Sep 072018
 

بد امنی کی صورتحال، اے این پی نے صوبائی اسمبلی میں تحریک التوا جمع کرا دی
تحریک التوا سردار حسین بابک نے جمع کرائی ، ٹارگٹ کلنگ ، ڈکیتی اور چوری کی وارداتوں میں اضافے پر اظہار تشویش۔
صوبے میں بد امنی اور ٹارگٹ کلنگ میں دن دیہاڑے شہریوں کا قتل عام معمول بن چکا ہے۔
بھتہ خوری کے واقعات نے عوام کو ذہنی مریض بنا دیا ہے ،صوبے میں حکومت نام کی کوئی چیز موجود نہیں۔
حکومت کو بد امنی کی روک تھام کیلئے عملی اقدامات اٹھانا ہونگے، مجرموں کو قانون کے کٹہرے میں لایا جائے۔
امن و امان کی بد ترین صورتحال کا نوٹس لے کر حکمرانوں کو زبانی جمع خرچ سے نکلنا ہو گا،سردار حسین بابک

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی نے خیبر پختونخوا میں ٹارگٹ کلنگ ،ڈکیتی ، چوری اور بھتہ خوری کے بڑھتے ہوئے واقعات کے خلاف صوبائی اسمبلی میں تحریک التوا جمع کرا دی ہے ، تحریک التوا پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری اور پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک نے جمع کرائی جس میں حکومت کی توجہ اس جانب مبذول کرائی گئی ہے کہ صوبے میں بد امنی اور ٹارگٹ کلنگ میں دن دیہاڑے شہریوں کا قتل عام معمول بن چکا ہے،جبکہ چوری اور ڈکیتی کی وارداتوں نے عوام کو خوف اور تشویش میں مبتلا کر دیا ہے ، تحریک التوا میں مزید کہا گیا ہے کہ بھتہ خوری کے واقعات نے عوام کو ذہنی مریض بنا دیا ہے اور صوبے میں حکومت نام کی کوئی چیز موجود نہیں ، سردار حسین بابک نے کہا کہ صوبائی حکومت کی رٹ نہ ہونے کے برابر ہے،انہوں نے کہا کہ حکومت کو بد امنی کی روک تھام کیلئے عملی اقدامات اٹھانا ہونگے،ٹارگٹ کلرز اورڈکیتوں کو قانون کے کٹہرے میں لایا جائے ،انہوں نے کہا کہ حکومت کو سنجیدگی کے ساتھ جرائم میں اضافے اور امن و امان کی بد ترین صورتحال کا نوٹس لینا چاہئے اور اس کیلئے حکمرانوں کو زبانی جمع خرچ سے نکلنا ہو گا،انہوں نے کہا کہ عوام کو ریلیف پہنچانے کیلئے نظر آنے والے اقدامات ناگزیر ہو چکے ہیں۔

[suffusion-the-author]

[suffusion-the-author display='description']