نقیب اللہ محسود کی ہلاکت پختونوں کے خلاف سازش کی کڑی ہے، امیر حیدر خان ہوتی

 Jan-2018  Comments Off on نقیب اللہ محسود کی ہلاکت پختونوں کے خلاف سازش کی کڑی ہے، امیر حیدر خان ہوتی
Jan 202018
 

نقیب اللہ محسود کی ہلاکت پختونوں کے خلاف سازش کی کڑی ہے، امیر حیدر خان ہوتی

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر امیرحیدرخان ہوتی ایم این اے نے کہا ہے کہ ننھی اسماء کے واقعہ سے انسانیت کانپ اٹھی ہے، ملزمان کو گرفتار کرکے کیفر کردار تک پہنچایاجائے ،نقیب اللہ محسود پختون قوم کے شہید ہیں،چیف جسٹس کے ازخود نوٹس کا خیرمقدم کرتے ہیں، پختونوں نے امن کی خاطر قربانیوں دیں دہشت گردی کے شکار پختونوں کو دہشت گردی کی بھینٹ چڑھا کر کیاپیغام دیاجارہاہے وہ عوامی نیشنل پارٹی کے ضلعی دفتر میں منعقدہ پارٹی اجلاس سے خطاب کررہے تھے جس سے ڈسٹرکٹ ناظم اور پارٹی کے ضلعی صدر حمایت اللہ مایار اورجنرل سیکرٹری حاجی لطیف الرحمان نے بھی خطاب کیا، اس موقع پرپارٹی کے صوبائی نائب صدر جاوید یوسفزئی ،رکن صوبائی اسمبلی حاجی احمدبہادر اور مختلف حلقوں کے نامزد امیدواران اسمبلی بھی موجودتھے، امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ اسماء واقعے کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے انہوں نے کہاکہ اے این پی اس افسوس ناک واقعے پر سیاست اورسیاسی سکورننگ نہیں کرناچاہتی لیکن اس قسم کا واقعہ جب قصور میں رونما ہوا تو چند سیاسی جماعتوں نے زمین آسمان ایک کردیئے لیکن جب خیبرپختونخوا میں ایسے واقعات پیش آئے توان کے تاثرات الگ تھے انہوں نے کہاکہ قصور واقعہ کے بعد وزیراعلیٰ پنجاب صبح پانچ بجے پہنچ جاتے ہیں لیکن ہمارے وزیراعلیٰ پانچ دن بعد متاثرہ خاندان کے پاس جاتے ہیں، امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ اس واقعے کے ملزمان کو گرفتارکیاجائے اے این پی اس حوالے سے پرامن احتجاج جاری رکھے گی انہوں نے کراچی میں نقیب اللہ محسود کی ہلاکت کے واقعے کو پختونوں کے خلاف سازش قراردیتے ہوئے کہاکہ نقیب اللہ محسود پختون قوم کا شہیدہے، سندھ سے ایسے واقعات کے پیش آنے سے پختونوں کو کیاپیغام دیاجارہاہے انہوں نے کہاکہ پختونوں نے امن کی خاطر اور دہشت گردی کے خلاف قربانیاں دی ہیں دہشت گردی کے شکار پختونوں کو دہشت گردی کے بھینٹ چڑھایاجارہاہے انہوں نے چیف جسٹس کی طرف سے واقعے کی ازخود نوٹس لینے کا خیر مقد م کرتے ہوئے کہاکہ ایسے واقعات کی روک تھام کے لئے تمام پارٹیوں کو مل کر لائحہ عمل طے کرناہوگا۔

آسما کے قاتلوں کو فرار کرانے کیلئے گرفتاری میں لیت و لعل سے کام لیا جا رہا ہے

 Jan-2018  Comments Off on آسما کے قاتلوں کو فرار کرانے کیلئے گرفتاری میں لیت و لعل سے کام لیا جا رہا ہے
Jan 192018
 

آسما کے قاتلوں کو فرار کرانے کیلئے گرفتاری میں لیت و لعل سے کام لیا جا رہا ہے، میاں افتخار حسین

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے متنبہ کیا ہے کہ مردان میں آسماء کے ساتھ درندگی کرنے والے مجرم کو گرفتار نہ کیا گیا تو ہم میدان میں ہونگے ، گرفتاری میں لیت و لعل شاید مجرم کو راہ فرار اختیار کرانے کیلئے لیا جا رہا ہے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے گوجر گڑھی مردان میں کمسن آسماء کے والدین سے اظہار تعزیت کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا ، ضلع ناظم مردان حمایت اللہ مایار بھی ان کے ہمراہ تھے ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ معصوم بچیوں کے ساتھ درندگی کے واقعات روز کا معمول بن چکے ہیں اور ان میں سے بیشتر واقعات رپورٹ بھی نہیں ہو رہے ، انہوں نے کہا کہ یہ مردان میں پانچواں واقعہ ہے لیکن حکومتی غفلت چھپانے کیلئے ان واقعات کو چھپایا جا رہا ہے، انہوں نے کہا کہ قانون سویا ہوا ہے اتنے دن گزرنے کے بعد بھی آسماء کے مجرم گرفتار نہیں ہو سکے جبکہ ایف آئی آر بھی نا مکمل ہے جبکہ میڈیکل رپورٹ سامنے آچکی ہے ، انہوں نے اس امر پر افسوس کا اظہار کیا کہ معاشرے میں شرم ، ھیا اور غیرت ختم ہوتی جا رہی ہے اور ضمیر مردہ ہو چکے ہیں، پی ٹی آئی والے قصور میں زینب کے واقعے پر سیاست چمکاتے رہے لیکن مردان میں کسی نے دلچسپی نہیں لی ، حکومت ناکام ہو چکی ہے اور اب ڈؤ آئی خان ، خوشمقام اور مردان کے واقعات کے بعد وزیر اعلیٰ کو فی الفور مستعفی ہو جا نا چاہئے ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ قوم کی بچیاں ہماری بچیاں ہیں اور ہم ان تمام بچیوں کے تحفط کیلئے خود میدان میں نکلے ہیں ، انہوں نے کہا کہ تمام عوام کی جان و مال کا تحفظ حکومت کی ذمہ داری ہے جسے حکمرانوں نے کبھی سنجیدہ نہیں لیا ، انہوں نے کہا کہ پولیس مجرم کو جلد از جلد گرفتار کرے اور عدالت سوموٹو ایکشن لے کر اس معاملے کی تحقیقات کرائے ، انہوں نے کہا کہ جس پر جرم ثابت ہو جائے اسے پھانسی پر لٹکایا جائے تاہم انہوں نے واضح کیا کہ اگر کوئی پولیس اہلکار ملزم کو بچانے کی کوشش کر رہا ہے تو اس کی سزا بھی پھانسی سے کم نہیں ہونی چاہئے۔

میرے خلاف کوئی بھی کرپشن ثابت ہو جائے تو سزا کے لیے تیار ہوں،اسفندیار ولی خان

 Jan-2018  Comments Off on میرے خلاف کوئی بھی کرپشن ثابت ہو جائے تو سزا کے لیے تیار ہوں،اسفندیار ولی خان
Jan 192018
 

مرکزی صدر ریاض سعودی عرب میں

 ریاض سعودی عرب میں باچا خان اور ولی خان کی برسی تقریب سے خطاب

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے کہا ہے کہ فاٹا کو آئندہ الیکشن سے قبل صوبے میں ضم کر کے 2018کے انتخابات میں صوبائی اسمبلی میں نمائندگی دی جائے، قبائل کو صوبے میں ضم کرنے کے بعد بلوچستان کے پختونوں کی ایک وحدت بنائیں گے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے سعودی عرب کے شہر ریاض میں باچا خان اور ولی خان کی برسی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئےء کیا ، اے این پی سعودی عرب کے مرکزی صدر گل زمین خان اور دیگر رہنماؤں نے بھی تقریب سے خطاب کیا جبکہ پارٹی ورکروں کی بڑی تعداد نے تقریب میں شرکت کی ، اسفندیار ولی خان نے اپنے خطاب میں با چا خان اور ولی خان کی زندگی اور جدوجہد پر روشنی ڈالی اور انہیں شاندار الفاظ میں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ آج تاریخ کے ایک ایسے موڑ پر کھڑی ہے جہاں کوئی بھی ملک تشدد کی حمایت نہیں کرتا اور دنیا باچا خان بابا کے دیے ہوئے عدد تشدد کے فلسفے پر یقین رکھتی ہے۔ اور اب وقت آ گیا ہے کہ لوگوں کو باچا خان بابا کے فلسفہ سے مکمل آگاہی ہونی چاہئے کیونکہ امن کے قیام کیلئے اس کے علاوہ اب کوئی دوسرا راستہ نہیں ، انہوں نے کہا کہ آج تاریخ نے ثابت کر دیا ہے کہ فخر افغان باچا خان اور ولی خان بابا کی فکر ہی دراصل عدم تشدد، ملک دوستی اور عوام دوستی پر مبنی تھی اور ان کی سوچ کی جتنی ضرورت آج ہے پہلے کبھی نہیں تھی، انہوں نے کہا کہ باچا خان بابا کی عدم تشدد اور امن کے حوالے سے سوچ و فکر لوگوں میں شعور پیدار کر رہی ہے، اسفندیار ولی خان نے مزید کہا کہ آج ہمیں کرپٹ کہنے والے وزیراعلیٰ پرویز خٹک اپنے گریبان میں جھانکیں اور بتائیں کہ جس حکومت کو وہ کرپٹ کہتے ہیں اس میں وہ خود کیوں وزیر رہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے کرپشن کی ہوتی تو آج ہمارے ایم پی ایز، ایم این ایز اور وزراء جیلوں میں ہوتے لیکن ہمارے کسی ممبر کے خلاف کوئی چوری ثابت نہیں ہوئی جبکہ پرویز خٹک کے اپنے ممبران ان کے خلاف سلطانی گواہ بن چکے ہیں۔ انہوں نے خود کو احتساب کے لیے پیش کرتے ہوئے کہا کہ میرے خلاف کوئی بھی کرپشن ثابت ہو جائے تو میں سزا کے لیے تیار ہوں۔ اسفندیار ولی خان نے کہا کہ عمران خان کو صوبے کے عوام سے کوئی غرض نہیں انہیں وزارت عظمی کی جلدی ہے اور وہ اس جلدی کے عالم میں کچھ بھی کر گزرنے کو تیار ہیں ، انہوں نے کہا کہ یہ پہلا شخص ہے جو طلاق کے بعد اپنی بیوی سے حق مہر لیتا ہے ،انہوں نے کہا کہ اے این پی کے بغیر کوئی بھی جماعت پختونوں کے حقوق کا تحفظ نہیں کر سکتی۔ عوام آئندہ انتخابات میں اے این پی کو کامیاب کرکے اپنے ساتھ دھوکہ کرنے والوں کو مسترد کر دیں گے۔اسفندیار ولی خان نے کہا کہ این اے 4کے ضمنی الیکشن میں اے این پی کے پولنگ ایجنٹس کو پولنگ سٹیشنز میں داخل نہیں ہونے دیا گیا البتہ دھاندلی کے باوجود یہ بات خوش آئند ہے کہ پارٹی کے ووٹ بنک میں کافی اضافہ ہوا،انہوں نے کہا کہ 2018میں اگر شفاف اور غیر جانبدارانہ الیکشن ہوئے تو کوئی شک نہیں کہ اے این پی بھاری مینڈیت سے کامیابی حاصل کرے گی۔

 

اسفندیار ولی خان کا نامور کام نگار منو بھائی کے انتقال پر اظہار تعزیت

 Jan-2018  Comments Off on اسفندیار ولی خان کا نامور کام نگار منو بھائی کے انتقال پر اظہار تعزیت
Jan 192018
 

اسفندیار ولی خان کا نامور کام نگار منو بھائی کے انتقال پر اظہار تعزیت

مرحوم کی وفات سے ادب اور صحافت کا ایک درخشندہ باب بند ہو گیا ہے۔

عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے ملک کے نامور کالم نگار ، صحافی اور دانشور منو بھائی کے انتقال پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے ان کی مغفرت کیلئے دعا کی ہے، اپنے ایک تعزیتی بیان میں غمزدہ کاندان سے دلی تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مرحوم منو بھائی ادب اور صحافت کی تاریخ کا روشن ستارہ تھے اور ان کی وفات سے ادب اور صحافت کا ایک درخشندہ باب بند ہو گیا ہے ، اسفندیار ولی خان نے کہا کہ مرحوم ایک جرأت مند اور بیباک قلم کار تھے اور زندگی بھر جمہوریت اور ملکی استحکام کیلئے ادبی خدمات انجام دیتے رہے ، انہوں نے مرحوم کی مغفرت اور پسماندگان کے صبر جمیل کیلئے بھی دعا کی۔

بچیوں کے ساتھ درندگی کے واقعات پر حکمرانوں کا اقتدار میں رہنے کا جواز نہیں بنتا، میاں افتخار حسین

 Jan-2018  Comments Off on بچیوں کے ساتھ درندگی کے واقعات پر حکمرانوں کا اقتدار میں رہنے کا جواز نہیں بنتا، میاں افتخار حسین
Jan 192018
 

بچیوں کے ساتھ درندگی کے واقعات پر حکمرانوں کا اقتدار میں رہنے کا جواز نہیں بنتا، میاں افتخار حسین

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے پبی خوشمقام میں معصوم بچی کے ساتھ ہونے والے انسانیت سوز واقعے پر غم وغصہ کا اظہار کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ صوبائی حکومت اخلاقی جرأت کا مظاہرہ کرتے ہوئے فوری طور پر مستعفی ہو جائے ،کپتان قصور واقعے پر پنجاب حکومت سے استعفی مانگ رہے ہیں لیکن بد قسمتی سے ان کی اپنی صوبائی حکومت نے غریب عوام کو وحشی درندوں کے رحم و کرم پر چھوڑ رکھا ہے ،پبی کے علاقے خوشمقام میں زیادتی کا نشانہ بننے والی بچی کے غمزدہ والدین سے اظہار افسوس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اے این پی متاثرہ خاندان کے ساتھ ہے اور مجرم کو کیفر کردار تک پہنچانے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے،انہوں نے کہا کہ علاقے کے عوام داد کے مستحق ہیں جنہوں نے ملزم کو بروقت پکڑ کر پولیس کے حوالے کیا لہٰذ اب شفاف تحقیقات ہونی چاہئے اور اگر ملزم پر جرم ثابت ہو جائے تو اسے پھانسی پر لٹکایا جانا چاہئے ، انہوں نے اس موقع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ مثالی پولیس متاثرہ خاندان کے ساتھ ہی زیادتی کر رہی ہے جس سے بادی النظر میں تاثر ملتا ہے کہ یہ انسانیت سوز واقعات پولیس کی چھتری تلے ہو رہے ہیں ، انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ پرویز خٹک اور دیگر حکومتی شخصیات نے یہاں آنے کی زحمت گوارا نہیں کی جس پر انہیں شرم سے ڈوب مرنا چاہئے ، پی ٹی آئی صرف حکومت حکومت کھیلنے میں مصروف ہے اور عوام کی جان و مال کے تحفظ سے اسے کوئی سروکار نہیں ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ ہم نے قصور کا دورہ کیا اور زینب کے واقعے پر حکومتی ناکامی پر افسوس کا اظہار کیا اور کہا کہ پنجاب حکومت استعفیٰ دے ، اور اب اپنے ہی صوبے میں حکومتی بے حسی اور غیر سنجیدگی پر بھی اس حکومت سے استعفی کا مطالبہ کرتے ہیں ،انہوں نے اس امر پر افسوس کا اظہار کیا کہ ڈی آئی خان اور مردان کے بعد اب نوشہرہ کا واقعہ حکومتی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے اور ایسے حکمرانوں کاکسی صورت اقتدار میں رہنے کا جواز نہیں بنتا ، میاں افتخار حسین نے متاثرہ کاندان کو تسلی دیتے ہوئے کہا کہ اے این پی ان کی داد رسی کیلئے میدان میں کھڑی ہے اور اس وقت تک چین سے نہیں بیٹھیں گے جب تک ننھی مدیحہ کو انصاف ملنے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے۔

جمہوریت کے خلاف ہونے والی سازشوں کا ڈٹ کر مقابلہ کیا جائے گا، میاں افتخار حسین

 Jan-2018  Comments Off on جمہوریت کے خلاف ہونے والی سازشوں کا ڈٹ کر مقابلہ کیا جائے گا، میاں افتخار حسین
Jan 182018
 

جمہوریت کے خلاف ہونے والی سازشوں کا ڈٹ کر مقابلہ کیا جائے گا، میاں افتخار حسین

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ معاشرے میں بڑھتے ہوئے عدم برداشت کے مادے کا تدارک کرنے اور اس کی روک تھام کیلئے سب کو اپنی ذمہ داریاں احسن طریقے سے نبھانا ہونگی اور خصوصا نوجوان نسل کو اپنا بھرپور کردار ادا کرنے کیلئے میدان میں نکلنا ہو گا ، باچا خان نے عدم تشدد اور برداشت کا جو فلسفہ دیا وہی نوجوان نسل کی بقا کا فلسفہ ہے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے باچا خان اور ولی خان کی برسی کی تیاریوں کے حوالے سے خٹک نامہ پی کے12کریمیہ ہاوًس حاجی افتخار کے حجرے میں منعقدہ تمام یونین کونسلوں کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا، اس موقع پر ضلعی صدر ملک جمعہ خان سمیت دیگر مقامی رہنماوًں نے بھی خطاب کیا اور برسی کی تیاریوں کے حوالے سے مختلف تجاویز زیر غور آئیں ، میاں افتخار نے کہا کہ اے این پی واحد جماعت ہے جو پختونوں کی بقا اور ان کے حقوق کے لیے ہمیشہ سے لڑتی آئی ہے اور مستقبل میں بھی پختونوںکے حقوق کیلئے اپنی جدوجہد جاری رکھے گی، انہوں نے کہا کہ ہم نے ہمیشہ جمہوریت کی بقاءکی جنگ لڑی اور کبھی کسی غیر جمہوری قوت کا ساتھ نہیں دیا ، انہوں نے کہا کہ خان عبدالولی خان جمہوریت کے حقیقی علمبردار تھے اور اگر ان کا نام جمہوریت سے نکال دیا جا ئے تو باقی کچھ باقی نہیں رہتا ، جمہوریت کے خلاف کسی سازش کو کامیاب نہیں ہونے دیںگے۔ملکی حالات کے تناظر میں اس وقت پاکستان کے لیے جمہوریت نہایت ضروری ہے۔ اے این پی جمہوری پارٹی ہے اور کسی غیر جمہوری اقدام کے نتیجے میں جمہوریت کو خطرہ لاحق ہوتا ہے تو اے این پی اس عمل کی بھرپورمزاحمت کرے گی۔میاں افتخار حسین نے پارٹی عہدیداروں اور تمام کارکنوں پر زور دیا کہ وہ 28جنوری کو ہونے والی برسی تقریب میں بھرپور شرکت یقینی بنائیں ،انہوں نے حال ہی میں کمسن بچیوں کے ساتھ زیادتی اور قتل کے واقعات میں اضافے پر افسوس کا اظہار کیا اور کہا کہ یہ واقعات معاشرے میں بے حسی کے عکاس ہیں ، تاہم مرکزی وصوبائی حکومت اس حوالے سے کوئی بھی اقدام کرنے میں ناکام رہی ہے ، انہوں نے کہا کہ پنجاب اور خیبر پختونخوا کی حکومتیں بچوں سمیت عوام کو تحفظ فراہم کرنے میں ناکام ہو چکی ہیں مردان میں بربریت کا نشانہ بننے والی آسما کی پوسٹ مارٹم رپورٹ آنے کے بعد بھی تاحال ھکومتی مشینری حرکت میں نہیں آئی ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ صوبے میں جنگل کا قانون رائج ہے اور حکومت نام کی کوئی چیز نہیں جس کی وجہ سے عوام عدم تحفظ کا شکا رہیں، انہوں نے کہا کہ عوام تبدیلی کے نام پر دھوکہ دہی کی حقیقت جان چکے ہیں اور اب وہ اے این پی کو ہی اپنے حقوق کا ضامن تصور کرتے ہیں ، انہوں نے کہا کہ عوام کے بہتر مستقبل کیلئے باچا خانی سے بہتر کوئی راستہ نہیں اور آئندہ الیکشن میں اے این پی کامیاب ہو کر صوبے میں حقیقی تبدیلی لائے گی۔انہوں نے کہا کہ نوشہرہ سے برسی تقریب میں شرکت ایک ریکارڈ ہو گی اور عوام بھرپور طریقے سے شرکت کر کے ثابت کریں کہ ان کی بقاءباچا خان بابا کی سوچ و فکر اور افکار پر عمل پیرا ہونے میں ہے، میاں افتخار حسین نے کہا کہ ہم ہر قیمت پر امن لائیں گے البتہ صوبائی حکومت اور مرکزی حکومت دہشتگردوں کے ساتھ ملی ہوئی ہیں جس کی وجہ سے عارضی امن ہے اور یہی چیز اس خطے کے لیے نہایت خطرناک ہے،انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت نیشنل ایکشن پلان کے باوجود پنجاب میں موجود 72کالعدم تنظیموں کے خلاف کاروائی نہیں کر رہی جو کہ اس بات کاثبوت ہے کہ انہیں عوام کی نہیں صرف اپنی ہی فکر ہے۔

کمسن بچیوں کے ساتھ زیادتی اور قتل جیسے واقعات بیمار معاشرے کا عکاس ہیں، ہارون بشیر بلور

 Jan-2018  Comments Off on کمسن بچیوں کے ساتھ زیادتی اور قتل جیسے واقعات بیمار معاشرے کا عکاس ہیں، ہارون بشیر بلور
Jan 182018
 

کمسن بچیوں کے ساتھ زیادتی اور قتل جیسے واقعات بیمار معاشرے کا عکاس ہیں، ہارون بشیر بلور

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی ترجمان ہارون بشیر بلور نے مردان میں معصوم کمسن آسما سے جنسی زیادتی اور قتل کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ پختون معاشرے میں اس قسم کے واقعات افسوسناک ہیں ،صوبائی حکومت کی جانب سے مکمل خاموشی سے ظاہر ہوتا ہے کہ یہ انسانیت سوز واقعات حکومت کیلئے کوئی اہمیت نہیں رکھتے ،اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ قصور میں ہونے والے زینب کا واقعے پر ہر آنکھ پُرنم ہے تاہم آسماء بھی ہماری بچی تھی اور دونوں کو انصاف ملنا ضروری ہے ، انہوں نے کہا کہ ملک میں کمسن بچیوں کے ساتھ زیادتی اور قتل جیسے واقعات بیمار معاشرے کا عکاس ہیں ، صوبائی حکومت مردان میں ہونے والے واقعے پر خاموش تماشائی بنی بیٹھی ہے اور پوسٹ مارٹم رپورٹ آنے کے بعد بھی حکومتی ایوانوں میں کوئی جنبش نظر نہ آئی ، ہارون بشیر بلور نے کہا کہ مجرموں کو جلد از جلد گرفتا کر کے قرار واقعی سزا دی جائے تو مستقبل میں بچوں کی زندگیاں بچائی جا سکتی ہیں ، انہوں نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ پی ٹی آئی کا تمام تر بیانیہ تاحال زینب تک محدود ہے،جو اس بات کی جانب واضح اشارہ ہے کہ عمران خان کو اصل لگاؤ پنجاب کے ووٹ بنک سے ہے ، انہوں نے کہا عدالت آسما کیس میں بھی سوموٹو ایکشن لے اور ملزمان کو انصاف کے کٹہرے میں لا کر متاثرین کو انصاف دیا جائے۔