Jul 022018
 

اے این پی کے مقابل مخالفین تیسرے درجے کی سیاست میں مصروف ہیں، امیر حیدر خان ہوتی
مرکز اور صوبے میں اقتدار ختم ہوتے ہی چند لوگوں کو اسلام خطرے میں نظر آنے لگا ہے ۔
گھاس پھوس سیاسی رشوت کیلئے تقسیم کئے جا رہے ہیں ، اے این پی کارکردگی کی بنیاد پر میدان میں ہے۔
جنہیں چور اور ڈاکو کہا گیا انہیں ڈرائی کلین کر کے ٹکٹ جاری کردیئے گئے۔
 اقتدار میں آ کر پشاور کی عظمت رفتہ بحال کریں گے ۔بی آر ٹی منصوبہ اے این پی مکمل کرے گی ۔
پشاور میں بچوں کا جدید ہسپتال عوام کے تعاون سے تعمیر کریں گے۔
عوام کے تعاون سے ترقی کا نیا سفر شروع کریں گے ، پشاور اور صوابی میں انتخابی جلسوں سے خطاب

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر امیر حیدر خان ہوتی نے کہا ہے کہ اے این پی کے مقابلے میں موجود مخالفین تیسرے درجے کی سیاست میں مصروف ہیں کوئی اسلام کے نام پر اور کوئی گھاس پھوس تقسیم کر کے ووٹ مانگ رہا ہے ، اے این پی کارکردگی کی بنیاد پر میدان میں ہے اور عوام اے این پی پر بھرپور اعتماد کر کے اپنے حقوق کا تحفظ یقینی بنائیں گے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے ٹوپی صوابی اور پشاور انقلاب روڈ چمکنی موڑ پر انتخابی جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، امیر حیدر خان ہوتی نے کہا کہ سیاست سے ضمیر فروشی اور کرپشن کے خاتمے کے دعوے کرنے والوں نے سب زیادہ ضمیر فروشی اور کرپشن کو فروغ دیا ،پی ٹی آئی نے لوٹوں کی فوج بھرتی کر کے ٹکٹ جاری کئے ،انہوں نے عمران خان کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ جب یہی لوگ پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ میں تھے تو انہیں چور اور ڈاکو کہا پھر انہی لوگوں کو خود ٹکٹ جاری کئے ، کیا اب وہ ڈرائی کلین کر کے فرشتہ بنا دیا گیا ہے؟انہوں نے کہا کہ اے این پی واحد سیاسی جماعت ہے جس نے عوامی رائے کا احترام کرتے ہوئے کارکنوں کے مشورے سے ٹکٹ دیئے ،انہوں نے کہا کہ پشاور کی تباہی کے ذمہ دار سابق وزیر اعلیٰ ہیں جس نے اپنے ذاتی مفادات کی خاطر شہر کو آثار قدیمہ میں تبدیل کر دیا ، انہوں نے کہا کہ اقتدار میں آ کر پشاور کی عظمت رفتہ بحال کریں گے اور بی آر ٹی منصوبہ اے این پی مکمل کرے گی ،انہوں نے یاد دلایا کہ اے این پی نے اپنے دور حکومت میں حیات آباد سے چارسدہ روڈ تک رنگ روڈ کی بحالی کا کام کیا اور اب دوبارہ چمکنی تا چارسدہ روڈ اور سدرن بائی پاس کی تعمیر یقینی بنائیں گے تاکہ ارد گرد کے علاقوں کو لنک کیا جا سکیحکومت میں آ کر گزشتہ پانچ سالہ محرومیوں کا ازالہ کریں گے ، صوبے کے عوام باچاخانی چاہتے ہیں، امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ انتہائی افسوس کا مقام ہے کہ حکومت کی غیر سنجیدگی کی وجہ سے بے روزگاری اور مہنگائی میں اضافہ ہوا ، انہوں نے کہا کہ اے این پی کامیابی کے بعد بے روزگاری کے خاتمے پر توجہ دے گی اور نوجوانوں کو 10لاکھ تک بلاسود قرضے فراہم کرے گی تاکہ وہ اپنے لئے روزگار کے مواقع پیدا کر سکیں ، انہوں نے کہا کہ پشاور میں بچوں کا جدید ہسپتال عوام کے تعاون سے تعمیر کریں گے اور ترقی کے ایک نئے دور کا آغاز کیا جائے گا، انہوں نے پارٹی عہدیداروں اور کارکنوں پر زور دیا کہ الیکشن کی بھرپور تیاریاں جاری رکھیں اور عوام اپنے حقوق کے تحفظ اور اپنی آئندہ نسلوں کی بقا کیلئے اے این پی کو کامیاب کرئیں، انہوں نے کہا کہ اقتدارمیں آکرنہ صرف خالی خزانہ بھریں گے بلکہ ترقی کا رکا ہوا پہیہ دوبارہ چلائیں گے، بیرونی سرمایہ کاروں کو لاکر کارخانے لگائیں گے، جنوبی اضلاع میں آئل ریفارمری ،گیس سے بجلی منصوبوں کے ساتھ ساتھ چھوٹے ہائیڈل منصوبے شروع کریں گے، انہوں نے کارکنوں پر زور دیا کہ وہ انتخابی مہم میں مزید تیزی لائیں اور25جولائی کی شام فتح کے پروانے سب کے ہاتھ میں ہوں ۔

[suffusion-the-author]

[suffusion-the-author display='description']