Nov 152017
 

حکومتیں اپنی مدت پوری کریں، انتخابات کا التواء ملک کیلئے نقصان دہ ہوگا، سردار حسین بابک

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے عمران خان کے قبل از وقت انتخابات کے مطالبے کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ کپتان نے ہمیشہ صوبے کے حقوق غصب کرنے کی بات کی ہے اور آج بھی جب صوبے کو نئی حلقہ بندیوں کے ذریعے 5اضافی سیٹیں ملنے کی امید پیدا ہوئی ہے تو عمران خان اسے بھی سبوتاژ کرنے کے درپے ہیں ، اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ قبل از وقت انتخابات کی باتیں صوبے کو نئی حلقہ بندیوں کی صورت میں ملنے والی 5اضافی نشستوں کے خلاف سازش کا حصہ ہیں ، پی ٹی آئی پرانی حلقہ بندیوں پر انتخاب چاہتی ہے لیکن ان کی خواہش سے صوبے کو نقصان ہو گا، انہوں نے کہا کہ آئندہ الیکشن کے حوالے سے مختلف سیاسی جماعتیں چہ میگوئیوں میں مصروف ہیں اور اب تو پیپلز پارٹی نے بھی پینترا بدل دیا ہے ، جبکہ کچھ جماعتیں انتخابات کا التوا بھی چاہتی ہیں ، انہوں نے کہا کہ الیکشن لیٹ ہوئے تو اس کے نتیجے میں بننے والی قومی حکومت یا ٹیکنو کریٹ حکومت کی آئین میں کوئی گنجائش نہیں انہوں نے کہا کہ انتخابات کا التواء ملک کیلئے نقصان دہ ہوگا،تمام حکومتوں کو اپنی مقررہ مدت پوری کرنی چاہئے اور اپنے وقت پر الیکشن کا انعقاد ہی ملک و قوم کے مفاد میں ہے،انہوں نے کہا کہ نواز شریف صبر وتحمل کا مظاہرہ کریں ،اور اداروں کے درمیان ٹکراؤ کی پالیسی سے گریز کریں،اداروں کے درمیان ٹکراؤ سے نقصان صرف ملک کو ہو گا،انہوں نے کہا کہ صوبے کے حکمران اپنے ہی صوبے کے خلاف سازشوں میں مصروف ہیں اور عمران خان وزارت عظمی تک جلد از جلد پہنچنے کی خواہش میں آئین تک کو روندنے پر تُلے ہوئے ہیں،سردار بابک نے کہا کہ ملک کسی غیر یقینی صورتحال کا متحمل نہیں ہو سکتا ، جمہوریت کی بقاء کیلئے سب کو مدبرانہ سوچ اپنانا ہو گی ، انہوں نے کہا کہ اے این پی نے ہمیشہ جمہوریت کی بقا کیلئے قربانی دی ہے اور کبھی کسی غیر آئینی قوت کے سامنے سر نہیں جھکایا اور اب بھی ہم جمہوریت کے ساتھ ہیں جمہوریت ڈی ریل ہوئی تو ملک و قوم دونوں کو نقصان ہوگا، انہوں نے کہا کہ ہم نے ہزار تحفظات کے باوجود جمہوریت کی بقاء کیلئے خیبر پختونخوا حکومت کا مینڈیٹ تسلیم کیا لہٰذا خیبر پختونخوا سمیت منتخب ہونے والی حکومتوں کو اپنی مدت پوری کرنی چاہئے ،انہوں نے کہا کہ عمران خان کے ہاتھ میں وزارت عظمی کی لکیر ہی نہیں ہے ، انہوں نے کہا کہ سیاستدان صورتحال کا ادراک کریں اور غیرضروری خواہشات کی تکمیل کیلئے آئین کو پاؤں تلے روندنے سے باز رہیں ۔

[suffusion-the-author]

[suffusion-the-author display='description']