Aug 072017
 

 جوڑ توڑ کے ماہر نئی کشتی کی خاطر سیاسی شہید بننے کی کوشش کر رہے ہیں، میاں افتخار حسین

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل میاں افتخار حسین نے وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کے بیان پر حیرت اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ خود کو جوڑ توڑ کا ماہر کہنے والے پرویز خٹک آج تک کتنی ہی پارٹیاں خود تبدیل کر چکے ہیں اور ہر نئی آنے والی کشتی سے سوار ہوتے ہیں،باچا خان مرکز میں مختلف اضلاع سے آئے ہوئے پارٹی وفود سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ بات وہ شخص کر سکتا ہے جس کی اپنی کوئی سیاسی جماعت ہو موصوف تو ہرآنے والی حکومت کا حصہ ہوتے ہیں اور 2018کے الیکشن کے بعد نجانے وہ کس سیاسی جماعت میں ہونگے، انہوں نے کہا کہ فرعونیت کے اس رویے سے پرویز خٹک کیا ثابت کرنا چاہتے ہیں اور اس بیان سے کس کو کیا پیغام دیا جا رہا ہے، ؟ انہوں نے کہا کہ دراصل یہ بیان اشتعال دلانے کی ایک کوشش ہے اور اب وہ اس حکومت کا کسی طرح بھی خاتمہ کرا کے سیاسی شہید بننے کی کوشش کر رہے ہیں جو کسی صورت کامیاب نہیں ہو سکتی،انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت صوبے کی ناکام ترین حکومت ہے اور اس ناکامی کا کریڈٹ وزیر اعلیٰ کو جاتا ہے جن پر ان کی اپنی حکومت کے وزراء اور ارکان اسمبلی کرپشن کے الزامات لگا رہے ہیں تاہم ان کے خلاف احتسابی ادارے ابھی تک حرکت میں نہیں آئے ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ موجودہ صوبائی اسمبلی کے پاس اکثریت نہیں اور وہ سہاروں کے بل پر حکومت قائم کئے ہوئے ہے،انہوں نے کہا کہ صوبے میں ہونے والی کرپشن کے میگا سکینڈل ،خیبر لیکس اور اس سمیت کئی دیگر ایشو غور طلب ہیں ، قومی وطن پارٹی کو انہوں نے نکال باہر کیا جبکہ جماعت اسلامی کے ساتھ بھی حکومتی معاملات درست سمت میں نہیں جا رہے جس کی بنیادی وجہ صوبے میں ہونے والی میگا کرپشن ہے، انہوں نے کہا کہ اخلاقیات کا پیمانہ دیکھنا ہوگا ۔انہوں نے کہا کہ اے این پی جمہوری پارٹی ہے اور جمہوریت کی بقاء کیلئے ہمیشہ قربانی دیتی آئی ہے جس کی وضح مثال حالیہ سپریم کورٹ کا فیصلہ ہے جسے جمہوریت کی خاطر تحفظات کے باوجود قبول کیا گیا ہے،انہوں نے تمام پارٹی کارکنوں سے کہا کہ آنے والے الیکشن کیلئے بھرپور تیاری کریں کیونکہ آنے والا دور ایک بار بھر اے این پی کا ہے۔

[suffusion-the-author]

[suffusion-the-author display='description']