Jul 092018
 

الیکشن کا بائیکاٹ نہ کرنے کا ن لیگی فیصلہ دانشمندانہ ہے، میاں افتخار حسین

ملک میں الیکشن مؤخر کرنے کی مختلف حیلوں سے بارہا کوششیں کی جا رہی ہیں۔

کیس نواز شریف کا ہے ،عدالت کو جواب عمران خان دے رہے ہیں ۔

صورتحال بلا شبہ سنگین ہے اور ذرا سی گڑ بڑ سے حالات کنٹرول سے باہر ہو جائیں گے۔

صوبے میں پی ٹی آئی کی حکومت نے کرپشن اور کمیشن کی سیاست کو فروغ دیا۔

بی آر ٹی ، بلین سونامی ٹری اور بیوٹیفیکیشن کے نام پر اربوں روپے خرد برد کر دیئے گئے۔

آنے والا دور اے این پی کا ہے، پی کے 65میں انتخابی مہم کے دوران اجتماعات سے خطاب

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ الیکشن بائیکاٹ نہ کرنے کا ن لیگ کا فیصلہ دانشمندانہ ہے ،انتخابات میں چوروں اور لٹیروں کا صفایا ہو جائے گا ، خیبر پختونخوا میں اے این پی بھاری اکثریت سے کامیاب ہو گی اور حکومت میں آ کر عوام کی فلاح و بہبود پر خصوصی توجہ دی جائے گی ، ان خیالات کا اظاہر انہوں نے انتخابی مہم کے دوران پی کے کے مختلف مقامات ڈاگ بیسود ،کوٹلی خورد اور مختلف علاقوں میں جرگوں اور شمولیتی اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، اس موقع پر مختلف سیاسی جماعتوں سے اہم سیاسی شخصیات نے اے این پی میں شمولیت کا اعلان کیا جبکہ کئی سرکردہ شخصیات کی جانب سے حمایت کا علان بھی کیا گیا ، میاں افتخار حسین نے پارٹی میں شامل وہنے والوں اور حمایت کی یقین دہانی کرانے والوں کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ انتخابات میں اصل مقابلہ نظریے اور اقتدار کے پجاریوں کے درمیان ہے ، انہوں نے کہا کہ اے این پی نے ہمیشہ انسانیت کی خدمت کو ترجیح دی یہی وجہ ہے کہ آج سینکڑوں کی تعداد میں عوام اے این پی کا حصہ بنتے جا رہے ہیں،انہوں نے کہا کہ ظلم کی تاریک رات ڈھل چکی ہے اور آنے والا روشن کل عوام کیلئے خوشخبری لے کر آئے گا ، انہوں نے کہا کہ نواز شریف کے خلاف فیصلے میں عجلت سے کام لیا گیا جس کے پیچھے محرکات کا علم نہیں ، انہوں نے کہا کہ کیس نواز شریف کا ہے اور عدالت کو جواب عمران خان دے رہے ہیں ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ ملک میں الیکشن مؤخر کرنے کی بارہا کوششیں کی گئیں تاہم ن لیگ کے دانشمندانہ فیصلے نے الیکشن مؤخر کرنے کی یہ کوشش بھی ناکام بنا دی ، انہوں نے کہا کہ صورتحال بلا شبہ سنگین ہے اور ذرا سی گڑ بڑ سے حالات کنٹرول سے باہر ہو جائیں گے، انہوں نے کہا کہ صوبے میں پی ٹی آئی نے کرپشن اور کمیشن کی سیاست کو فروغ دیا جس کے نتیجے میں سرکاری خزانہ لوٹ لیا گیا اور صوبہ اربوں روپے کا مقروض بھی ہو گیا جسے ادا کرنے کیلئے آنے والی حکومت کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا، انہوں نے کہا کہ بی آر ٹی ، بلین سونامی ٹری اور بیوٹیفیکیشن کے نام پر اربوں روپے خرد برد کر دیئے گئے جس کی نیب نے انکوائری شروع کر دی ہے ،انہوں نے کہا کہ عوام 25جولائی کو اپنا قیمتی ووٹ اے این پی کے حق میں استعمال کر کے اپنا اور اپنی آنے والی نسلوں کا مستقبل محفوظ بنائیں۔

[suffusion-the-author]

[suffusion-the-author display='description']