاض ، جائنٹ سیکرٹریز امیر حمزہ ، تالی زر ، شیر محمد پٹن ، سیکرٹری اطلاعات محمد عزیر ، فنانس سیکرٹری شہاب اللہ ، سیکرٹری ثقافت شمس الرحمان شامل ہیں۔مورخہ:22-6-2014 بروز اتوار
پشاور ( پ ر ) شمالی وزیر ستان آپریشن کے متاثرہ افراد کیلئے صوبائی حکومت سنجیدہ نہیں ۔ ان خیالات کا اظہار نیشنل یوتھ آرگنائزیشن کے مرکزی صدر خوشحال خٹک نے مرکزی کابینہ کے اجلاس سے خطاب کے دوران کیا ۔ باچاخان مرکز میں منعقدہ اجلاس میں مرکزی سیکرٹری جنرل فخرالدین خان داؤد زئی ، سینئر نائب صدر سلیمان مندنڑ ، ایڈیشنل سیکرٹری جنرل محسن داؤڑ ، نائب صدر نعمان الحق ، فنانس سیکرٹری نسیم افغان ، مرکزی جائنٹ سیکرٹری نبیلہ رحمن اور دیگر نے شرکت کی۔ اجلاس میں متفقہ طور پر درجہ ذیل قراردادیں منظور کئے گئے ۔ 1 محسن داوڑ کی سربراہی میں آپریشن متاثرین کیلئے امدادی کمیٹی تشکیل دی گئی ۔ 2 آئینی کمیٹی کی تشکیل میں پانچ ارکان کا انتخاب کیا گیا جس میں ایک رکن مرکزی کابینہ اور باقی ارکان تمام صوبوں سے ہوں گے۔ 3 سال میں مرکزی کابینہ کے تین اجلاس منعقد ہوں گے بوقت ضرورت ہنگامی اجلاس طلب کیا جاسکے گا۔ 4 تنظیم مکمل فعال بنانے کیلئے خواتین کی ممبرسازی کو یقینی بنایا جائے گا ۔ مرکزی جائنٹ سیکرٹری نبیلہ بی بی کے تجویز کے مطابق کمیٹی بنائی جائے گی ۔ 5 تنظیم کے مالی اُمور کیلئے صوبائی کابینہ سے مشاورت کی جائے گی اور فنڈکی فراہمی کیلئے طریقہ کار کا تعاؤن کیاجائے گا۔ اجلاس کے احتتام پر این وائی او کے مرکزی کابینہ نے ڈسٹرکٹ سوات کے صدر خلیل اللہ شہید کیلئے دُعائے مغفرت کی اور حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ حکومت سنجیدگی کا مظاہرہ کرکے خلیل اللہ شہید کے قاتلوں کو گرفتار کریں اور کیفر کردار تک پہنچائیں۔مورخہ:21-6-2014 برو زہفتہ
پشاور: ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی ضلع ہنگو کے جنرل کونسل کا ایک خصوصی اجلاس انٹرا پارٹی الیکشن اے این پی کے صوبائی الیکشن کمیشن کی زیر نگرانی منعقد ہوا ۔ اس موقع پر صوبائی آرگنائزنگ ممبر سید عاقل شاہ اور عمران آفریدی موجود تھے۔ اس موقع پر اتفاق رائے سے اے این پی ضلع ہنگو کابینہ کا چناؤ آئندہ چار سال کیلئے عمل میں لایا گیا جس کے مطابق آئندہ چار سال کیلئے صدر’’ یوسف خان ، سینئر نائب صدر نصراللہ خان، نائب صدور عسکر علی ، امتیاز الدین ، واجد گل آفریدی ، نائب صدر زنانہ ہما شہاب ، جنرل سیکرٹری سید ابن علی، ڈپٹی جنرل سیکرٹری ملک عاقل، فنانس سیکرٹری گل شہزاد ، پریس سیکرٹری سید مصطفی حسن ، سیکرٹری ثقافت محمد شفیق ،جائنٹ سیکرٹریز عدیل اصغر ، جوادالحسن ، ملک جلیل زرگر ،جائنٹ سیکرٹری زنانہ دل تاج منتخب ہوئے۔
مورخہ : 20.6.2014 بروز جمعۃ المبارک
عوامی نیشنل پارٹی کے پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک نے کہا کہ وزیرستان میں آپریشن کے نتیجے میں بے دخل خاندانوں کو فوری طورپر ٹرانسپورٹ اور رہائش کا انتظام مرکزی اور صوبائی حکومت کی ذمہ داری ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ قبائلی عوام پہلے ہی دہشتگردی کے واقعات کی وجہ سے اذیت کی زندگی گزار رہے ہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ ہزاروں کی تعداد میں بیدخل خاندان جنوبی اضلاع کے مختلف حصوں میں منتقل ہو گئے ہیں۔ اور تاحال روزانہ ہزاروں کی تعداد میں قبائلی افراد علاقہ چھوڑ رہے ہیں۔ لہٰذا مرکزی اور صوبائی حکومت مل کر ترجیحی بنیادوں پر ان کی ٹرانسپورٹ اور رہائش کا انتظام اور ان کے ساتھ زیادہ سے زیادہ مالی امداد کی جائے ۔ اُنہوں نے کہا کہ مرکزی اور صوبائی حکومت کو فوری طور پر انفارمیشن ڈیسک کھول کر بیدخل خاندانوں کی امداد کو تیز اور مؤثر بنانے کیلئے جنگی بنیادوں پر کام شروع ہونا چاہیے۔ اُنہوں نے کہا کہ حکومتوں کیساتھ ساتھ ان سخت حالات میں ملک کے صاحب استطاعت عوام وزیرستان سے بیدخل خاندانوں کی مالی امداد کیلئے آگے آنا چاہیے۔ اُنہوں نے کہا کہ مرکزی اور صوبائی حکومتوں کو اس وقت تمام تر توجہ متاثرین کی ضروریات اور سہولیات پہنچانے کیلئے مرکوز کرنا چاہیے اور اے این پی کے دور حکومت کی طرح ترقیاتی بجٹ کو ان متاثرین پر خرچ کرنے سے دریغ نہیں کرنا چاہیے۔ اُنہوں نے کہا کہ ملک اور قوم کی سلامتی کی خاطر ملک کے تمام مذہبی اور سیاسی جماعتوں کو دہشتگردی کے خلاف اس جنگ میں اتفاق و اتحاد کا مظاہرہ کرنا چاہیے تاکہ دہشتگردی کا مسئلہ مستقل طور پر ختم ہو جائے۔ اُنہوں نے کہا کہ وزیرستان جنگ کے نتیجے میں جنوبی اضلاع کے عوام کا اپنے قبائلی بہن بھائیوں کی مدد قابل ستائش ہے۔
مورخہ : 20.6.2014 بروزجمعۃ المبارک
پختون سٹوڈنٹس فیڈریشن اسلامیہ کالج یونیورسٹی کا ایک اہم اجلاد زیر صدارت یونیورسٹی صدر محمد اعجاز خان یوسفزئی منعقد ہوا۔ جس میں جنرل سیکرٹری سمیع اللہ اورکزئی کے علاوہ اسلامیہ کالج یونٹ کے صدر ملک احتشام الحق ، جنرل سیکرٹری توحید خان داؤد زئی نے خصوصی طور پر شرکت کی۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے محمد اعجاز خان یوسف زئی نے کہا کہ آئندہ ہفتے بروز پیر 23.6.2014 سے اسلامیہ کالج میں سال اول کے جو داخلے شروع ہونے والے ہیں اس کے سلسلے میں پختون سٹوڈنٹس فیڈریشن نئے آنے والے طلبہ و طالبات کیلئے داخلہ رہنمائی کیمپ لگانے والے ہیں جو کہ داخلہ کے دن یعنی پیر سے شروع ہو گا۔ اُنہوں نے مزید کہا کہ باچا خان بابا کا نظریہ اور سوچ یہی تھی کہ پختون کے بچوں کو اچھی سے اچھی تعلیم فراہم کی جائے اور اس کو دہشتگردی اور اسلحہ سے دور رکھا جائے۔ تو اس سلسلے میں پختون سٹوڈنٹس فیڈریشن اسلامیہ کالج یونیورسٹی باچا خان بابا کی سوچ اور نظریہ کو اچھے انداز میں ہر طالب علم کو پہنچائیں گے اور ہر ڈگر پرتعلیمی اداروں میں طلبہ کے جائز حقوق کی جنگ لڑیں گے اور پختون سٹوڈنٹس فیڈیرشن اپنے ملی قائد جناب اسفندیار ولی خان اور صوبائی ایڈوائزر ایمل ولی خان کی قیادت میں کھڑے ہیں اور ان کی قیادت پر مکمل اور بھرپور اعتماد کا اظہار کرتے ہیں۔
مورخہ : 19.6.2014 بروز جمعرات
عوامی نیشنل پارٹی پختونخوا کی صوبائی کابینہ کا انتخاب ، باچا خان مرکز پشاور سے ایک جاریکردہ بیان کے مطابق مورخہ 24 جون بروزمنگل بوقت 9.00 بجے بمقام ولی باغ چارسدہ میں اے این پی کی مرکزی آرگنائزنگ کمیٹی کی زیر نگرانی کیا جائیگا۔ جس میں تمام مرکزی اور صوبائی قائدین شرکت کرینگے۔ تمام صوبائی کونسلران سے گزارش ہے کہ وہ بروقت اپنی شرکت کو یقینی بنائیں۔
کراچی۔جمعرات 19جون2014ء
عوامی نیشنل پارٹی سندھ کے صدر سینیٹر شاہی سید نے ایک مرتبہ پھر اعتماد کرنے پر تمام پارٹی عہدیداران و کارکنان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ کارکنان نے جس اعتماد کا اظہار کیا ہے وہ میرے لیے باعث افتخار ہے پارٹی رہنماؤں کو اس وقت انتہائی نازک ترین حالات کا سامنا ہے کارکنان وعہدیداران کے اعتماد پر پورا اترنا کسی امتحان سے کم نہیں ہے کارکنان کے بھر پور اعتماد سے مجھ پر اور میرے ساتھیوں کے کندھوں پر بھاری ذمہ داری عائد ہوگئی ہے حضرت باچا خان بابا کا کاروان اپنی منزل کی جانب بڑھتا رہے گامیں تمام وارڈوں اور ضلعی تنظیموں اور خاص طور پر سندھ کونسل کے ارکان کا شکرگزار ہوں جنہوں نے ایک مرتبہ پھر مجھ پر اور میرے ساتھیوں پر بھر پور اعتماد کا اظہار کیا ،قومی تحریک کو انتہائی کٹھن مراحل کا سامنا ہے میں اور میری ٹیم قومی تحریک کے لیے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے خطرات کے باوجو ثابت قدمی سے اسلاف کی تعلیمات کی روشنی میں کارواں کو اپنی منزل کی جانب گامزن کرنے کے لیے تمام مشکلات کا خندہ پیشانی سے سامنا کریں گے ،اے این پی سندھ کے صدر اور پختون ایکشن کمیٹی( لویہ جرگہ) کے چیئر مین سینیٹر شاہی سید نے مذید کہا کہ کراچی سمیت پورے ملک اور دنیا بھر سے مختلف ذرائع سے مبارک باد اور تہنیتی پیغامات بھجنے والوں کا شکر گزار ہوں اور دعا گو ہوں کہ اللہ تعالیٰ مجھے کارکنان اور ہمدردوں کی توقعات پر پورا اترنے اور اکابرین کے اہداف کے حصول کی ہمت و حوصلہ دے۔
مورخہ : 19.6.2014 بروز جمعرات
عوامی نیشنل پارٹی پختونخوا کی صوبائی آرگنائزنگ کمیٹی کا ایک ہنگامی اجلاس باچا خان مرکز پشاور میں بشیر احمد مٹہ کی سربراہی میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں شمالی وزیرستان میں فوجی آپریشن کے نتیجے میں جو اندوہناک انسانی المیہ رونما ہوا ہے اور جس کے نتیجے میں پختون قبائل کے بچے ، بوڑھے ، مائیں ، بہنیں ، بیٹیاں اور بیٹے انتہائی دردناک حالات سے گزر رہے ہیں پر انتہائی افسوس اور تشویش کا اظہار کیا ۔ اُنہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ پاکستان کی حکومتیں اس المیے سے قطعی طور پر لاتعلق نظر آرہے ہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ جس بڑے پیمانے پر وزیرستان میں عرصہ دراز سے فوجی آپریشن کی تیاری ہو رہی تھی ، تو کیا حکومت کے کارندوں کو یہ ادراک نہ تھا کہ اس کے کیا انتہائی مضر اثرات عام اور بے قصور لوگوں پر مرتب ہونگے۔ کیا پاکستان ، جس کا پیسہ بے مقصد شہ خرچیوں کی نظر ہو رہا ہے ، بحیثیت ایک مملکت اپنے لوگوں کے سامنے جوابدہ نہیں؟ اجلاس نے اس بات پر انتہائی افسوس کا اظہار کیا کہ بوڑھے ، عورتیں اور بچے خطرناک گرمی میں بلک بلک کر پیاس سے مر رہے ہیں مگر اُن کی رہائش کا نہ کوئی منظم بندوبست ہے اور نہ اس بارے میں کوئی سوچ رہا ہے۔ مزید برآں جو لوگ کسمپرسی اور بربادی کی حالت میں شمالی وزیرستان سے نکلنے کی کوشش کر رہے ہیں اُن کیلئے ٹرانسپورٹ کا کوئی انتظام نہیں ، حتیٰ کہ لوگوں کو کئی کئی گھنٹے جگہ جگہ ناکوں پر کھڑے ہونے پر مجبور کیا جا رہا ہے جس کی وجہ سے بہت سے بچوں کی اموات واقع ہو رہی ہیں۔ اجلاس نے اس تمام صورتحال پر شدید احتجاج کیا اور اس بات پر خصوصاً زور دیا کہ پختونخوا کی موجودہ حکومت اس معاملے میں صریحاً منافقت سے کام لے رہی ہے اور پختون عوام کی بربادی میں ایک خاموش تماشائی کا کردار ادا کر رہی اور وہ اس سلسلے میں وہ تاریخ کے سامنے جوابدہی سے کسی طرح مستثنیٰ نہیں ہو سکتی۔
مورخہ : 18.6.2014 بروز بدھپشاور (پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی چیف الیکشن کمشنر اور عبوری صدر سینیٹر حاجی محمد عدیل کے مطابق اے این پی صوبہ پنجاب کی کابینہ کا الیکشن 22 جون بروز اتوار بوقت 4.00 بجے بمقام لاہور میں مرکزی الیکشن کمیشن کی نگرانی میں آئندہ چار سال کیلئے منعقد ہوگا۔ سینیٹر حاجی محمد عدیل نے عوامی نیشنل پارٹی پنجاب کے تمام معزز ممبران کونسل کو ہدایت کی ہے کہ مقررہ تاریخ اور وقت پر صوبائی الیکشن میں اپنی شرکت کو یقینی بنائیں۔
مورخہ : 18.6.2014 بروز بدھ
عوامی نیشنل پارٹی پختونخوا کے صوبائی الیکشن کمیشن / صوبائی آرگنائزنگ کمیٹی کی طرف سے جاری شدہ ایک بیان کے مطابق پارٹی کے صوبائی الیکشن کمیشن نے ضلع دیر لوئر میں پارٹی کے ضلعی انتخابات کو فی الوقت ملتوی کر دیا ہے کیونکہ وہاں پارٹی کی رکن سازی کے دوران سنگین بے قاعدگیاں الیکشن کمیشن کے نوٹس میں آئی ہیں۔نیز لوئر دیر میں کی گئی ممبرسازی کو مسترد کیا گیا ہے۔ الیکشن کمیشن / آرگنائزنگ کمیٹی کے مطابق ضلع دیر لوئر میں فی الحال ضلعی آرگنائزنگ کمیٹی موجودہ چیئرمین ظاہر شاہ خان کی سربراہی میں معمول کے کام انجام دیتی رہے گی اور پارٹی کے ضلعی انتخابات کے بارے میں فیصلہ پارٹی کے نئے صوبائی منتخب ادارے اپنے صوابدید اور حالات کے مطابق بعد میں کریں گے۔مورخہ : 18.6.2014 بروز بدھعوامی نیشنل پارٹی پختونخوا کے آرگنائزنگ کمیٹی / الیکشن کمیشن کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ باجوڑ ایجنسی میں چند ناگزیر وجوہات کی بناء پر انتخابات فی الحال ملتوی کر دئیے گئے ہیں۔ باجوڑ ایجنسی میں موجود آرگنائزنگ کمیٹی شاہ نصیر کی سربراہی میں پارٹی کے معمول کے معاملات سنبھالے رہے گی اور پارٹی کے ملتوی شدہ انتخابات پارٹی کی نئی صوبائی قیادت اور اداروں کے انتخابات ، جو چند روز میں منعقد ہونگے ،کے بعد ایک مناسب موقع پر منعقد کیے جائینگے۔
کراچی۔منگل 17جون2014ء
عوامی نیشنل پارٹی سندھ کے صدر سینیٹر شاہی سید نے ماڈل ٹاؤن لاہور میں تحریک منہاج القرآن سیکریٹریٹ کے گرد رکاوٹیں ہٹانے کے نام پر خونی آپریشن کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے ماڈل ٹاؤن میں جو کچھ بھی ہوا وہ انتہائی المناک اور افسوس ناک ہے جمہوری دور میں طاقت کا اندھا دھند استعمال انتہائی شرم ناک ہے بڑی تعداد میں قیمتی جانی نقصان کی مکمل تحقیقات کی جائیں اور ماضی کی طرح دیگر واقعات کی طرح اس انتہائی سنگین واقع کو کمیٹیوں اور مصلحتوں کی بھینٹ چڑھانے کے بجائے ذمہ داران کو عبرتناک سزا دی جائے ،باچا خان مرکز سے جاری کردہ بیان اے این پی سندھ کے صدر اور پختون ایکشن کمیٹی (لویہ جرگہ) کے چیئر مین سینیٹر شاہی سید نے مذید کہا کہ جمہوری طرزعمل سے قطعی عاری حکمران ہوش کے ناخن لیں اور اپنے ماضی سے سبق سیکھیں ہم حکومت پنجاب سے اپیل کرتے ہیں کہ واقعے میں زخمی ہونے والوں کے لیے بھر پور اقدامات کیے جائیں اور ہلاک و زخمی ہونے والے پولیس اہلکاروں اور منہاج القرآن کے کارکنان کے لیے معاوضے کا بھی اعلان کیا جائے ۔
مورخہ : 17.6.2014 بروز منگل
عوامی نیشنل پارٹی پختونخوا کے ترجمان صدرالدین مروت ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ حکومت شمالی وزیرستان کے عوام کی مشکلات کو سہل اور آسان بنانے کیلئے مثبت اور فوری اقدامات کرے۔ اُنہوں نے کہا کہ وزیرستان میں سرچ آپریشن کی وجہ سے ہزاروں افراد پھنسے ہوئے ہیں جن میں بوڑھے ، بچے اور خواتین شامل ہیں اور وہ بے سروسامانی کے عالم میں پریشان کن حالات سے دوچار ہیں۔ اُنہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ ان مصیبت زدہ اور متاثرہ افراد کو محفوظ اور باعزت طریقہ سے وہاں سے نکالنے کیلئے ہنگامی بنیادوں پر ٹرانسپورٹ کا فوری بندوبست کیا جائے۔ اُنہوں نے کہا کہ شمالی وزیرستان سے قریبی محفوظ مقامات کو ہجرت کرنے والے افراد کیساتھ سیکیورٹی اہلکار مکمل تعاون کریں اور ان کو چیک پوسٹوں پر بے جا اور غیرضروری طور پر تنگ نہ کیا جائے۔
اے این پی کے ترجمان نے حکومت پر زور دیا ہے کہ وزیرستان کے متاثرین کیلئے فوری طورپر حفظان صحت کیلئے عملی اقدامات اُٹھائے جائیں اور اُن کو طبی سہولیات ، پینے کیلئے صاف پانی ، خوردنی اجناس ، بجلی اور دیگر ضروریات کی بنیادی چیزیں بروقت فراہم کی جائیں۔
کراچی۔پیر 15جون2014ء
عوامی نیشنل پارٹی سندھ کے صدر سینیٹر شاہی سید ،جنرل سیکریٹری یونس خان بونیری اور سیکریٹری اطلاعات حمید اللہ خٹک نے خوشحال خان خٹک کو نیشنل یوتھ آرگنائزیشن کا مرکزی صدر اور فخرالدین کو جنرل سیکریٹری اور تمام نو منتخب کابینہ کو مبارک باد پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ یوتھ پارٹی کا اہم جز ہے جدید تقاضوں کے تحت اسلاف کے افکار کو اجاگر کرنا اور قومی تشخص کو جدید انداز میں اجاگر کرنا وقت کی اہم ترین اہم ترین ضرورت ہے ہم امید کرتے ہیں کہ این وائی او کی منتخب کابینہ پارٹی قائدین کی امیدوں پر بر پور طریقے سے پورا اترے گی۔
کراچی۔ہفتہ 14 جون 2014ء
عوامی نیشنل پارٹی سندھ کونسل کا اجلاس مردان ہاؤس میں منعقد ہوا اجلاس میں آئندہ چار سالوں کے لیے صوبائی کابینہ کا انتخاب کیا گیا،صوبائی کابینہ کا اعلان مرکزی آرگنائزنگ کمیٹی کے جنرل سیکریٹری سینیٹر باز محمد خان نے کیا، چیئر مین سینیٹر باز محمد خان ،ممبران سینیٹر داؤد خان اچکزئی اور فاروق بنگش کی زیر نگرانی ہوا سینیٹر شاہی سید کوصوبائی صدر اور یونس خان بونیری جنرل سیکریٹری منتخب ہوئے کارکنان نے متفقہ طور پرسینیٹر شاہی سیدکو صدر یونس بونیری کے جنرل سیکریٹری منتخب ہونے کی تائید اپنی نشستوں سے کھڑے ہوکر کی، شاہد علی خان سینئر نائب صدر اور الطاف خان ڈپٹی جنرل سیکریٹری اور حمید اللہ خٹک سیکریٹری اطلاعات،نور اللہ اچکزئی کلچرل سیکریٹری ،صفدر خان طوطا سیکریٹری مالیات،سیف الرحمٰن کنڈی لیبر سیکریٹری منتخب ہوئے ،اورنگ بونیری،سلیم جدون،سائیں علاؤ الدین آغا،عبدالقیوم موسیٰ خیل اور ثواب زرین نائب صدور اور فرمان علی ،ثمر دین خٹک ،اسحٰق سواتی ،عامر شہزاداور اسمٰعیل مندوخیل جوائنٹ سیکریٹریز منتخب ہوئے و دیگر منتخب ہوئے ،صوبائی کابینہ کے ساتھ ہی کونسل اراکین نے بھر پورنعرے بازی کی، صوبائی کابینہ کا انتخابی عمل مرکزی آرگنائزنگ کمیٹی کے،اس موقع پر سینیٹر شاہی سید نے میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کونسل کا اجلاس کا آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا،کونسل اجلاس کی نظامت کے فرائض صوبائی آرگنائزنگ کمیٹی کے ممبر وکیل خان سواتی نے انجام دیے اس موقع پر اے این پی مرکزی آرگنائزنگ کمیٹی کے جنرل سیکریٹری سینیٹر باز محمد خان نے نو منتخب صوبائی کابینہ کو مبارک دیتے ہوئے کہا کہ اس سے قطع نظر کے گزشتہ عام انتخابات میں ہمیں بزور طاقت پارلیمنٹ سے باہر رکھا گیا اس کے باوجود ہم نے انتخابی نتائج تسلیم کرتے ہوئے اور اپنی تنظیمی کمزوریوں کو دور کرنے کے لیے گزشتہ سال 31 اگست کو مرکزی قائد اسفند یار ولی خان نے ملک بھر کی تمام تنظیم کو تحلیل کردیا گیا پانچوں صوبائی وحدتوں میں سب سے پہلے تنظیمی سازی مکمل کرنے پر سندھ کی تنظیم کو مبارک باد پیش کرتا ہوں انقلابی شاعر بخت شیر انقلابی نے اپنا کلام پیش کیا آخر میں سینیٹر شاہی سید نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مجھ پر اعتماد کرنے اور صوبائی کابینہ کو افہام و تفہیم سے منتخب کرنے پر تما م کونسل ارکان کا شکریہ اداکرتا ہوں کراچی میں ہمیں جن بد ترین حالات کا سامنا ہے وہ کسی سے ڈھکا چھپا نہیں ہے
اس کے باوجود بڑی تعداد میں خود کو عہدوں کے لیے پیش کرنے پر تمام ساتھیوں کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں اس سے یہ ثابت ہوا کہ بد ترین جبر بھی باچا خان بابا کی سوچ و فکر کو شکست نہیں دے سکتالاشیں اٹھائیں گے شہادتیں پائیں گے مگر عدم تشدد کے فلسفے پر عمل پیرا رہیں گے انگریز سامراج کو عدم تشدد سے شکست دی انسانیت کے دشمنوں کو بھی شکست پاش دیں گے بجٹ کا ریٹ نہیں نیٹ ورک بڑھایا جائے موجودہ بجٹ سے تنخواہ دار اور غریب طبقہ سے سے زیادہ متاثر ہوگادہشت گردی ،کرپشن اور سیاست زدہ قومی اداروں کی صورت میں ملک کو تین بدترین عفریتوں کا سامنا ہے جب تک قومی اداروں کو سیاست سے پاک نہیں کیا جاسکتا اس وقت تک کوئی بھی بجٹ کے اہداف حاصل نہیں کیا جاسکتاسیاسی بھرتیوں کو ختم کرنا ہوگاملک کے اسی فیصد بجٹ کو دہشت گردی کھا جاتی ہے دہشت گردی کو ختم کرنے کے لیے علماء حق اور دانشور اٹھیں اس میں پارلیمنٹ اور عدلیہ اور میڈیا کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا ملک کی موجودہ صورت سے نکلنے کے لیے ہمیں وزیر اعظم اور وزراء کے بجائے لیڈر کی ضرورت ہے لیڈر میں بردباری اور برداشت کی ضرورت ہے مگر افسوس کہ ملک کی موجودہ قیادت اس قطعی عاری ہے مجھے ایسا محسوس ہوتا کہ موجودہ حکمرانوں کی نصیب میں پانچ سال مکمل کرنا نہیں ہے حکمرانوں کی گردنوں میں سریے کو نکالنا ہوگاہمیں اپنے اداروں کی کی عزت کرنا ہوگی ہمیں آزاد میڈیا چاہیے بے لگام نہیں بھر پور انتخابی اصلاحات لانا ہوگی مگر اس کے لیے جلسے ،جلوسوں ،دھرنوں اور مارچ کے بجائے پارلیمنٹ کا راستہ اختیار کرنا ہوگا ۔
مورخہ:15-6-2014 بروز اتوار
پشاور: ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی خیبر ایجنسی کے جنرل کونسل کا ایک خصوصی اجلاس انٹرا پارٹی الیکشن کے سلسلے میں باچاخان مرکز پشاور میں اے این پی کے
صوبائی الیکشن کمیشن کی زیر نگرانی منعقد ہوا ۔ اس موقع پر صوبائی الیکشن کمیشن کے چیئرمین بشیر احمد مٹہ ، الیکشن کمیشن کے سیکرٹری جمیلہ گیلانی، عمران آفریدی اور صوبائی ترجمان صدرالدین مروت ایڈووکیٹ موجود تھے ۔ اس موقع پر اتفاق رائے سے اے این پی خیبر ایجنسی کابینہ کا چناؤ آئندہ چار سال کیلئے عمل میں لایا گیا جس کے مطابق آئندہ چار سال کیلئے صدر’’ شاہ حسین شینواری ، سینئر نائب صدر منظورآفریدی ، نائب صدور حکمت علی شینواری، نورشاہ آفریدی ، فرمان اللہ ، نائب صدر زنانہ ناہید الرحمن آفریدی ، جنرل سیکرٹری عبدالواحد آفریدی ، ڈپٹی جنرل سیکرٹری سیدا جان آفریدی ، فنانس سیکرٹری نیاز الدین شینواری ، پریس سیکرٹری جاوید خان ، سیکرٹری ثقافت گل سید خان ، جائنٹ سیکرٹریز ہارون آفریدی ، خان سید آفریدی ، ہارو ن خان ز خہ خیل آفریدی ،جائنٹ سیکرٹری زنانہ عشرت آفریدی ، سالار مینئی اکاخیل منتخب ہوئے۔ اجلاس میں خیبر ایجنسی کے تحصیل جمرود کے سابق صدر عبدالرازق آفریدی کے قتل کی شدید مذمت کی اور مرحوم کے ایصال ثواب کیلئے فاتحہ خوانی کی۔
مورخہ:14-6-2014 بروز ہفتہ
پشاور : نیشنل یوتھ آرگنائزیشن کے سینکڑوں کارکنوں نے صوبائی صدر سنگین خان ایڈووکیٹ کے زیر قیادت ضلعی صدر سوات خلیل اللہ اور عوامی نیشنل پارٹی کے ساتھیوں کے بہیمانہ قتل کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا ۔ مظاہرے میں عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی عبوری صدر بشیر احمد مٹہ ، صوبائی آرگنائزنگ سیکرٹری جمیلہ گیلانی ،اے این پی کے پارلیمانی لیڈر سردارحسین بابک ، ایم پی اے جعفرشاہ ، صدرالدین مروت اور دیگر نے شرکت کی۔ مظاہرین نے پشاور پریس کلب کے سامنے مین روڈ کو بلاک کئے رکھا اور اپنا احتجاج ریکارڈ کیا ۔ مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی صدر اے این پی بشیر احمد مٹہ اور سردارحسین بابک نے کہا کہ مرکزی اور صوبائی حکومت پختونوں کے قتل عام میں برابر کی شریک ہے اور ایک سازش کے تحت پختون سرزمین کو غیر مستحکم رکھنا چاہتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اے این پی شعوری طور پر سمجھتی ہے کہ ملک سے اور باالخصوص پختون سرزمین سے دہشت گردی اور انتہاپسندی کا خاتمہ ہو، تاکہ امن کا قیام اور عوام کو خوشحال اور پرامن زندگی نصیب ہو اوراے این پی اسی ایجنڈے کو لیکر بیش بہا قربانیاں دیتی آرہی ہیں ۔ انہوں نے مرکزی اور صوبائی حکومت کو خبردار کیا کہ ہمارے خون کو ارزاں نہ سمجھا جائے ۔ آج ہم اس ٹوکن پروٹسٹ کے ذریعے حکومت پر واضح کرنا چاہتے ہیں کہ جلد از جلد صورتحال کا صد باب کریں بصورت دیگر ہم لاکھوں لوگوں کو سڑکوں پر لے آنے کیلئے مجبور ہونگے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان پورے ملک میں الیکشن میں دھاندلی کا واویلا مچارکر پختونوں کے قتل عام سے توجہ ہٹانے کی کوشش رہا ہے اور اس کی حکومت صوبے میں قتل عام دہشت گردی اور بھتہ خوری کا تماشہ کر رہی ہے جو نہایت ہی قابل شرم ہے اور اسی کردار کی وجہ سے پی ٹی آئی کی حکومت اپنا حق حاکمیت کھو چکی ہے ۔ نیشنل یوتھ آرگنائزیشن کے صوبائی صدر سنگین خان ایڈووکیٹ نے خلیل اللہ اور دیگر ساتھیوں کے قتل کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ملک کے کچھ مقتدر حلقے صوبائی اور مرکزی حکومت کی پشت پناہی سے پختونخوا اور فاٹا میں تمام سیکولر ، ترقی پسند اور نیشنلسٹ قوتوں کا خاتمہ کرنا چاہتی ہے لیکن ہم ان پر واضح کرتے ہیں کہ جب تک باچاخان باباؒ کے سپاہی او دھرتی کے بیٹے زندہ ہیں انکا یہ خواب شرمندہ تعبیر نہیں ہوگا ۔ ہم ان تمام قوتوں پر واضح کرتے ہیں کہ ملک کے آئین کے تحت اپنی ذمہ داریاں ادا کریں اور پختونخوا کے کروڑوں لوگوں کی زندگیوں کو اپنے ناقابل سمجھ منصوبوں کیلئے داؤ پر نہ لگائے ۔ ہم نے پہلے بھی قربانیاں دی ہیں اور اب بھی اپنے عوام اور سرزمین کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے ۔ مظاہرین سے گلزار خان ، فخرالدین داؤدزئی ، محسن داؤڑ ، عادل ماشوال اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔
مورخہ : 14.6.2014 بروز ہفتہ
پختون ایس ایف یونیورسٹی کیمپس کے انتخابات مکمل ’’ سنگین شاہ صدر ‘‘ اور ’’ توحید داؤد زئی ‘‘ جنرل سیکرٹری منتخبپختون سٹوڈنٹس فیڈریشن یونیورسٹی کیمپس کے انتخابات آج باچا خان مرکز پشاور میں ہوئے انتخابات کی نگرانی پی ایس ایف کے صوبائی چیئرمین امتیاز وزیر اور یونیورسٹی کیمپس کے چیئرمین مقرب خان بونیری نے کی۔ انتخابات میں یونیورسٹی کیمپس کے یونٹوں کے صدور اور جنرل سیکرٹری نے اپنا حق رائے استعمال کیا۔ جس میں سنگین شاہ بلا مقابلہ صدر منتخب ہوئے جبکہ جنرل سیکرٹری کیلئے توحید داؤد زئی اور سجاد بگٹی کے درمیان مقابلہ ہوا جس میں توحید داؤد زئی نے 18 ووٹ حاصل کر کے جنرل سیکرٹری منتخب ہوئے جبکہ سجاد بگٹی نے 16 ووٹ حاصل کر کے دوسرے نمبر پر رہے۔ ٹوٹل 40 ووٹوں میں سے 34 ووٹ پول ہوئے۔ نتائج کے اختتام پر پی ایس ایف کے صوبائی چیئرمین امتیاز وزیر اور یونیورسٹی کیمپس کے چیئرمین مقرب خان بونیری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پی ایس ایف ایک جمہوری تنظیم ہے اور اس کے سارے انتخابات خفیہ رائے شماری کے ذریعے ہوئے ہیں ۔ اُنہوں نے منتخب کابینہ کو مبارکباد دی اور کیمپس کے تمام آرگنائزروں کا شفاف انتخابات کے انعقاد پر شکریہ ادا کیا۔
مورخہ : 13.6.2014 بروز جمعۃ المبارک
عوامی نیشنل پارٹی کے قائد اسفند یار ولی خان ، مرکزی عبوری صدر سینیٹر حاجی محمد عدیل ، صوبائی عبوری صدر بشیر احمد مٹہ ، سابق وزیر اعلیٰ پختونخوا امیر حیدر خان ہوتی اور صوبائی آرگنائزنگ سیکرٹری محترمہ جمیلہ گیلانی نے نیشنل یوتھ آرگنائزیشن کے نو منتخب مرکزی صدر خوشحال خان خٹک ، جنرل سیکرٹر ی فخرالدین اور دیگر مرکزی کابینہ کو مبارکباد دی ہے اور اس اُمید کا اظہار کیا ہے کہ وہ پارٹی کی اُمیدوں پر پورا اُتریں گے۔باچا خان مرکز پشاور سے اُنہوں نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ یوتھ پارٹی کا اہم جزو ہے اور وہ پارٹی کے شانہ بشانہ رہتے ہوئے اپنی تمام تر صلاحیتوں اور توانائیوں کو بروئے کار لاکر نئی نسل کی فلاح و بہبود کیلئے اہم اور کلیدی کردار ادا کریگی۔مورخہ : 13.6.2014 بروز جمعۃ المبارکعوامی نیشنل پارٹی کے پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ ایک منظم سازش کے تحت پختونوں کی نسل کشی جاری ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ روزانہ کی بنیاد پر پختونوں کے بزرگوں اور نوجوانوں کو دن دھاڑے قتل کیا جا رہا ہے۔ صوبے اور ملک میں حکومت نام کی کوئی چیز نظر نہیں آ رہی۔ اُنہوں نے کہا کہ قبائلی علاقوں سے لیکر ملک کے کونے کونے تک پختونوں کی ترقی پسند قوم اور وطن سے محبت رکھنے والوں کو قتل کیا جا رہا ہے جو کہ نہ صرف افسوسناک بلکہ ایک تاریخی ظلم اور بربریت ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ پختونوں کو تمام تر اختلافات پس پشت ڈال کر قومی دُشمن کیخلاف متحد ہونا چاہیے۔ اُنہوں نے کہا کہ مرکزی اور صوبائی حکومت کے بے حسی نے عوام کو دہشتگردوں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ پختون سیاسی رہنماؤں کیساتھ پختون دانشوروں ، پختون علماء کرام اور سول سوسائٹی کو آگے بڑھ کر پختونوں کے خلاف اس منظم سازش کا نہ صرف مقابلہ کرنا چاہیے بلکہ ان پختون دُشمن عناصر کو قوم کے سامنے بے نقاب کرنا چاہیے۔ اُنہوں نے کہا کہ پختونوں کو مرکزی اور صوبائی حکومت پر نہ کوئی اعتماد ہے اور نہ ان لوگوں سے حفاظت کی توقع رکھنی چاہیے۔ اُنہوں نے کہا کہ مرکزی اور صوبائی حکومت ایک دوسرے پر الزامات لگانے سے فارغ نہیں جبکہ ملک میں پختون ، تعلیمی ، معاشی اور ذہنی طور پر تباہ ہو رہے ہیں۔ اُنہوں نے کہا دُنیا کے تمام ممالک میں مقیم پختون ، پاکستان میں بسنے والوں تباہ حال پختونوں کیساتھ جتنا ہو سکے تعاون اور امداد کا سلسلہ جاری رکھیں تاکہ دہشتگردی سے تباہ حال پختون گھرانوں کے پسماندگان اور اُن کے بچوں کی کفالت میں آسانی پیدا ہوں۔
مورخہ : 13.6.2014 بروز جمعۃ المبارک
عوامی نیشنل پارٹی پختونخوا کے عبوری صدر بشیر احمد مٹہ ، آرگنائزنگ سیکرٹری محترمہ جمیلہ گیلانی ، صوبائی ترجمان صدرالدین مروت ، عبدالطیف آفریدی اور عمران خان آفریدی نے خیبر ایجنسی کی تحصیل جمرود کے سابق صدر عبدالرزاق کی شہادت پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔ ایک مشترکہ تعزیتی بیان میں عوامی نیشنل پارٹی کے رہنماؤں نے عبدالرزاق آفریدی کے قتل کی شدید مذمت کی ہے اور پسماندگان سے دلی ہمدردی کا اظہار کیا ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ اس قسم کے اوچھے ہتھکنڈے ہمیں اپنی منزل کی جانب سفر سے نہیں روک سکتے۔ عوامی نیشنل پارٹی کی تاریخ قربانیوں سے بھری پڑی ہے مگر تاریخ شاہد ہے کہ پارٹی قیادت اور کارکنوں نے کبھی بھی کسی فسطائی قوت کے سامنے سر نہیں جھکایا۔ اُنہوں نے کہا کہ عبدالرزاق آفریدی کی شہادت سے پارٹی ایک نڈر اور زیرک رہنما سے محروم ہو گئی ہے۔ اُن کی کمی برسوں محسوس کیجائیگی اُنہوں نے شہید کے بلندی درجات اور پسماندگان کیلئے صبر جمیل کی دُعا بھی کی۔مورخہ : 13.6.2014 بروز جمعۃ المبارک
عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی عبوری صدر سینیٹر حاجی محمد عدیل نے ممتاز قوم پرست رہنما نواب خیر بخش مری کی وفات پر گہرے رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ مرحوم ایک عظیم سیاستدان اور ملک و قوم کا ایک قیمتی سرمایہ تھے۔ اُنہوں نے بلوچستان کے حقوق کیلئے طویل جدوجہد کی اور اس جدوجہد کے نتیجے میں قیدو بند کی صعوبتیں برداشت کیں اور افغانستان میں جلاوطنی کی زندگی گزاری۔ اُنہوں نے کہا کہ اُن کا ملکی سیاست پر بڑا اثر تھا۔ اُنہوں نے ملک کیلئے بڑی سیاسی خدمات سر انجام دیں اور قوم کی خاطر ناقابل فراموش قربانیاں دیں۔ اُن کی وفات سے ملکی سیاست میں جو خلا پیدا ہو ا ہے وہ صدیوں تک پر نہیں ہو سکے گا۔ آخر میں سینیٹر حاجی محمد عدیل نے مرحوم قوم پرست رہنما کے خاندان اور لواحقین کیلئے صبر جمیل کی دُعا کی ہے اور اللہ تعالیٰ سے دُعا کی کہ مرحوم کو اپنی جوارِ رحمت میں جگہ عطا فرمائے۔ مورخہ : 13.6.2014 بروز جمعۃ المبارک عوامی نیشنل پارٹی لوئر دیر کا ایک نمائندہ جرگہ سینیٹر زاہد خان اور حسین شاہ خان کی سربراہی میں اپنے مسائل کے سلسلے میں صوبائی آرگنائزنگ کمیٹی کے پاس باچا خان مرکز پشاور آئے۔ جرگے نے موجودہ امن عامہ کی صورتحال پر افسوس اور تشویش کا اظہار کیا اور مطالبہ کیا کہ ہماری جان و مال کا تحفظ کو یقینی بنایا جائے۔ اس موقع پر اے این پی کے صوبائی عبوری صدر بشیر احمد مٹہ ، محترمہ جمیلہ گیلانی ، صدر الدین مروت ایڈووکیٹ ، تاج الدین خان بھی موجود تھے۔ جرگے سے اے این پی پختونخوا کے عبوری صدر بشیر احمد مٹہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پی ٹی آئی نے الیکشن سے پہلے جو بلند و بانگ دعوے کیے تھے کہ ہم ملک میں امن لائیں گے اور لوگوں کی جان و مال کا تحفظ کرینگے اُن کے سب دعوے بری طرح ناکام ہو چکے ہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ ریاست کی یہ ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ لوگوں کی جان و مال اُن کی عزت آبرو کا خیال رکھیں لیکن موجودہ حکومت دھرنوں کی سیاست سے ابھی تک باہر نہیں آئی ہے۔ بلکہ وہ اپنے دھرنوں کی سیاست میں مصروف ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت ہمارے گریبانوں سے ہاتھ نکالیں اورہمارے کارکنوں کو انتقام کا نشانہ نہ بنائیں۔ اُنہوں نے کہا کہ صوبے میں حکومت نام کی کوئی چیز نہیں ہے۔ ٹارگٹ کلنگ ، قتل و غارت ، دہشتگردی صوبے میں روزمرہ کا معمول بن چکا ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ وہ آپس میں اتحاد ، بھائی چارے اور یکجہتی کا مظاہرہ کریں اور انشاء اللہ وہ دن دور نہیں ہے کہ ایک بار پھر صوبے میں امن قائم ہو گا اور سازشی عناصر کے ناپاک عزائم خاک میں مل جائینگے۔ جرگہ سے سینٹر زاہد خان اور حسین شاہ خان یوسفزئی نے بھی خطاب کیا۔ مورخہ : 14.6.2014 بروز ہفتہ پشاور : (پ ر) پختون سٹوڈنٹس فیڈریشن اسلامیہ کالج پشاور کے صدر ملک احتشام الحق نے پختون سٹوڈنٹس فیڈریشن یونیورسٹی کیمپس پشاور کے نو منتخب صدر سنگین خان اور جنرل سیکرٹری توحید خان داؤد زئی کو مبارکباد پیش کی ہے۔ اُنہوں نے اُمید ظاہر کی کہ نو منتخب صدر اور جنرل سیکرٹری اپنی تمام تر صلاحیتوں اور توانائیوں کو بروئے کار لاکر پختون ایس ایف کو مزید فعال بنانے میں اہم کردار ادا کرینگے۔ اُنہوں نے کہا کہ پختون ایس ایف اسفندیار ولی خان اور پی ایس ایف کے ایڈوائزر ایمل ولی خان کی قیادت میں ہر اول دستے کا کردار ادا رہی ہے۔ اور پختون طلبہ کے حقوق کے حصول کیلئے اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے۔ مورخہ : 13.6.2014 بروزجمعۃ المبارک
اے این پی کے سابق وزیر حج اینڈ اوقاف حاجی نمروز خان نے اپنے حلقے PK-58 ضلع تورغر میں دوبارہ الیکشن کرانے کیلئے الیکشن ٹریبونل میں زرین گل ایم پی اے کے خلاف الیکشن پٹیشن دائر کی تھی۔ الیکشن ٹریبونل نے حاجی نمروز خان کی الیکشن پٹیشن کو منظور کرتے ہوئے زرین گل کی اسمبلی رکنیت معطل کرنے اور حلقہ میں دوبارہ الیکشن کرانے کے احکامات جاری کر دیئے۔
مورخہ : 12.6.2014 بروز جمعرات
عوامی نیشنل پارٹی کے قائد اسفندیار ولی خان نے ممتاز قوم پرست رہنما اور مری قبیلے کے سربراہ نواب خیر بخش مری کی وفات پر گہرے رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ مرحوم ایک عظیم سیاستدان اور ملک و قوم کا ایک قیمتی سرمایہ تھے۔ وہ رہبر تحریک خان عبدالولی خان بابا کے قریبی اور دیرینہ ساتھیوں میں شمار تھے۔ اُنہوں نے بلوچستان کے حقوق کیلئے طویل جدوجہد کی اور اس جدوجہد کے نتیجے میں قیدو بند کی صعوبتیں برداشت کیں اور افغانستان میں جلاوطنی کی زندگی گزاری۔ اُنہوں نے کہا کہ وہ ایک زیرک ، فہم و فراست رکھنے والے اعلیٰ پایہ کے سیاسی لیڈر تھے اور اُن کا ملکی سیاست پر بڑا اثر تھا۔ اُنہوں نے ملک کیلئے بڑی سیاسی خدمات سر انجام دیں اور قوم کی خاطر ناقابل فراموش قربانیاں دیں۔ اُن کی وفات سے ملکی سیاست میں جو خلا پیدا ہو ا ہے وہ صدیوں تک پر نہیں ہو سکے گا۔ عوامی نیشنل پارٹی کے قائد نے مرحوم قوم پرست رہنما کے خاندان اور لواحقین کیلئے صبر جمیل کی دُعا کی ہے اور اللہ تعالیٰ سے دُعا کی کہ مرحوم کو اپنی جوارِ رحمت میں جگہ عطا فرمائے۔
مورخہ : 12.6.2014 بروز جمعرات عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی عبوری صدر اور چیف الیکشن کمشنر سینیٹر حاجی محمد عدیل نے آئندہ چار سال کیلئے ملک کے پانچوں وحدتوں ، سندھ ، بلوچستان ، پنجاب ، پختونخوا اور سرائیکی میں انٹرا پارٹی الیکشن کیلئے شیڈول کا اعلان کر دیا ہے۔ عوامی نیشنل پارٹی کے چیف الیکشن کمیشنز کے مطابق 15 جون کو سندھ کے انتخابات کراچی میں ، 20 جون کو بلوچستان کے انتخابات کوئٹہ میں ، 22 جون کو پنجاب کے انتخابات لاہور میں ، 24 جون کو خیبر پختونخوا کے انتخابات پشاور میں اور 26 جون کو سرائیکی کے انتخابات ملتان میں مرکزی الیکشن کمیشن / مرکزی آرگنائزنگ کمیٹی کی نگرانی میں سینیٹر حاجی محمد عدیل کے زیر صدارت منعقد ہونگے۔
مورخہ : 12.6.2014 بروز جمعرات
اسلام آباد میں جمہوریہ افغانستان کے سفیر جانان موسیٰ نے عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی عبوری صدر سینیٹر حاجی محمد عدیل سے سوات میں اے این پی کی ذیلی تنظیم نیشنل یوتھ آرگنائزیشن کے ضلعی صدر خلیل اللہ کے ٹارگٹ کلنگ میں جاں بحق ہونے پر شدید صدمے ، ہمدردی اور تعزیت کا اظہار کیا۔ اُنہوں نے کہا کہ جمہوریہ افغانستان حکومت اور اپنی طرف سے اس دلخراش واقعے پر اے این پی سے مکمل یکجہتی کا اظہار کرتے ہیں اور ہم آپ سے غم و اندوہ کی اس گھڑی میں برابر کے شریک ہیں اور اللہ تعالیٰ سے دُعا کرتے ہیں کہ خلیل اللہ شہید کے مغموم خاندان اور لواحقین کو صبر جمیل عطا کرے اور شہید کے درجات بلند کرے۔ آخر میں سینیٹر حاجی محمد عدیل نے جمہوریہ افغان حکومت اور اُن کے سفیر جانان موسیٰ کا شکریہ ادا کیا۔
مورخہ:10-6-2014 برو ز منگل
پشاور: ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی ضلع پشاور کے جنرل کونسل کا ایک خصوصی اجلاس انٹرا پارٹی الیکشن کے سلسلے میں باچاخان مرکز پشاور میں اے این پی کے صوبائی الیکشن کمیشن کی زیر نگرانی منعقد ہوا ۔ اس موقع پر صوبائی الیکشن کمیشن کے چیئرمین بشیر احمد مٹہ ، الیکشن کمیشن کے سیکرٹری جمیلہ گیلانی ، ممبران صدرالدین مروت ایڈووکیٹ ، سید عاقل شاہ ، ایمل ولی خان اور سید جعفرشاہ کے علاوہ عمران خان آفریدی ، تاج الدین خان اور یاسمین ضیاء بھی موجود تھے ۔
اس موقع پر اتفاق رائے سے اے این پی ضلع پشاور کے صوبائی کابینہ کا چناؤ آئندہ چار سال کیلئے عمل میں لایا گیا جس کے مطابق آئندہ چار سال کیلئے صدر ملک نسیم خان آف لڑمہ ، سینئر نائب صدر کامران صدیق ، نائب صدوراکمل خان ، سردار زیب ، نائب صدر زنانہ شبانہ سےٖف اللہ ، جنرل سیکرٹری گلزار حسین خان ، ڈپٹی جنرل سیکرٹری عبدالرحیم بارکزئی ، جائنٹ سیکرٹریز ملک ارشد خان ایڈووکیٹ ، دلاور خان ، عزیز غفار ، جائنٹ سیکرٹری زنانہ گوہر جانہ ، سیکرٹری اطلاعات زاہد حسین ، سیکرٹری مالیات علی حیدر خان اور سیکرٹری ثقافت نجیم ظہیر منتخب ہوئے ۔ ضلعی جنرل کونسل کے اجلاس سے اے این پی کے صوبائی عبوری صدراور صوبائی الیکشن کمیشن کے چےئرمین بشیر احمد مٹہ ، آرگنائزنگ سیکرٹری جمیلہ گیلانی اور ممبر آرگنائزنگ کمیٹی ایمل ولی خان نے نو منتخب کابینہ کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ آپ پر بڑی ذمہ داریاں عائد ہوتی ہیں ۔ آپ پارٹی کے آئین، منشور اور باچاخان باباؒ اور رہبر تحریک خان عبدالولی خان باباؒ کا پیغام گھر گھر اور گلی گلی تک پہنچائیں ۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی کی فعالیت اور ترقی کیلئے اپنی تمام تر صلاحیتوں اور توانائیوں کو بروئے کار لاکر اہم اور کلیدی کردا ادا کیا جائے۔ ضلعی جنرل کونسل کے اجلاس سے نومنتخب صدر ملک نسیم خان آف لڑمہ اور جنرل سیکرٹری گلزارحسین نے بھی خطاب کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا نظریہ،سوچ ایک ہیں اور ہم ایک ہی کشتی کے سواری ہیں ۔ ہم باچاخان باباؒ ، رہبر تحریک خان عبدالولی خان باباؒ کے پیروکار اورپختونوں کے قائد اسفندیارولی خان کے سپاہی ہیں ۔ ہم ایک ہی پارٹی کے کارکن ہیں اور آپس میں محبت اور بھائی چارے سے رہیں گے ۔ انہوں نے کونسل کے تمام ممبران کا شکریہ ادا کیا جنہوں نے اتفاق واتحاد کا مظاہرہ کرتے ہوئے پارٹی کے ضلعی کابینہ کے انتخاب میں نظم و نسق کا مظاہرہ کیا ۔
کراچی ۔منگل 11جون 2014
عوامی نیشنل پارٹی سندھ کے رہنماء سینیٹر شاہی سید نے کہا ہے کہ کراچی ائر پورٹ پر حملے اور اے ایس ایف کے کیمپ پر فائرنگ کے واقعے کے بعد دہشت گردوں کے عزائم کھل کر سامنے آگئے ہیں کراچی کی صورت حال بارود کے دہانے پر آباد شہر کی سی ہے دہشت گردوں کے ٹھکانوں کے بارے میں تمام سیکیورٹی ادارے واقف ہیں
اب بھی ریاستی اداروں کی مصلحت پسندی مجرمانہ فعل ہے کراچی میں حکومت کی رٹ کمزور اور دہشت گردوں کی گرفت مضبوط تر ہوتی جارہی ہے ٹارگٹڈآپریشن کے باوجود کراچی کی تاریخ کا واقعہ رونما ہوا،اگر کراچی دہشت گردوں کے ہاتھوں میں چلا گیا تو پھر ملک کا کیا بنے گا؟یہ وقت الزام در الزام کا نہیں خدارا ملک کی بقاء کے بارے میں سوچا جائے دہشت گرد جب جہاں جو چاہیں کرسکتے ہیں انٹیلیجنس ادارے اپنی ذمہ داریاں اپنی ذمہ داریاں پوری کریں ہمیں اپنی آنے والی نسل کو محفوظ ملک دینا ہوگاسیاسی مفادات سے قطع نظر دہشت گرد کو دہشت گرد کہنا ہوگااور باہمی اتحاد و اتفاق سے انتہاء پسندی اور دہشت گردی کو شکست دینا ہوگی

مورخہ:10-6-2014 بروز منگل 

پشاور : ( پ ر ) پختون سٹوڈنٹس فیڈریشن کے صوبائی چیئرمین امتیاز وزیر ، جنرل سیکرٹری سلیمان شاہ ، یونیورسٹی کیمپس پشاور کے چیئرمین مقرب خان بونیری نے ایک مشترکہ بیان میں نیشنل یوتھ آرگنائزیشن کے نو منتخب مرکزی صدر خوشحال خٹک ، مرکزی جنرل سیکرٹری فخرالدین خان ، صوبائی صدر سنگین خان ایڈووکیٹ، صوبائی جنرل سیکرٹری حسن بونیری ، سینئر نائب صدر گلزار خان ، اور مرکزی ایڈیشنل جنرل سیکرٹری محسن داوڑ سمیت مرکزی او رصوبائی کابینہ کے تمام نو منتخب عہدیداروں کوکامیابی پر مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ این وائی او کا مرکزی اور صوبائی کابینہ کا انتخاب نیک شگون ہے ۔ ہم کو کامل اُمید ہے کہ ان کی قیادت میں این وائی او پورے ملک میں نوجوانوں کا نمائندہ آرگنائزیشن بن کر رہے گی جو کہ وقت کاتقاضا ہے ۔ بلوچستان اور سندھ میں بھی این وائی او کا مرکزی قیادت اچھے انتخاب میں سرخ رو ہوئی ہے ۔ 
امتیاز وزیر نے کہا کہ نوجوانان کسی بھی قوم کا قیمتی سرمایہ ہوتا ہے لہٰذا پی ایس ایف اگر چہ پارٹی کا الگ تنظیم ہے لیکن مناسب انداز میں جہاں ضرورت ہوا تو این وائی او کے ساتھ ہر محاذ پر بھرپور تعاؤن سے کسی بھی حالت میں دریغ نہیں کرے گا۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ پی ایس ایف ، این وائی او اور پارٹی کے دیگر تنظیمیں آپس میں اتفاق و اتحاد کے ذریعے نہ صرف پختونخوا میں بلکہ پورے ملک میں تعلیمی اداروں کے اندر اور باہر نوجوانوں کے نمائندہ اور قابل تقلید تنظیمیں بنایا جا سکے۔ یہی وجہ ہے کہ پی ایس ایف اور این وائی او کے تمام عہدیداران اور کارکنان موبائل سفارت کاری کے ذریعے فخرافغان باچاخان باباؒ ، رہبر تحریک خان عبدالولی خان باباؒ اور ملی قائد اسفندیارولی خان کے افکار و نظریات اور پیغام امن تمام نوجوانوں کو پہنچا کر اپنی ملی ذمہ داریاں ادا کریں، تاکہ پختون طلبہ اور نوجوانوں کو ہر ازم سے بالاتر صرف اسفندیارولی خان کے قیادت میں سرخ جھنڈے تلے نیشنل ازم پر چلنے پر آمادہ کرکے سب کو صراط مستقیم نصیب ہو۔ آمین 

کراچی۔پیر 09 جون 2014ء

کراچی، صوبائی اور مرکزی حکومت جو طرزعمل اختیار کیے ہوئے ہے اس طرح قیام امن ممکن نہیں ہے۔ سینیٹر شاہی سید

عوامی نیشنل پارٹی سندھ کے رہنماء سینیٹر شاہی سید نے کراچی ائر پورٹ اور تفتان میں زائرین کی بسوں پر دہشت گردوں کے حملوں اور شمالی وزیر ستان میں خودکش حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملک کے موجودہ حالات انتہائی تشویش ناک ہیں حکومت کی دہشت گردوں کے متعلق کوئی واضح سمت یا پالیسی نظر نہیں آرہی ہے دھرنوں،ریلیوں ، جلسوں اور احتجاج کے بجائے ملک کی سلامتی کے بارے سوچا جائے موجودہ حالات کے تناظر میں ہمیں اپنے اداروں کے ساتھ کھڑا ہونا پڑے گاکراچی ائر پورٹ پر دہشت گردوں کا مقابلہ کرنے پر اپنے فورسز کے جوانوں خراج تحسین پیش کرتے ہیں تمام واقعات میں شہید ہونے والے افراد کی درجات کی بلندی پسماندگان کے صبر جمیل اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لیے دعا گو ہیں۔ موجودہ صوبائی اور مرکزی حکومت جو طرزعمل اختیار کیے ہوئے ہے اس طرح قیام امن کسی طور ممکن نہیں ہے مرکزی اور صوبائی حکومتیں ایک دوسرے کے ساتھ ٹوپی ڈرامہ کھیل کر اپنی اپنی ذمہ داریوں سے راہ فرار اختیار کرنا چاہتی ہیں ایک عرصے کہتا چلا آرہا ہوں کہ کراچی بارود کے دہانے پر کھڑا ہوا ہے ٹارگتڈ آپریشن کو دس ماہ ہوچکے ہیں اس کے باوجود اتنا بڑا سانحہ رونماہو گزشتہ رات کے سانحہ میں شہید بشیر احمد بلور اور میاں افتخار جیسی نڈر لیڈر شپ کی کمی محسوس ہوئی جو واقعے کے بعد جائے وقوع پر پہنچ کر اپنے جوانوں کی حوصلہ افزائی کرسکے اور زخمیوں کی دارسی اور شہداء کے اہل خانہ کی دل جوئی کرے مذاکرات بھی ہوگئے اب حکومت کیا لائحہ اختیار کرے گی ؟بد قسمتی سے موجودہ حکومت کے پاس دہشت گردی سے نمٹنے کے لیے ناعزم ہے اور نا حوصلہ اور نا ہی واضح حکمت عملی،تنقید برائے تنقید کے بجائے حکومت وقت سے دہشت گردی کے خلاف بھر پور اقدامات کا مطالبہ کرتے ہیں۔

کراچی۔پیر 09 جون 2014ء عوامی نیشنل پارٹی کے قائد اسفند یار ولی خان نے کراچی ائر پورٹ اور تفتان میں زائرین کی بسوں پر دہشت گردوں کے حملوں اور شمالی وزیر ستان میں خودکش حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملک کے موجودہ حالات انتہائی تشویش ناک ہیں حکومت کی دہشت گردوں کے متعلق کوئی واضح سمت یا پالیسی نظر نہیں آرہی ہے دھرنوں،ریلیوں ، جلسوں اور احتجاج کے بجائے ملک کی سلامتی کے بارے سوچا جائے موجودہ حالات کے تناظر میں ہمیں اپنے اداروں کے ساتھ کھڑا ہونا پڑے گاکراچی ائر پورٹ پر دہشت گردوں کا مقابلہ کرنے پر اپنے فورسز کے جوانوں خراج تحسین پیش کرتے ہیں تمام واقعات میں شہید ہونے والے افراد کی درجات کی بلندی پسماندگان کے صبر جمیل اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لیے دعا گو ہیں۔

کراچی ۔پیر 09جون 2014ء
عوامی نیشنل پارٹی کے قائد اسفند یار ولی خان اور سینیٹر شاہی سید کی کراچی ائر پورٹ پر دہشت گردوں کے حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ کراچی ائر پورٹ پر گزشتہ کافی عرصے سے کراچی ائر پورٹ پر حملے کی اطلاعات تھیں واقعے مکمل تحقیقات کی جائے اور غفلت برتنے والے عناصر کے خلاف سخت ترین کاروائی کی جائے۔
دہشت گردی کا ناسور ملک کی سلامتی کے لیے بد ترین خطرہ بن چکا ہے حکومت دہشت گردی کے خاتمے کے لیے واضح موقف اور اس کے خاتمے کے لیے موثر اور ٹھوس اقدامات کرے حملے میں شہید ہونے والے سیکیورٹی اہلکاروں کے درجات کی بلندی اورزخمیوں کی جلد صحت یابی کے لیے دعا گو ہیں۔

مورخہ:9-6-2014 بروزپیر

پشاور: ( پ ر ) گذشتہ روز نیشنل یوتھ آرگنائزیشن کامرکزی الیکشن این وائی او کے مرکزی الیکشن کمیشن کے زیر نگرانی باچاخان مرکز پشاور میں منعقد ہوا۔ جس کی صدارت مرکزی الیکشن کمیشن کے چیئرمین سنگین خان ایڈووکیٹ کر رہے تھے ۔ اس موقع پر پارٹی کے صوبائی عبوری صدر بشیر احمد مٹہ ، آرگنائزنگ سیکرٹری جمیلہ گیلانی ، پارلیمانی لیڈر سردارحسین بابک ، یوتھ کے ایڈوائیزر ہارون بلور بھی موجود تھے ۔مرکزی الیکشن کے نتیجے میں اتفاق رائے سے خوشحال خا ن خٹک مرکزی صدر ، سلیمان مندنڑ سینئر نائب صدر ، فخرالدین خان مرکزی جنرل سیکرٹری ، محسن داؤڑ ایڈیشنل جنرل سیکرٹری ، نائب صدور نعمان شمس الحق، عمران اچکزئی ، اسلم مندوخیل ، سکندر مسعود ،نائب صدور زنانہ فوزیہ ایڈووکیٹ ، عاصمہ گل خٹک ، ڈپٹی جنرل سیکرٹری قسیم کاکڑ ، جائنٹ سیکرٹریز ملک ناصر شاہ ، حفیظ شاہ ، اعجاز اسلم ، حارث خان ، ازلان خان ، جائنٹ سیکرٹری زنانہ نبیلہ بی بی ، سیکرٹری اطلاعات عدنان بیٹنی ، فنانس سیکرٹری ڈاکٹر نسیم افغان ، کلچر اینڈ ایجوکیشن سیکرٹری سعید بابر منتخب ہوئے۔ 
اس موقع پر بشیر احمد مٹہ اپنے خطا ب میں نوجوانوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آج کے ان مشکل حالات میں این وائی او کے ریکارڈ ممبرسازی اور پختون نوجوانوں کا پختون قومی تحریک میں اپنامثبت کردار ادا کرنے کا مسلمہ اظہار اس بات کی گواہی ہے کہ آنے والا دور میں یہی نوجوان قوم کو مشکل چیلنجوں سے نکالے گی اور مجھے اس بات پر انتہائی خوشی محسوس ہو رہی ہے کہ نوجوانوں کے ساتھ ساتھ کثیر تعداد میں نوجوان خواتین بھی این وائی او کے پلیٹ فارم پر اکٹھے ہور رہی ہیں ۔ اس موقع پر اے این پی کے پارلیمانی لیڈردسردارحسین بابک نے اپنے خطاب میں کہا کہ تبدیلی کے نام پر وجود میں آنے والی تحریک انصاف کی حکومت ایک سال بیتنے کے باوجود قوم کو کوئی بھی تبدیلی بھی نہ دکھا سکی، اس خطے میں سیاست اے این پی کے بغیر ادھوری ہے، ایسے حالات میں نیشنل یوتھ کے نوجوانو ں کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ باچاخان باباؒ اور رہبر تحریک خان عبدالولی خان باباؒ کے پیغام کو ہر پختون نوجوان تک پہنچائیں ۔ انہوں نے کہا کہ میں اپنی طرف سے این وائی او کے نوجوانوں کو مبارکباد کے علاوہ داد بھی دیتا ہوں کہ انہوں نے پہلی دفعہ قائم ہونے والے اپنے تنظیم کو ایک شفاف اور جمہوری تنظیم ثابت کرکے دکھایا ۔ اس موقع پر این وائی او کے ایڈوائیزر ہارون احمد بلور نے نوجوانوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ میں سندھ ، بلوچستان اور خیبر پختونخوا کے آرگنائزنگ کمیٹیوں کو مبارکباد پیش کرتا ہوں کہ انہوں نے بہتر انداز میں اپنے اپنے صوبوں میں ممبرسازی کے علاوہ تنظیمی ڈھانچے کو مکمل کیا اور آج کا دن ایک تاریخی دن ہے کہ این وائی او کے مرکزی کابینہ کے انتخابات انتہائی خوشگوار ماحول میں پایہ تکمیل تک پہنچ گئے۔ میں اپنی طرف سے مبارکباد کے علاوہ اُن کو پارٹی کی طرف سے ہرقسم تعاؤن کرنے کا یقین دلاتاہوں ۔ اس موقع پر صوبائی آرگنائزنگ سیکرٹری جمیلہ گیلانی ، این وائی او کے صدر سنگین خان ، صوبائی جنرل سیکرٹری حسن بونیری اور پلوشہ بی بی نے بھی خطاب کیا ۔

کراچی۔ ہفتہ 07 جون 2014

عوامی نیشنل پارٹی کے قائد اسفند یار ولی خان اور سینیٹر شاہی سید نے اے این پی ضلع شرقی کے ڈپٹی جنرل سیکریٹری عبدالواسیع ترین کی والدہ کے انتقال پر گہرے دکھ اور رنج کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ دکھ اور رنج کی اس گھڑی میں پوری پارٹی عبدالواسیع ترین کے غم میں برابر کی شریک ہے مرحومہ کے درجات کی بلندی اور پسماندگان کے صبر جمیل کے لیے دعا گو ہے ۔دریں اثناء دونوں پارٹی قائدین نے عوامی نیشنل پارٹی ضلع ملیر مانسہرہ کالونی وارڈ کے صدر شیر رحمٰن کی اہلیہ کے انتقال پر گہرے دکھ اور رنج کا اظہار کرتے ہوئے مرحومہ کے درجات کی بلندی اور پسماندگان کے صبر جمیل کے لیے دعا گو ہیں۔

مورخہ : 5.6.2014 بروز جمعرات

نیشنل یوتھ آرگنائیزیشن صوبہ سندھ کے نو منتخب صدر نور الاسلام صافی کا باچا خان مرکز میں این وائی اوپختونخوا کے صوبائی صدر اور مرکزی الیکشن کمیشن کے چیئرمین سنگین خان ایڈووکیٹ سے مرکزی الیکشن کے حوالے سے ملاقات کی۔ ملاقات میں 7 جون کوہونے والے مرکزی الیکشن کے حوالے سے بحث اور انتظامات کا جائزہ لیا گیا۔ واضح رہے کہ این وائی کے سندھ ، بلوچستان اور پنجاب سے مرکزی کونسلران اپنی رائے کے اظہار کے ذریعے مرکزی کابینہ کا انتخاب کرینگے۔ اس موقع پر صوبائی صدر سنگین خان نے سندھ کی صورت حال وہاں پر نوجوانوں کی سیاسی عمل میں شمولیت اور این وائی او کے کردار پر بات کی۔ ملاقات میں صوبہ پختونخوا کے سینئر نائب صدر گلزار خان ، صوبائی جنرل سیکرٹری حسن بونیری اور این وائی او کے سابقہ مرکزی آرگنائزروں کے علاوہ مرکزی کونسلران بھی موجود تھے۔ صوبائی صدر نے سندھ کے صدر کو یقین دلایا کہ مستقبل میں این وائی او کو ملک گیر سطح پر ایک فعال تنظیم ثابت کرنے کیلئے ایک دوسرے کے تجربات سے استفادہ حاصل کرینگے۔ 

مورخہ 04 جون 2014ء بروز بدھ

پشاور (پ ر) عوامی نیشنل پارٹی ضلع پشاور انٹرا پارٹی الیکشن کے سلسلے میں مختلف عہدوں پر الیکشن میں حصہ لینے کے خواہشمند ضلعی کونسلروں کی درخواست وصولی کا عمل تیزی سے جاری ہے اس سلسلے میں ضلعی آرگنائزنگ کمیٹی کے سیکرٹری کامران صدیق نے کہا ہے کہ چونکہ درخواست وصولی کی آج مورخہ 5 جون کو سہ پہر 4 بجے تک مقرر کی گئی تھی لیکن اے این پی ورکروں اور انٹرا پارٹی الیکشن میں حصہ لینے والے ضلعی کونسلروں کے بے حد اصرار پر آج مورخہ 5 جون بروز جمعرات کو 4 بجے سہ پہر کی بجائے رات 8 بجے تک درخواستیں اے این پی ضلع پشاور کے دفتر میں ضلعی آرگنائزنگ سیکرٹری کامران صدیق کے پاس جمع کرا سکتے ہیں‘ یاد رہے اے این پی ضلع پشاور کے انتخابات 10 جون کو صبح 10 بجے باچا خان مرکز پشاور میں منعقد ہوں گے جس میں صرف درخواست کنندگان ہی حصہ لے سکیں گے ۔

مورخہ:1-6-2014 بروز اتوار

پشاور: اے این پی کے پارلیمانی لیڈر سردارحسین بابک نے کہا کہ خسرہ کے ناکارہ ویکسین نے معصوم بچوں کی جانوں کے ضیاع کے بعد اس مہم کو فوری طور پر بند کرکے اعلیٰ سطح تحقیقات ہونی چاہیے۔ اور ذمہ داری کو قرار واقعی سزادی جائے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کس طرح خسرہ کے ناکارہ ویکسین کے ساتھ مہم جاری رکھے ہوئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ یہ صحت کے ساتھ نا انصافی ہے اور نئی نسل کو تباہ کرنے کا منصوبہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اٹھارویں ترمیم کے بعد صحت صوبائی محکمہ ہے ۔ لہٰذا صوبائی حکومت کو ذمہ داری قبول کرنی ہوگی اور قوم کو یہ بتانا ہوگا کہ خسرہ کے جعلی اور ناکارہ ویکسین کہاں سے خریدے گئے ہیں اور کس نے خریدے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ صوبے میں ناکارہ ویکسین کی وجہ سے اب تک 7 بچے ہلاک ہوچکے ہیں لیکن عمران خان اور صوبائی حکومت کی طرف سے تاحال مہم کو جاری رکھنا اور ذمہ داری کے خلاف فوری کاروائی نہ کرنا سمجھ سے بالاتر ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مہم کے دوران ناکارہ ویکسین کا سامنا آنے کے بعد فوری طور پر پروگرام کو بند کرکے تحقیقات ہونی چاہیے تھی تاکہ خدانخواستہ صوبے میں مزید بچوں اور بچیوں کی زندگیوں کو نقصان نہ پہنچے ۔ انہوں نے کہا کہ گڈ گورننس اور ٹرانسپرنسی کی باتیں کرنے والے آج صوبے کے نوجوان نسل کی زندگیوں سے کھیل رہے ہیں ۔

[suffusion-the-author]

[suffusion-the-author display='description']