Feb 092018
 

اسلام آباددھرنا مظاہرین سے ملاقاتوں میں وفاقیٍ حکومت کا رویہ افسوسناک ہے، سردار حسین بابک

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے اسلام آباد میں جاری دھرنے کے حوالے سے وفاقی حکومت کی بے رخی پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہتاریخی جانی و مالی نقصنات اٹھانے والوں کے ساتھ امتیازی سلوک کسی صورت مناسب نہیں ہے ، اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا ہے کہ صوبائی وزیر اعلیٰ اور گورنر پختونخوا سینیٹ الیکشن کیلئے ہر کسی سے ملاقاتیں کرنے میں مصروف ہیں لیکن جائز مطالبات کیلئے 9روز سے دھرنے پر بیٹھے قبائلی جوانوں سے ملاقات کرنے اور ان کے مطالبات سننے کیلئے کسی کے پاس وقت نہیں،انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم دھرنے کے وفد سے ملاقات کر کے خود کو بری الذمہ محسوس کرنے لگے ہیں تاہم یہ انتہائی نا مناسب ہے اور ان کے مطالبات میں کسی قسم کا ایسا مطالبہ شامل نہیں جسے تسلیم کرنے میں رکاوٹ ہو ، سردار حسین بابک نے کہا کہ وزیر اعظم ،وزیر داخلہ اور وفاقی کابینہ کے ذمہ دار وزراء نے دھرنا مظاہرین نے کوئی رابطہ نہیں کیا،انہوں نے کہا کہ کیا قبائلی عوام اس ملک کے باشندے نہیں؟ان کے گھر بار تباہ ہو چکے ہیں اور یہ تمام قربانیاں انہوں نے ملک کی سلامتی اور بقا کیلئے دی ہیں،انہوں نے کہا کہ اسی طرح پنجاب میں موٹر ویز اور ہائی ویز پر اربوں روپے لُٹا دیئے گئے ہیں لیکن قبائلی عوام کو یکسر فراموش کر دیا گیا اور وفاقی بجٹ میں فاٹا اور پختونخوا کیلئے کوئی حصہ نہیں رکھا گیا،پنجاب میں کوئلے سے بجلی پیدا کرنے والے مہنگے ترین منصوبے شروع کئے گئے اور دیگر منصوبوں کی تزئین و آرائش کیلئے اربوں روپے خرچ کئے جا رہے ہیں ،انہوں نے استفسار کیا کہ کیا نقیب اللہ محسود کے قاتلوں کو گرفتار کرنے کی ذمہ داری حکومتوں کی نہیں ؟ انہوں نے مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا کہ پر امن دھرنے پر بیٹھے مظلوم مظاہرین کے تمام جائز مطالبات فوری طور پر تسلیم کر کے عوام میں پائی جانے والی احساس محرومی کا خاتمہ کرے۔

[suffusion-the-author]

[suffusion-the-author display='description']