Sep 082018
 

دفاعی بجٹ میں کمی سے ملک کی ابتر اقتصادی صورتحال بہتر بنائی جاسکتی ہے، سردار حسین بابک

کھربوں روپے کے قرضے معاف کرانے اور قومی املاک اپنے نام کرانے والوں کے خلاف کریک ڈاؤن کیاجائے۔

چندہ مہم سے عوام میں احساس ذمہ داری ضرور پیدا ہو گی تاہم ملک کا نظام مستقل بنیادوں پر نہیں چلایا جا سکتا۔

پڑوسی ممالک کے ساتھ دوستانہ اور باعتماد روابط استوار کرنے سے مسائل کے حل میں مدد ملے گی۔

وفاقی اور صوبائی وزراء اور سیکرٹریز کے اخراجات کم کر نے سے اقتصادیات پر مثبت اثرات مرتب ہونگے۔

خسارے میں چلنے والے قومی اداروں کے مستقبل کے حوالے سے جلد فیصلے کی ضرورت ہے۔

کرپشن کی روک تھام کیلئے احتساب کے عمل کو غیر جانبدارانہ اور بلا امتیاز بنانا ہو گا ۔

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے ملک کو اقتصادی طور پر اپنے پاؤں پر کھڑا کرنے کیلئے ٹھوس اور مستقل اقدامات کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ وزیر اعظم ملک کی اقتصادی حالت بہتر بنانے کیلئے کھربوں روپے کی قرضے معاف کرانے اور قومی املاک اپنے نام کرانے والوں کے خلاف کریک ڈاؤن کریں،اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ چندہ مہم سے عوام میں احساس ذمہ داری ضرور پیدا ہو گی تاہم ملک کا نظام مستقل بنیادوں پر نہیں چلایا جا سکتا ،انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ پڑوسی ممالک کے ساتھ دوستانہ اور باعتماد روابط استوار کر کے دفاعی بجٹ میں کمی لائی جائے ، سردار حسین بابک نے کہا کہ وفاقی اور صوبائی وزراء اور سیکرٹریز کے اخراجات کم کر نے سے اقتصادیات پر مثبت اثرات مرتب ہونگے ، انہوں نے کہا کہ خسارے میں چلنے والے قومی اداروں کے مستقبل کے حوالے سے جلد فیصلے کی ضرورت ہے اور اس کے ساتھ ملک کے تمام صوبوں کو مکمل مالی و انتظامی خود مختاری کو یقینی بنایا جائے ،تو ملک دن دگنی رات چگنی ترقی کرے گا، انہوں نے کہا کہ چندہ مہم سے عوام میں احساس ذمہ داری ضرور پیدا ہو گی تاہم ملک کا نظام مستقل بنیادوں پر نہیں چلایا جا سکتا، انہوں نے کہا کہ کرپشن کی روک تھام کیلئے احتساب کے عمل کو غیر جانبدارانہ اور بلا امتیاز بنانا ہو گا ، انہوں نے کہا کہ جب تک احتسابی عمل سیاسی انتقام کیلئے استعمال ہوتا رہے گا مسائل میں کمی کی بجائے اضافہ ہوتا رہے گا، سردار بابک نے کہا کہ ملک میں مہنگائی کے نئے طوفان نے عوام کو ذہنی کرب میں مبتلا کر دیا ہے لہٰذا ھکومت کو سنجیدگی اور ذمہ داری کے ساتھ حالات کنٹرول کرنے کیلئے اقدامات کرنا ہونگے،

[suffusion-the-author]

[suffusion-the-author display='description']