Jul 082018
 

ناچ گانے اور دھرنوں کی سیاست سے ملکی مسائل حل نہیں کئے جا سکتے ۔میاں افتخار حسین

عمران خان کی جلسیاں میوزیکل کنسرٹ سے بڑھ کر نہیں ۔

سابق وزیر اعلیٰ نے بلینٹری اور بی آر ٹی میں اربوں روپے کی لوٹ مار کی۔

صوبے کا خزانہ لوٹ لیا گیا ،سابق حکومت سے چار سال مسلسل بجٹ لیپس ہوئے ۔

نیب نے تحقیقات شروع کر دی ہیں اور جلد بہت کچھ عوام کے سامنے آّ جائے گا۔

بے روزگاری پر قابو پانے کیلئے اے این پی کے پاس جامع پلان موجود ہے ۔

مرکز سے صوبے کے حقوق کا حصول یقینی بنایا جائے گا۔پی کے65میں انتخابی جلسوں سے خطاب

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ الیکشن میں اے این پی واضح برتری کے ساتھ کامیابی حاصل کرے گی اور اقتدار میں آ کر تمام مفاد عامہ کے منصوبے عوام کے تعاون سے شروع کریں گے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے پی کے65 میں انتخابی مہم کے دوران مختلف شمولیتی تقاریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، اس موقع پر پیپلز پارٹی اور پی ٹی آئی سمیت مختلف جماعتوں کی سرکردہ شخصیات نے اے این پی میں شمولیت کا اعلان کیا ، میاں افتخار حسین نے شامل ہونے والوں کو سرخ ٹوپیاں پہنائیں اور انہیں مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ عوام کی الیکشن سے قبل جوق در جوق شمولیت اس بات کا واضح ثبوت ہے کہ وہ اے این پی کو اپنے حقوق کا محافظ سمجھتے ہیں ، انہوں نے کہا کہ گزشتہ حکومت نے عوام کو صرف نعروں پر ورغلایا جبکہ حقیقت میں ان کے پاس عوام کو دینے کیلئے کچھ نہیں تھا ،انہوں نے کہا کہ سابق حکومت نے خزانہ کنگال کر دیا اور صوبے کو تباہی کے دہانے پر لاکھڑا کیا ، انہوں نے کہا کہ بلین سونامیٹری ،پشاور بیوٹیفیکیشن اور بی آر ٹی کرپشن کا ذریعہ تھے جن میں وزیر اعلیٰ نے اربوں روپے کی کرپشن کی ، انہوں نے کہا کہ نیب نے تحقیقات شروع کر دی ہیں اور جلد بہت کچھ عوام کے سامنے آّ جائے گا، انہوں نے کہا کہ کپتان کی جلسیاں میوزیکل کنسرٹ سے زیادہ کچھ نہیں ، جنمیں ہماری تہذیب اور ثقافت کو پامال کیا جا تا ہے، انہوں نے کہا کہ 25جولائی کو عوام ان تمام زیادتیوں کا حساب لیں گے،انہوں نے کہا کہ اقتدار میں آنے کے بعد مفاد عامہ کو ترجیح دی جائے گی اور پانچ سال تک عوام جن محرومیوں کا شکار رہے ہیں ان کا ازالہ کیا جائے گا، میاں افتخار حسین نے کہا کہ خزانہ خالی ہے اور اے این پی تمام ایسے اقدامات کرے گی جس سے سرکاری خزانے کو اپنے پاؤں پر کھڑا کیا جا سکے ، انہوں نے کہا کہ صوبے کے حقوق کی جنگ ماضی میں بھی اے این پی نے لڑی اور اب دوبارہ اقتدار میں آ کر مرکز سے صوبے کے حقوق کا حصول یقینی بنایا جائے گا ،انہوں نے کہا کہ بے روزگاری پر قابو پانے کیلئے اے این پی کے پاس جامع پلان موجود ہے اور حکومت میں آ کر نوجوانوں کو بلا سود قرضے فراہم کریں گے ۔

[suffusion-the-author]

[suffusion-the-author display='description']