رخصتی کے وقت بی آر ٹی کمیشن اور سیاسی رشوت کیلئے شروع کی گئی

 Feb-2018  Comments Off on رخصتی کے وقت بی آر ٹی کمیشن اور سیاسی رشوت کیلئے شروع کی گئی
Feb 282018
 

رخصتی کے وقت بی آر ٹی کمیشن اور سیاسی رشوت کیلئے شروع کی گئی ، حاجی غلام احمد بلور

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سینئر نائب صدر حاجی غلام احمد بلور نے کہا ہے کہ پختونوں کے حقوق کے تحفظ کیلئے ہر ممکن اقدامات کئے جائیں گے اور گزشتہ ساڑھے چار سال میں پختونخوا کے جو حقوق غصب کئے گئے انہیں واپس حاصل کیا جائے گا ،اپنی رہائش گاہ پر حلقہ کے عوام سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ موجودہ دور ہم سے اتحاد و اتفاق کا متقاضی ہے اور ہم سب کو مل کر صوبے کے حقوق کا دفاع کرنا ہو گا، صوبے کی مجموعی صورتحال کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کپتان وزارت عظمی کی دوڑ میں لگے ہیں انہیں خیبر پختونخوا سے کوئی سروکار نہیں ، تخت اسلام آباد کیلئے پنجاب کا ووٹ بنک چاہئے اس لئے پختونوں کے مینڈیٹ کی توہین کی گئی ،حاجی غلام احمد بلور نے کہا کہ ہمیں پنجاب کی خدمت پر اعتراض نہیں البتہ اس کام کیلئے پختونوں کے وسائل اور ان کا کندھا استعمال نہ کیا جائے ، انہوں نے کہا کہ حکومت کی مدت مکمل ہونے کو ہے اور حال میں جو منصوبے شروع کئے جا رہے ہیں ان کے مستقبل کی کسی کو فکر نہیں تمام منصوبے ادھورے چھوڑے جا رہے ہیں تاہم اے این پی آئندہ الیکشن میں کامیابی کے بعد یہ تمام منصوبے مکمل کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ پشاور میٹرو کو در اصل سیاسی رشوت کی خاطر ساڑھے چار سال تک روکے رکھا گیا اور اب کمیشن اور سیاسی رشوت کی خاطر پشاور کا حلیہ بگاڑ دیا گیا ہے ،انہوں نے کہا کہ صوبے کے پرانے ڈھانچہ کو ہلاکررکھ دیاہے جس سے عوام مزید مسائل اورمشکلات سے دوچارہوچکے ہیں، انہوں نے کہا کہ حکومت چارسال تک سوئی رہی آخری مہینوں میں میٹرو اور فلائی اوور کے منصوبے شروع کرنا عوام کے آنکھوں میں دھول جھونکے کے مترادف ہے، انہوں نے کہاکہ صوبے میں کرپشن مافیا کا راج ہے ہم کسی پر الزامات نہیں لگاتے لیکن آج مخالفین اور پی ٹی آئی کے اپنے وزراء اور اراکین اسمبلی ایک دوسرے کی کمیشن اور لوٹ مار کی کہانیاں سامنے لا رہے ہیں ،انہوں نے کہا کہ صوبے کا خزانہ لوٹ لیا گیا ہے اور ترقیاتی منصوبوں کے نام پر بیرونی دنیا سے اتنے قرضے لئے گئے ہیں کہ اب انہیں چکانے کیلئے آنے والی حکومتوں کو بھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا ۔

نوشہرہ میں اسفندیار ولی خان کا جلسہ آئندہ الیکشن کیلئے گیم جینجر ثابت ہوگا، میاں افتخار حسین

 Feb-2018  Comments Off on نوشہرہ میں اسفندیار ولی خان کا جلسہ آئندہ الیکشن کیلئے گیم جینجر ثابت ہوگا، میاں افتخار حسین
Feb 282018
 

نوشہرہ میں اسفندیار ولی خان کا جلسہ آئندہ الیکشن کیلئے گیم جینجر ثابت ہوگا، میاں افتخار حسین

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدراسفندیار ولی خان 18مارچ کو نوشہرہ میں عظیم الشان جلسہ عام سے خطاب کریں گے، اس بات کا اعلان پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے پی کے12حکیم آباد میں جلسہ کی تیاریوں کے حوالے سے منعقدہ تنظیمی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر مختلف کمیٹیاں بھی تشکیل دی گئی اور حلقوں کی سطح پر تنظیموں اور نامزد امیدواروں کو جلسے کی تیاری کے حوالے سے ذمہ داریاں سونپی گئی۔ میاں افتخار حسین نے اپنے خطاب میں کہا کہ آئندہ عام انتخابات سے قبل نوشہرہ میں ہونے والا جلسہ عام اہم سنگ میل اور آئندہ الیکشن میں کامیابی کے حوالے سے گیم چینجر ثابت ہوگا۔ انہوں نے تمام تنظیموں کو ہدایت کی کہ وہ اپنی تمام توانائیاں بروئے کار لائیں اور جلسے میں عوام کی بھرپور شرکت یقینی بنانے کے لیے اقدامات کریں۔ انہوں نے کہا کہ عوام موجودہ حکومت کی جھوٹ اور فریب کی پالیسیوں سے متنفر ہو چکے ہیں جس کی واضح مثال احتساب کمیشن سمیت تمام شعبوں میں حکومت کی ناکامی ہے۔ انہوں نے کہا کہ احتساب کمیشن جھوٹ کا پلندہ تھا جسے صرف مخالفین کی پگڑیاں اچھالنے کے لیے استعمال کیا گیا اور اپنی کرپشن بچانے کی خاطر اسے غیر فعال کر دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ صوبے کا تعلیمی نظام این جی اوز کے حوالے کر دیا گیا ، پرائیویٹ تعلیمی ادارے تباہ کر کے سرکاری سکولوں کو پرائیویٹ بنا دیا گیااسی طرح صحت کا شعبہ نوشیروان برکی کے ہاتھوں یرغمال ہے جبکہ سیکرٹری ہیلتھ اور دیگر اہم افسران بے یاروں مددگار خاموش تماشائی بنے رہے۔ انہوں نے کہا کہ پولیس کو غیر سیاسی کہنے والے پرویز خٹک آئے روز صوبے کی پولیس کو گالیاں دے رہے ہیں حالانکہ محکمہ پولیس میں سیاست اس حد تک سرایت کر چکی ہے کہ سارا نظام پی ٹی آئی کی خواہش پر چل رہا ہے، پولیس مفلوج ہو چکی ہے، حکومت تمام بڑے واقعات کی ایف آئی آر کاٹنے سے روکنے کے لیے پولیس پر دباؤ ڈالتی رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ انتہائی افسوس کی بات ہے کہ بلین سونامی ٹری میں جو کرپشن کی گئی اس کی صوبے کی تاریخ میں مثال نہیں ملتی۔ تین روپے کا پودا 20روپے میں خریدا گیا اور ایک ارب 77کروڑ میں وہ خود رودرخت بھی شامل ہیں جو صدیوں سے خیبر پختونخوا میں اگتے رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ تین سو ارب سے زائد کا قرضہ لے کر حکومت نے صوبے کو مالیاتی اداروں کے پاس گروی رکھ دیا ہے اور بی آر ٹی کو صرف اس لیے آخری مہینوں میں شروع کیاتاکہ آئندہ الیکشن سے قبل اسے سیاسی رشوت کے طور پر پیش کیا جا سکے اور اس کے ساتھ کمیشن اور کرپشن پر ہاتھ صاف کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ بی آر ٹی جیسے منصوبوں کی پشاور کے شہریوں کو ضرورت نہیں تھی اور یہی وجہ ہے کہ اب عوام موجودہ حکمرانوں سے نفرت کرتے ہیں اور آنے والے الیکشن میں اے این پی پر اپنے بھرپور اعتماد کا اظہار کریں گے۔ قبل ازیں میاں افتخار حسین نے نوشہرہ میں انجمن پٹواریان و قانون گویان کے احتجاجی کیمپ کا دورہ کیا اور ان سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے اپنے بھرپور تعاون کا یقین دلایا۔ مظاہرین سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ سرکاری ملازمین کے جائز مطالبات تسلیم کیے جائیں، پروموشن اور مستقلی ملازمین کا حق ہے جس سے حکومت راہِ فراراختیار نہیں کر سکتی۔ انہوں نے کہا کہ ہم پوائنٹ سکورنگ نہیں چاہتے، حکومت ملازمین کے مسائل تسلیم کر لیں تو ہم اس کا شکریہ ادا کریں گے۔ میاں افتخار حسین نے احتجاج کرنے والے مظاہرین پر بھی زور دیا کہ وہ اراضی کے ریکارڈ اور پیمائش کے حوالے سے غریب عوام کو درپیش مشکلات میں ان کی رہنمائی کریں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے ملک میں اراضی کے ریکارڈ کے حوالے سے غریب لوگوں کو زیادہ مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور انجمن پٹواریان و قانون گویان ایک ایسا طبقہ ہے جن کے ہاتھوں میں انتہائی اہم ذمہ داریاں ہیں اور عوام کی رہنمائی کرنے اور ان کی مشکلات کم کرانے میں اہم کردار ادا کر سکتے ہیں۔ بعدازاں مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے ہارون الرشید کی لکھی گئی کتاب کی تقریب رونمائی میں بھی شرکت کی اور اس عظیم کاوش پر انہیں خراج تحسین پیش کیا۔ انہوں نے کہا کہ شاعری اور نثر دونوں شعبوں میں کام کرنے والے لوگ انتہائی باہمت ہیں اور پشتو زبان کے تمام لکھاریوں کو چاہئے کہ وہ میدان میں آئیں اور اپنی عظیم تحریروں کے ذریعے نوجوان نسل کی رہنمائی کریں۔

باطل نظریات کو شکست دینے کیلئے باچا خان بابا کی سوچ اور فکر پر عمل پیرا ہونے کی ضرورت ہے

 Feb-2018  Comments Off on باطل نظریات کو شکست دینے کیلئے باچا خان بابا کی سوچ اور فکر پر عمل پیرا ہونے کی ضرورت ہے
Feb 272018
 

باطل نظریات کو شکست دینے کیلئے باچا خان بابا کی سوچ اور فکر پر عمل پیرا ہونے کی ضرورت ہے،میاں افتخار حسین

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ باطل نظریات کو شکست دینے کیلئے باچا خان بابا کی سوچ اور فکر پر عمل پیرا ہونے کی ضرورت ہے اور باچاخان بابا اور ولی خان بابا کے تصورات اور خیالات کو نئی نسل تک منتقل کرنا ہی درحقیقت جامع باچا خانی ہے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے پی کے 12ناٹال اکبر پورہ میں ایک نشست سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، قبل ازیں علاقے سے دو گھرانوں نے اپنے درجنوں ساتھیوں سمیت اے این پی میں شمولیت کا اعلان کیا ، میاں افتخار حسین نے شامل ہونے والوں کوسرخ ٹوپیاں پہنائیں اورانہیں باچا خان کے قافلے میں شمولیت پر مبارکباد پیش کی ،اپنے خطاب میں انہوں نے باچا خان اور ولی خان بابا کی زندگی اور جدوجہد پرسیر حاصل گفتگو کرتے ہوئے تفصیلی روشنی ڈالی اور کہا کہ موجودہ دور ہم سے باچا خانی کا متقاضی ہے اور باطل نظریات کو شکست دینے کیلئے باچا خان بابا کی سوچ اور فکر پر عمل پیرا ہونے کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ فخر افغان باچا خان حقیقی معنوں میں عدم تشدد کے داعی تھے،باچا خان اور ولی خان پختون قوم کے عظیم سپوت تھے جنہوں نے پختون قوم میں سیاسی شعور بیدار کرنے میں اہم رول پلے کیا‘ باچا خان جنگ آزادی میں پختون قوم کی نمائندگی کی اور ولی خان نے پاکستان بننے کے بعد ملک میں جمہوریت کی بالادستی ‘ پارلیمنٹ کی حیثیت کو تسلیم کروانے‘ 1973 کا آئین پاس کروانے اور صوبائی خودمختاری یلئے ایک لمبے عرصے تک اپنی بھرپور جدوجہد جاری رکھی۔ باچا خان بابا جیسی عظیم ہستی نے اپنی زندگی مخلوق خدا کی خدمت کیلئے وقف کئے رکھی ،میاں افتخار حسین نے کہا کہ انہوں نے دنیا بھر میں پختونوں کو ایک شناخت دی اور ان کا نام روشن کیا جبکہ اپنی سوچ فکر اور عدم تشدد کے فلسفے کے ذریعے برداشت کا علم دیا ، باچا خان نے قوم کو غلامی سے آزاد کرانے کیلئے جدوجہد کی اور آزادی کیلئے ضرورتِ علم کو محسوس کرتے ہوئے بے شمار سکول قائم کئے ،اور قلم کے فلسفے کے ذریعے انگریز کو نکال کر قوم کو آزادی دلائی ، انہوں نے کہا کہ باچا خان بابا وہ شخصیت تھے جنہوں نے پختونوں کو ایک ایسی جِلا بخشی کہ وہ اتحاد و اتفاق کی مثال بنے اور یہی وجہ تھی کہ انتہائی کم عرصہ میں ان کے پیروکاروں کی تعداد میں اضافہ ہوتا گیا، انہوں نے کہا کہ باچا خان نے عدم تشدد کا فلسفہ اسی لئے دیا کہ ماضی میں پختونوں کی تاریخ میں لڑائی جھگڑوں اور بزور طاقت حکمرانی کی جاتی رہی لہٰذا باچا خان نے قوم میں شعور اجاگر کرنے کیلئے قلم کا سہارا لیا ،اور اس مقصد کیلئے انہوں نے بے شمار سکول قائم کئے ، اسی طرح جو اقتصادی نظام باچا خان نے دیا اس میں سماجی انصاف بنیادی نکتہ تھا تاکہ سب کو برابری کی بنیاد پر حق ملنا چاہئے،انہوں نے کہا کہ آج کے دور میں باچا خان کی سوچ و فکر کی زیادہ ضرورت ہے اور ان کے بتائے ہوئے عدم تشدد کے فلسفے پر چل کر ہی امن قائم کیا جا سکتا ہے۔ فخر افغان باچا خان اور رہبر تحریک خان عبدالولی خان کے پیروکاروں نے تاریخ کے ہر دور میں جمہوریت کی بالادستی کی جنگ لڑی۔ آج تاریخ نے ثابت کر دیا ہے کہ فخر افغان بابا باچا خان اور ولی خان بابا کی فکر ہی دراصل ملک دوستی اور عوام دوستی پر مبنی تھی اور ان کی سوچ کی جتنی ضرورت آج ہے پہلے کبھی نہیں تھی ،انہوں نے باچا خان بابا اور ولی خان بابا کے سیاسی عہد پر روشنی ڈالی اور کہا کہ پختون سرزمین کو باچا خان بابا کی صورت میں ایک ایسے عظیم شخص کو جنم دینے کا اعزاز حاسل ہے جو درویش بھی اور اپنے زمانے کے دانا بھی تھے جنہوں نے اپنی سرزمین سے حد درجہ محبت کی اور اس کی پاداش میں تمام عمر تکالیف اور اذیتیں برداشت کیں۔اُنہوں نے کہا کہ باچا خان بابا نے اپنی زندگی کے آخری وقت تک امن ، عدم تشدد ، آزادی ، انصاف اور رواداری کی عظیم اقدار کو فروغ دینے کا عہد برقرار رکھ کر ایک عظیم انسان ہونے کا ثبوت دیا۔

خدائی خدمتگار عبداللہ بختانی کی غائبانہ نماز جنازہ باچا خان مرکز میں ادا کر دی گئی

 Feb-2018  Comments Off on خدائی خدمتگار عبداللہ بختانی کی غائبانہ نماز جنازہ باچا خان مرکز میں ادا کر دی گئی
Feb 262018
 

خدائی خدمتگار عبداللہ بختانی کی غائبانہ نماز جنازہ باچا خان مرکز میں ادا کر دی گئی

عوامی نیشنل پارٹی کے زیر اہتمام پشتو کے نامور ادیب ، محقق ، معروف عالم ، خدائی خدمت گار اور باچا خان کے حقیقی پیروکار عبداللہ بختانی کی غائبانہ نماز جنازہ باچا خان مرکز میں ادا کی گئی ، اس موقع پر افغان قونصل جنرل محمد معین مرستیال نے اپنے وفد کے ہمراہ خصوصی طور پر شرکت کی ، نماز جنازہ میں اے این پی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین سمیت دیگر قائدین ، پختون ایس ایف اور نیشنل یوتھ آرگنائزیشن کے نمائندوں نے شرکت کی ، نماز جنازہ کی ادائیگی کے بعد مرحوم خدائی خدمت گار عبداللہ بختانی کیلئے فاتحہ خوانی کی گئی ، بعد ازاں ایک تعزیتی ریفرنس کا انعقاد بھی کیا گیا جس میں افغان قونصل جنرل سمیت اے این پی کے سیکرٹری امور خارجہ بشیر احمد مٹہ اور منتظم باچا خان مرکز انجینئر اعجاز یوسفزئی ،ڈاکٹر فضل رحیم مروت ، شمس بونیرے، خان زمان کاکڑنے خطاب کیا ،مقررین نے خدائی خدمت گار عبداللہ بختانی کی زندگی پر روشنی ڈالی اور ادب و تحقیق کے حوالے سے ان کی کاوشوں کو خراج عقیدت پیش کیا ،مقررین نے اس بات پر زور دیا کہ مرحوم بختانی باچا خان کے سچے پیروکار تھے جو مرتے دم تک باچا خان کے نظریات پر سختی سے کاربند رہے، انہوں نے نوجوان نسل پر بھی زور دیا کہ وہ اپنے اسلاف کو مشعل راہ بنائیں۔

 

پشاور میٹرو وزیر اعلیٰ کی کمیشن کا بڑا ذریعہ ہے ، تکمیل حکمرانوں کے بس کی بات نہیں

 Feb-2018  Comments Off on پشاور میٹرو وزیر اعلیٰ کی کمیشن کا بڑا ذریعہ ہے ، تکمیل حکمرانوں کے بس کی بات نہیں
Feb 262018
 

پشاور میٹرو وزیر اعلیٰ کی کمیشن کا بڑا ذریعہ ہے ، تکمیل حکمرانوں کے بس کی بات نہیں ،میاں افتخار حسین

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا کہ پشاور میٹرو صرف کمیشن کیلئے شروع کی گئی ہے اور اس کی تکمیل کسی صورت حکمرانوں کے بس کی بات نہیں ، خیبر پختونخوا کے عوام کو صرف دھوکہ دیا گیا ، پرویز خٹک کی طرح اقتدار حاصل آسان ہے تاہم کوئی بھی با ضمیر شخص ایسا کر نہیں سکتا، ان خٰالات کا اظہار انہوں نے پبی خان شیر گڑھی میں شمولیتی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، اس موقع پر سینکڑوں افراد نے دیگر جماعتوں سے مستعفی ہو کر اے این پی میں شمولیت کا اعلان کیا ، میاں افتخار حسین نے پارٹی میں شامل ہونے والوں کو سرخ ٹوپیاں پہنائیں اور نہیں مبارکباد پیش کی ، اپنے خطاب میں انہوں نے کہا کہ پنجاب میں میٹرو کی مخالفت اور اسے جنگلہ بس کہنے والوں کو اپنی کمیشن کیلئے بی آر ٹی کا خیال آ گیا ، تعلیم اور صحت کے شعبوں میں بد انتظامی کے بعد شہر کو کھنڈرات میں تبدیل کر دیا گیا ہے ،انہوں نے کہا کہ اے این پی نے اپنے دور میں تعلیمی شعبہ میں جو اصلاحات کیں وہ صوبے کی تاریخ کا حصہ ہیں اور دہشت گردی کا مقابلہ کرنے کے باوجود خزانہ بھرا ہوا چھوڑا تھا جبکہ موجودہ حکومت نے صرف ساڑھے چار سال میں خزانہ لوٹ کر صوبے کو 300ارب روپے سے زائد کا مقروض کر دیا ہے ، انہوں نے افسوس کا اظہار کیا کہ حکمرانوں نے صوبے کے قیمتی وسائل اور ذرائع آمدن کو بے دردی سے لوٹا اور آنے والی حکومت کو قرضے اتارنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا، انہوں نے کہا کہ اے این پی نے ڈٹ کو نہ صرف دہشت گردی کا مقابلہ کیا بلکہ اس جنگ میں اپنے سینکڑوں ساتھیوں کی قربانی بھی دی ، انہوں نے کہا کہ اس کے برعکس حکومت نے دہشتگردوں کی مالی معاونت کی اور ان کیلءئے دفتر کا مطالبہ کرتے رہے جبکہ اے ڈی پی میں ان کیلئے رقم بھی رکھی گئی ہے ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ کپتان پنجاب میں خیبر پختونخوا پولیس کی تعریفیں کرتے ہیں اور ان کے وزیر اعلیٰ پولیس پر تنقید کے نشتر چلاتے رہے ہیں حالانکہ یہ وہی پولیس ہے جس نے عوام کی جان و مال کی حفاظت کیلئے دہشتگردوں کا راستہ روکا اور صوبے کو تباہی سے بچانے کیلئے دہشتگردوں کے سامنے سیسہ پلائی دیوار بن کر ڈٹی رہی ، میاں افتخار حسین نے گزشتہ دنوں چینی سفیر کے ساتھ ہونے والی ملاقات کا بھی ذکر کیا اور کہا کہ ہمسایہ دوست ملکل نے اے این پی کی قربانیوں کا اعتراف کیا ہے اور اس بات کی یقین دہانی کرائی ہے کہ پختونوں کو مغربی اکنامک کوریڈور میں ان کا جائز حق ضرور ملے گا ، انہوں نے کہا کہ صوبے کے عوام موجودہ حکومت کی غیر سنجیدہ اور ناقص پالیسیوں سے نالاں ہو چکے ہیں اور آئندہ الیکشن میں اے این پی پر بھرپور اعتماد کریں گے ۔

باچاخان اور ولی خان کی شمع روشن رکھنے میں ارباب مجیب الرحمان کا کردار ناقابل فراموش ہے

 Feb-2018  Comments Off on باچاخان اور ولی خان کی شمع روشن رکھنے میں ارباب مجیب الرحمان کا کردار ناقابل فراموش ہے
Feb 242018
 

باچاخان اور ولی خان کی شمع روشن رکھنے میں ارباب مجیب الرحمان کا کردار ناقابل فراموش ہے ، میاں افتخار حسین

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ ارباب مجیب الرحمان مرحوم کی قومی تحریک کی خدمت اوراس کی کامیابی کے لیے کی جانے والی کاوشیں تاریخ میں تادیر یاد رکھی جائیں گی۔ تہکال میں مرحوم کی نماز جنازہ اور تدفین کے بعد اپنے تاثرات بیان کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ارباب مجیب الرحمان مرحوم ایک محنتی، پرخلوص اور صابر شخص تھے اور خدائی خدمتگار گھرانے سے تعلق رکھتے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ارباب عبدالغفور خلیل، ارباب سکندر خان خلیل اور ارباب سیف الرحمان خلیل جیسی شخصیات کے گھرانے سے تعلق رکھنے کی وجہ سے ارباب مجیب الرحمان میں خدائی خدمتگاری کوٹ کوٹ کر بھری تھی۔ انہوں نے کہا کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کو اللہ تعالیٰ نے اولاد نرینہ سے بھی نوازا تھا تاہم رسول اللہ ﷺ کی صاحبزادیوں سے نسل آگے چلی۔ اسی طرح حضرت عیسیٰ ؑ جنہیں اللہ تعالیٰ کے بعد مردوں میں جان ڈالنے اور اندھوں کو بصارت عطاء کرنے کا معجزہ حاصل تھا وہ بھی اس دنیا فانی سے کوچ کر گئے۔ ہم سب نے ایک دن اسی راستے پر جاناہے۔انہوں نے کہا کہ مرحوم ارباب مجیب الرحمان کو اللہ تعالیٰ نے نرینہ اولاد سے محروم رکھا البتہ ان کی صاحبزادیوں ہماری بچیاں ہیں اور امید کرتے ہیں کہ وہ اپنے والد کے نقش قدم پر چلتے ہوئے اور ان کی نظریاتی سوچ پر عمل کرتے ہوئے مرحوم کی جہتوں کو آگے بڑھائیں گی۔ میاں افتخار حسین نے کہا کہ میں ذاتی طور پر زمانہ طالبعلمی سے مرحوم کے ساتھ رہا اور ان کی دوراندیشی اور محنت سے بہت کچھ سیکھنے کو ملا۔ انہوں نے کہا کہ ارباب مجیب الرحمان مرحوم نے جمہوریت کے لیے بہت قربانیاں دیں اور کئی سال پابند سلاسل رہے۔ باچاخان اور ولی خان کی شمع کو روشن رکھنے میں ارباب مجیب الرحمان مرحوم کا کردار انمٹ ہے لہٰذا اب ان کی وفات کے بعد ہمارا فرض بنتا ہے کہ اس شمع کو اسفندیار ولی خان کی قیادت میں روشن رکھنے کے لیے حتیٰ الوسع کوششیں جاری رکھیں گے۔

ارباب مجیب الرحمان اے این پی کاگرانقدر سرمایہ تھے، امیر حیدر خان ہوتی

 Feb-2018  Comments Off on ارباب مجیب الرحمان اے این پی کاگرانقدر سرمایہ تھے، امیر حیدر خان ہوتی
Feb 242018
 

ارباب مجیب الرحمان اے این پی کاگرانقدر سرمایہ تھے، امیر حیدر خان ہوتی

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر امیر حیدر خان ہوتی اور جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے پارٹی کے سینئر رہنما ارباب مجیب الرحمان خان خلیل کے انتقال پر دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اے این پی ایک مدبر اور باصلاحیت سیاستدان سے محروم ہو گئی ہے ، اپنے تعزیتی بیان میں پارتی رہنماؤں نے کہا کہ ارباب مجیب الرحمان مرحوم پارٹی کیلئے ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے تھے اور ان کی وفات سے پیدا ہونے والا خلاء شاید ہی کبھی پُر ہو سکے گا، انہوں نے غمزدہ خاندان سے دلی تعزیت اور ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اے این پی ان کے غم میں برابر کی شریک ہے اور یہ ہم سب کا مشترکہ دکھ ہے ،انہوں نے کہا کہ قومی تحریک میں مرحوم کا کردار کسی سے ڈھکا چھپا نہیں ہے اور جمہوریت کی بقاء کیلئے جو قربانیاں انہوں نے دی ہیں وہ تاریخ کا ایک روشن باب ہیں ، انہوں نے مرحوم کی مغفرت اور پسماندگان کے صبر جمیل کیلئے بھی دعا کی اور کہا کہ ارباب مجیب الرحمان اے این پی کاگرانقدر سرمایہ تھے اور ان کی پارٹی کیلئے خدمات ناقابل فراموش ہیں ۔