Jul 042018
 

موسلادھار بارش کے باوجودپی کے65میں اے این پی کا بھرپور پاور شو
عوام کا جوش و خروش دیدنی، بارش کے باوجود عوام کی شرکت نے پوزیشن واضح کر دی۔
شفاف اور غیر جانبدارانہ انتخابات ہوئے تو مخالفین کو ٹف تائم دیں گے۔میاں افتخار حسین
الیکشن کمیشن ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزیوں کا نوٹس لے کر تحفظات دور کرے۔
مختلف حلقوں میں سابق حکومت کے نمائندے سیاسی رشوت پر عوام کو ورغلا رہے ہیں۔
مرکز سے صوبے کے حقوق کا حصول یقینی بنایا جائے گا،خانشیر گڑھی میں جلسہ عام سے خطاب

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ شفاف اور غیر جانبدارانہ انتخابات ہوئے تو مخالفین کو ٹف تائم دیں گے اور اے این پی حکومت میں آ کر صوبے کے تمام محکموں میں اصلاحات اور بہتری کیلئے انتھک کام کرے گی ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے انتخابی مہم کے دوران پبی خانشیر گڑھی میں بڑے شمولیتی جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، اس موقع پر موسلادھار بارش کے باوجود عوام کے جوش و خروش میں کمی نہیں آئی جو اس بات کا واضح ثبوت ہے کہ حلقہ میں میاں افتخار حسین کی پوزیشن مزید مستحکم ہو چکی ہے ،جلسہ میں مختلف سیاسی جماعتوں کی اہم شخصیات نے اپنے درجنوں ساتھیوں اور خاندانوں کے ہمراہ اے این پی میں شمولیت کا اعلان کیا ، میاں افتخار حسین نے شامل ہونے والوں کو سرخ توپیاں پہنائیں اور انہیں مبارکباد پیش کی،اپنے خطاب میں انہوں نے کہا کہ اے این پی انسانیت کی خدمت پر یقین رکھتی ہے اور اقتدار میں آ کر سیاست سے قطع نظر سب کی بلا امتیاز خدمت کریں گے ، انہوں نے کہا کہ اپنے دور حکومت میں اے این پی نے امن کے قیام اور تعلیم کے فروغ کیلئے جو قربانیاں دیں آج ان قربانیوں اور اپنی کارکردگی کی بنیاد پر میدان میں ہے، انہوں نے کہا کہ گزشتہ پانچ سال میں جس طرح صوبے اور تمام صوبائی محکموں کو نقصان پہنچایا گیا اس کی تاریخ میں مثال نہیں ملتی ، سابق حکومت نے بغیر ترقیاتی منصوبوں کے صوبے کو 370ارب کا مقروض کر دیا جبکہ خزانہ میں ایک پائی تک نہ چھوڑی جس کی وجہ سے آج سرکاری ملازمیں کو تنخواہوں کی ادائیگی کیلئے دقت کا سامنا ہے۔انہوں نے کہا کہ مختلف حلقوں میں سابق حکومت کے نمائندے سیاسی رشوت تقسیم کرنے میں مصروف ہیں جس کا الیکشن کمیشن کو نوٹس لینا چاہئے ۔، میاں افتخار حسین نے کہا کہ خزانہ خالی ہے اور اے این پی تمام ایسے اقدامات کرے گی جس سے سرکاری خزانے کو اپنے پاؤں پر کھڑا کیا جا سکے ، انہوں نے کہا کہ صوبے کے حقوق کی جنگ ماضی میں بھی اے این پی نے لڑی اور اب دوبارہ اقتدار میں آ کر مرکز سے صوبے کے حقوق کا حصول یقینی بنایا جائے گا ،انہوں نے کہا کہ صوبے کی تاریخ میں اتنے انقلابی اقدامات کسی دوسری جماعت نے نہیں کئے ، انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ کارکن الیکشن کی تیاریوں میں اپنی بھرپور توانائیاں صرف کریں ، اور پارٹی کا پیغام مؤثر اور مدلل انداز میں گھر گھر پہنچانے میں کوئی کسر نہ چھوڑیں۔

[suffusion-the-author]

[suffusion-the-author display='description']