Oct 102018
 

اے این پی کا مہنگائی اور ٹیکسوں کے خلاف ا حتجاج کا فیصلہ بروقت ہے، میاں افتخارحسین
آئی ایم ایف جانے کی صورت میں خودکشی کا وعدہ کرنے والے کسی کو منہ دکھانے کے قابل نہیں رہے۔
پی ٹی آئی کے سپورٹرز پچھتاوے کا شکار ہیں مگر ان سے انہونی فیصلے کروائے جارہے ہیں۔
ضمنی انتخابات پی ٹی آئی کی عوام دشمن پالیسیوں کے خلاف ایک ریفرنڈم ہے۔
عمران کی عوام دشمن پالیسیاں ان کی حکومت کو ختم کرنے کیلئے کافی ہیں۔
اپوزیشن منظم اور متحد ہے، مختلف مکاتب فکر کے لوگ اے این پی کے احتجاج اور انتخاب میں ساتھ دیں۔

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخارحسین نے عوامی نیشنل پارٹی خیبر پختونخوا کی جانب سے بڑھتی ہوئی مہنگائی، ٹیکسوں میں اضافے، نئے ٹیکسیز کے نفاذ، افراط زر اور حکومت کا آئی ایم ایف سے قرضے لینے کے خلاف صوبہ بھر میں احتجاج کے اعلان کو بروقت قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ چونکہ عوامی مسائل اے این پی کی ترجیح ہیں اور اس کڑے اور مشکل وقت میں عوامی نیشنل پارٹی چپ سادھ نہیں لے سکتی، یہ ایک احسن اور بروقت فیصلہ ہے اور قوم کو ایک آواز ہوکر موجودہ حکومت کی غلط پالیسیوں کے خلاف متحدہ اپوزیشن کو سپورٹ کرکے میدان میں آنا چاہئے۔ انہوں نے تاجر تنظیموں، ٹرانسپورٹروں، طلباء ، مزدوروں، کسانوں ، نوجوانوں اور دکانداروں سمیت مختلف مکاتب فکر سے اپیل کی کہ وہ موجودہ حکومت کی عوام دشمن پالیسیوں کے خلاف اے این پی کے احتجاج میں شامل ہوکرموثر آواز بنیں اور ائندہ ضمنی انتخابات میں اپوزیشن کے حمایت یافتہ امیدواروں کو سپورٹ کرکے موجودہ حکومت کی پالیسیوں سے اختلاف کا اظہار کریں کیونکہ یہ پی ٹی آئی کی عوام دشمن پالیسیوں کے خلاف ایک ریفرنڈم ہے۔
انہوں نے کہا کہ کپتان عمران خان کی قیادت میں تحریک انصاف نے عوام کو اس زغم میں مبتلا کردیا تھا کہ ان کے پاس ایک تجربہ کار ٹیم اور تمام مسائل کا حل موجود ہے جبکہ دوسری جانب ان کو مختلف حوالوں سے قوم کے سامنے ایک مسیحا ے طور پر پیش کیا جاتا رہالیکن بدقسمتی سے پاکستان تحریک انصاف کی حکومت نے عنان حکومت سنبھالتے ہی ایسے اقدامات کئے جس نے خود ان کے سپورٹرزکو پریشان کردیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ جن قوتوں نے عمران خان کو سپورٹ کیا، وہ خود اپنے کئے پر پشیماں ہیں اور ایک پیج پر ہرگز نہیں ہیں مگر ان سے ایسے انہونی فیصلے کروائے جارہے ہیں جس کیلئے کوئی دوسری سیاسی اور قوم پرست جماعت ہرگز تیار نہیں ہوسکتی۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان کی اپنی پالیسیاں ہی ان کی حکومت کو ختم کرنے کیلئے کافی ہیں اور اس کیلئے زیادہ انتظار نہیں کرنا پڑے گا۔
انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا تھا کہ وہ آئی ایم ایف کو جانے کے بجائے خودکشی کرنے کو ترجیح دینگے، میاں افتخارحسین نے یاد دلایا کہ اب عمران خان سمیت تحریک انصاف کی قیادت کسی کو منہ دکھانے کی لائق نہیں رہی کیونکہ آئی ایم ایف جانے کا فیصلہ کرکے انہوں نے خود اپنے پاوں پر کلہاڑی ماردی ہے۔
میاں افتخارحسین نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی کی عوام دشمن پالیسوں کی روک تھام صرف اسی صورت میں ممکن ہے کہ آنے والے ضمنی انتخابات میں عوام عوامی نیشنل پارٹی اور متحدہ اپوزیشن کے نامزد امیدواروں کو ووٹ پول کرکے موجودہ حکومت کی پالیسیوں پر عدم اعتماد کا اظہار کرلیں۔ کیونکہ تحریک انصاف کو چھوڑ کر ساری سیاسی پارٹیاں متحد ہیں اور ملک کے بہتر مستقبل اور جمہوریت کی بقاء کیلئے یک زباں ہے۔

[suffusion-the-author]

[suffusion-the-author display='description']