بلدیاتی نمائندوں کو عوام کی نظروں سے گرانے کی مذموم کوشش کامیاب نہیں ہونے دینگے۔ سردار حسین بابک

 May-2016, PRs-2016  Comments Off on بلدیاتی نمائندوں کو عوام کی نظروں سے گرانے کی مذموم کوشش کامیاب نہیں ہونے دینگے۔ سردار حسین بابک
May 312016
 

مورخہ : 31.5.2016 بروز منگل

بلدیاتی نمائندوں کو عوام کی نظروں سے گرانے کی مذموم کوشش کامیاب نہیں ہونے دینگے۔ سردار حسین بابک
صوبائی حکومت مالی اور انتظامی بدحالی کی وجہ سے بوکھلاہٹ کا شکار ہے۔
عوام اور خصوصاً پختون تبدیلی سرکار کی اصلیت جان چکے ہیں اور ان کی اُلٹی گنتی شروع ہو چکی ہے۔
اے این پی بلدیاتی نمائندوں کے احتجاج میں برابر کی شریک ہے،صوبے میں حکومت نام کی کوئی چیز نظر نہیں آ رہی۔

پشاور ( پریس ریلیز) اے این پی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ صوبے کے طول و عرض میں بلدیاتی نمائندے اختیارات اور فنڈز کے حصول کیلئے سراپا احتجاج ہیں اور صوبائی حکومت نچلی سطح پر اختیارات کی منتقلی کے دعوے کرتی نہیں تھکتی۔ اُنہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت عوامی مینیڈیٹ کو تسلیم کر تے ہوئے صوبائی اسمبلی سے پاس شدہ قانون کی پاسداری کرتے ہوئے صوبے کے بلدیاتی نمائندوں کو فوری طور پر 43 ارب روپیہ منتقل کر دیں۔ اُنہوں نے کہا کہ صوبائی وزیر بلدیات اسمبلی فلور پر مبالغہ آرائی سے کام لیکر بلدیاتی نمائندوں کو فنڈز اور اختیارات کی منتقلی کے مسلسل دعوے کر رہے ہیں لیکن زمینی حقائق اس کے بالکل برعکس ہیں۔ صوبے کی تمام پارٹیوں اور آزاد ارکان بلدیات پچھلے دس ماہ سے مسلسل احتجاج کر رہے۔ اُنہوں نے کہا کہ بلدیاتی نمائندے عوام کے منتخب نمائندے ہیں اور عوام کے مینڈیٹ کی توہین کسی صورت برداشت نہیں کرینگے۔ اُنہوں نے کہا کہ اے این پی بلدیاتی نمائندوں کے احتجاج میں برابر کی شریک ہے اور بلدیاتی نمائندوں کو اپنے حقوق کیلئے منظم اور مسلسل انداز میں پر امن احتجاج جاری رکھنا چاہیے۔ اُنہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت مالی اور انتظامی بدحالی کی وجہ سے بوکھلاہٹ کا شکار ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت کے ناروا روئیے اور غیر جمہوری طریقہ کار کی وجہ سے صوبے کے ہر طبقہ فکر کے لوگ حکومت کے خلاف سراپا احتجاج اور سڑکوں پر آئے ہیں لیکن صوبے میں حکومت نام کی کوئی چیز نظر نہیں آ رہی۔ اُنہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نے صوبے کو مسائل اور مشکلات کے دلدل میں پھنسا دیا ہے اور یہی وجہ ہے کہ دن بہ دن عوام تبدیلی سرکار سے نالاں اور بدظن ہوتے جا رہے ہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ بلدیاتی نظام اور بلدیاتی نمائندوں کو عوام کی نظروں سے گرانے کی موجودہ حکومت کی مذموم کوشش کامیاب نہیں ہونے دینگے۔ اُنہوں نے کہا کہ تحریک انصاف عوامی مسائل سے بے خبر اور حکومتی اُمور چلانے سے نا بلد ہونے کی وجہ سے سارا نزلہ عوام پر گرتا جا رہا ہے۔
اُنہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نے تین سال لوگوں پر الزامات لگانا ، پگڑیاں اُچھالنا اور نان ایشوز میں وقت ضائع کر دیا ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ عوام اور خصوصاً پختون تبدیلی سرکار کی اصلیت جان چکے ہیں اور ان کی اُلٹی گنتی شروع ہو چکی ہے اور اپنی ڈوبتی ہوئی کشتی بچانے میں بری طرح ناکام ہوں گے۔

بجٹ میں کی جانے والی کٹوتی حکومتی ناکامی کا واضح ثبوت ہے، سید جعفر شاہ

 May-2016, PRs-2016  Comments Off on بجٹ میں کی جانے والی کٹوتی حکومتی ناکامی کا واضح ثبوت ہے، سید جعفر شاہ
May 312016
 

مورخہ 31مئی2016ء بروز منگل

بجٹ میں کی جانے والی کٹوتی حکومتی ناکامی کا واضح ثبوت ہے، سید جعفر شاہ
گزشتہ تین سال میں بجٹ کا کثیر حصہ خرچ نہیں کیا جا سکا،سرکاری محکمے زبوں حالی کا شکار ہیں
کالام اور چکدرہ تا مدین سڑک کی تعمیر کے وعدے تین سال سے ایفا نہیں ہو سکے
عمران خان اور نواز شریف نے دورہ سوات کے دوران عوام کو مایوس کیا ہے،

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے رکن اسمبلی اور ڈپٹی پارلیمانی لیڈر سیدجعفر شاہ نے کہا ہے کہ گزشتہ تین سال میں بجٹ کا کثیر حصہ خرچ نہیں کیا جا سکا اور اس سال بجٹ میں کی جانے والی کٹوتی حکومتی ناکامی کا واضح ثبوت ہے ،اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ صوبہ خیبر پختونخوا دہشت گردی اور قدرتی آفات سے شدید متاثر ہوا جبکہ انفراسٹرکچر بھی تباہ ہو چکا ہے ، سید جعفر شاہ نے کہا کہ ھکومت کی جانب سے بحالی اور ترقی کا عمل انتہائی سست روی کا شکار رہا اور حکومت کا یہ رویہ متاثرین کے زخموں پر نمک پاشی کے مترادف ہے ، انہوں نے کہا کہ سرکاری محکموں کی کارکردگی ناقص ہے اور تمام محکمے سیاسی مداخلت کی بنا پر زبوں حالی کا شکار ہیں،انہوں نے کہا کہ صحت کا انصاف اور تعلیم سب کیلئے ‘‘ کے دعوے صرف کاغذوں تک محدود رہے جبکہ عملی طور پر سینکڑوں سکول بند ہو چکے ہیں ،اور سرکاری ہسپتالوں میں غریب مریضوں کیلئے سہولیات تک ختم کر دی گئی ہیں، انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت نے صوبہ خیبر پختونخوا کے عوام سے منہ موڑ رکھا ہے،سوات اور صوبے کے دوسرے علاقوں میں وفاقی حکومت کی کارکردگی نہ ہونے کے برابر ہے جبکہ کالام اور چکدرہ تا مدین سڑک کی تعمیر کے وعدے تین سال سے ایفا نہیں ہو سکے ،انہوں نے کہا کہ عمران خان اور نواز شریف نے دورہ سوات کے دوران عوام کو مایوس کیا ہے،
سید جعفر شاہ نے کہا کہ صوبے میں گڈ گورننس کا فقدان ہے سیاسی قیادت پانامہ لیکس اور خیبر لیکس کی زد میں ہے اور کود کو پاک صاف کرنے کی مہم میں لگے ہوئے ہیں انہوں نے کہا کہ ملاکنڈ میں کسٹم ایکٹ کے خاتمے کا نوٹیفیکیشن نہ ہونا حکومتی دوغلے پن کا واضح ثبوت ہے ، انہوں نے کہا کہ صوبے کے حالات بد سے بد تر ہوتے جا رہے ہیں،جس کی وجہ سے عوام میں سخت مایوسی پائی جاتی ہے۔

جماعت اسلامی وفاق کو پیش کردہ نکات پر خیبر پختونخوا میں عملدرآمد کرے،ہارون بشیر بلور

 May-2016, PRs-2016  Comments Off on جماعت اسلامی وفاق کو پیش کردہ نکات پر خیبر پختونخوا میں عملدرآمد کرے،ہارون بشیر بلور
May 312016
 

مورخہ 31مئی2016ء بروز منگل

جماعت اسلامی وفاق کو پیش کردہ نکات پر خیبر پختونخوا میں عملدرآمد کرے،ہارون بشیر بلور
صوبے میں جماعت اسلامی خود حکومت کا حصہ ہے ، عوام کو اشیائے ضروریہ سستے داموں فراہم کرنے کیلئے کیا اقدامات کئے گئے ہیں
ماہ صیام کی آمد سے قبل ذخیرہ اندوز اور گرانفروشوں نے انت مچا رکھی ہے لیکن انہیں کنٹرول کرنے والا کوئی نہیں
بجلی اور گیس کا سوئچ وفاق کے ہاتھ میں ہے ،مرکزی حکومت ماہ صیام اور شدید گرمی میں صوبے کے عوام کی حالت پر رحم کرے

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی سیکرٹری اطلاعات ہارون بشیر بلور نے جماعت اسلامی کی جانب سے رمضان المبارک کیلئے حکومت کو پیش کردہ 18نکات پر حیرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان میں سے کتنے نکات پر خیبر پختونخوا میں عمل درآمد ہو سکے گا، بعض اخبارات میں شائع ہونے والی خبر پر تبصرہ کرتے ہوئے ہارون بشیر بلور نے کہا کہ پنجاب میں ان نکات پر عمل درآمد کیلئے وفاقی حکومت کو مطالبات پیش کئے گئے ہیں جبکہ خیبر پختونخوا میں جماعت اسلامی خود حکومت کا حصہ ہے ،اور وہ بتائے کہ رمضان میں عوام کو اشیائے ضروریہ سستے داموں فراہم کرنے کیلئے کیا اقدامات کئے گئے ہیں انہوں نے کہا کہ ماہ صیام کی آمد سے قبل ذخیرہ اندوز اور گرانفروشوں نے انت مچا رکھی ہے لیکن انہیں کنٹرول کرنے والا کوئی نہیں ،انہوں نے کہا کہ اسی طرح فحاشی پر مبنی بل بورڈز پشاور اور دیگر اضلاع میں بھی ہیں ان کو ہٹانے کیلئے کیا قدم اٹھایا جائے گا،تاہم صوبائی ترجمان نے کہا کہ بجلی اور گیس کا سوئچ وفاق کے ہاتھ میں ہے اور مرکزی حکومت کو چاہئے کہ ماہ صیام اور شدید گرمی میں صوبے کے عوام کی حالت پر رحم کرے اور بجلی و گیس کی بلا تعطل فراہمی یقینی بنانے کیلئے اقدامات کرے،انہوں نے کہا نے کہا کہ مذہب، پاکستان اور تبدیلی کے نام اور نعروں پر پشتونوں اور صوبے کے استحصال کے فارمولے نا کام ہو چکے ہیں اور عوام کو ان نعروں و حربوں کے ذریعے بے وقوف نہیں بنایا جا سکتا ، انہوں نے کہا کہ صوبے کے جنگ زدہ اور سادہ لوح لوگوں کو مختلف ادوار میں مذہب، پاکستان اور تبدیلی کے نام پر ورغلاتے ہوئے ان کے حقوق پر ڈاکے ڈالے گئے اور ان طریقوں سے نہ صرف یہ کہ عوام کا سیاسی اور اقتصادی استحصال کیا گیا بلکہ صوبے کے اجتماعی حقوق پر سودے بازی بھی کی گئی ، انہوں نے کہا کہ اصلی جنگ پشتونوں کے حقوق کی ہے جبکہ بعض قوتیں اسلام کے نام پر اسلام آباد اور بعض تبدیلی کے نام پر تخت لاہور پر سیاسی قبضہ کرنے کی پالیسیوں پر گامزن ہیں،انہوں نے کہا کہ تاریخی شواہد اس بات کے گواہ ہیں کہ اس صوبے کے حقوق اور مفادات کی جنگ ہر دور میں اے این پی نے ہی لڑی ہے ہم نے اپنے پانچ سالہ دور اقتدار میں صوبے میں بے مثال ترقیاتی منصوبوں کا نہ صرف یہ کہ جال بچھایا بلکہ صوبے کے حقوق کو آئینی تحفظ بھی فراہم کیا تاہم موجودہ نا اہل اور ریموت کنٹرول حکومت نے مصلحت، بارگیننگ اور ادارہ جاتی کرپشن سے ہماری جدوجہد اور کامیابیوں پر پانی پھیر دیا ہے اور اس کے باعث صوبے کے مفادات کو سنگین خطرات کا سامنا ہے۔

سیکورٹی اہلکار دہشت گردوں کے راستے کی بڑی رکاوٹ ہیں ، امیر حیدر خان ہوتی

 May-2016, PRs-2016  Comments Off on سیکورٹی اہلکار دہشت گردوں کے راستے کی بڑی رکاوٹ ہیں ، امیر حیدر خان ہوتی
May 312016
 

مورخہ 31مئی2016ء بروز منگل

سیکورٹی اہلکار دہشت گردوں کے راستے کی بڑی رکاوٹ ہیں ، امیر حیدر خان ہوتی
دہشت گردی کے بڑھتے ہوئے واقعات کے باوجود نیشنل ایکشن پلان پر کوئی عملدرآمد نہیں ہو رہا
نہتے اور معصوم انسانوں کی جانیں لینے والے دہشتگرد کسی طور انسان کہلانے کے لائق نہیں،
حکومت دہشت گردی کے ناسور کو جڑ سے ختم کرنے کیلئے ٹھوس اور سنجیدہ اقدامات کرے،

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر امیر حیدر خان ہوتی نے مہمند ایجنسی میں بم دھماکے میں ایف سی اہلکار کی شہادت پر دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے ،اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ آئے روز سیکورٹی اہلکاروں پر ہونے والے حملوں کے باعث ان اہلکاروں کا مورال گر رہا ہے اور عوام میں مایوسی پھیل رہی ہے کیونکہ وہ یہ سوچنے پر مجبور ہو گئے ہیں کہ اگر ان کی حفاظت پر ما مور سیکورٹی اہلکار خود محفوط نہیں تو پھر ان کی حفاظت کون کرے گا، تاہم اگر حکومت وقت ان کے ہاتھ مضبوط کرے اور ان کی حفاطت کیلئے مناسب اقدامات کرے تو وہ پہلے سے زیادہ مستعدی کے ساتھ اپنے فرائض انجام دے سکتے ہیں، انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے باعث ہونے والے بھاری جانی نقصانات کے باوجود ان واقعات پر حکومت کی عدم توجہی معنی خیز ہے ، انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا میں دہشت گردی کے بڑھتے ہوئے واقعات کے باوجود نیشنل ایکشن پلان پر کوئی عملدرآمد نہیں ہو رہا جس کی وجہ سے مستقبل میں بڑی تباہی کے امکانات نظر آ رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ سیکورٹی اہلکاروں کو صرف اس لئے ٹارگٹ کیا جا رہا ہے کہ وہ دہشت گردوں کے راستے کی بڑی رکاوٹ ہیں۔
صوبائی صدر نے مردان میں ہونے والے خودکش دھماکے میں متعدد افراد کے زخمی ہونے پر بھی افسوس کا اظہار کیا اور کہا کہ نہتے اور معصوم انسانوں کی جانیں والے دہشتگرد کسی طور انسان کہلانے کے لائق نہیں اور ان کے مکروہ چہرے بے نقاب ہو چکے ہیں ، انہوں نے کہا کہ دہشت گرد بوکھلاہٹ کے عالم میں ایسی مذموم کاروائیاں کر رہے ہیں تاہم حکومت کو چاہئے کہ انسانیت سوز کاروائیوں میں ملوث عناصر کی گرفتاری اور دہشت گردی کے ناسور کو جڑ سے ختم کرنے کیلئے ٹھوس اور سنجیدہ اقدامات کرے اور عوام کی جان و مال کی حفاظت کو یقینی بنائے ، انہوں نے غمزدہ خاندانوں سے اظہار ہمدردی کرتے ہوئے شہداء کی مغفرت اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کیلئے بھی دعا کی ۔

پشتون تاریخ کو ارادتاً مسخ کیا جا رہا ہے۔ میاں افتخار حسین

 May-2016, PRs-2016  Comments Off on پشتون تاریخ کو ارادتاً مسخ کیا جا رہا ہے۔ میاں افتخار حسین
May 312016
 

مورخہ : 31.5.2016 بروز منگل

پشتون تاریخ کو ارادتاً مسخ کیا جا رہا ہے۔ میاں افتخار حسین
آج پاکستانی معاشرے میں برداشت اور رواداری کو فروغ دینے کی ضرورت ہے۔ حاجی محمد عدیل
بازار کلاں کی یاد میں منعقدہ تقریب سے عوامی نیشنل پارٹی کے رہنماؤں کا خطاب

پشاور ( پریس ریلیز) زندہ قومیں اپنے شہیدوں کی یادیں نسلوں تک زندہ رکھتی ہیں کیونکہ ان شہداء نے اپنی مٹی اور قوم کی خاطر جانوں کا نذرانہ دیا ہوتا ہے۔ باچا خان بابا اور ولی خان بابا کے قافلے کے سپاہی اس دھرتی اور تاریخ کے امین کا کردار نبھاتے رہیں گے۔ ان خیالات کا اظہار عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل میاں افتخار حسین نے اے این پی سٹی ڈسٹرکٹ پشاور کے زیر اہتمام یوم شہدائے بازار کلاں کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سینئر رہنما حاجی محمد عدیل، اے این پی سٹی ڈسٹرکٹ پشاور کے صدر ملک غلام مصطفی اور جنرل سیکرٹری سرتاج خان بھی موجودتھے۔ اے این پی کے رہنماؤں نے یادگار پر پھول چڑھائے اور دُعا کی۔
میاں افتخار حسین نے کہا جنگ آزادی کے ان شہداء کو ہمیشہ کی طرح خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے آج ہم یہاں جمع ہوئے ہیں۔ ان شہداء کی قربانیوں کی وجہ سے آج ہم آزادی کی سانسیں لے رہے ہیں،لیکن بدقسمتی سے اس ملک میں دہشت گردی کی وجہ سے قربانیوں کا سلسلہ ابھی تک جاری ہے اور عوامی نیشنل پارٹی کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ جنگ آزادی کی جنگ ہو یا ملک کی بقاء اور سلامتی کا تحفظ ہو ، ہمیشہ اے این پی کے ورکروں نے بے پناہ قربانیاں دی ہیں۔
اُنہوں نے کہا کہ ایسی صورت میں جب ہمارے ہیروز کو ولن کے روپ میں پیش کیا جا رہا ہے اور پختون دُشمنوں کو ہیروز کے طور پر ہماری ذہنوں پر مسلط کرنے کی سعی کی جا رہی ہے۔اس قوم کے ہر فرد کا فرض ہے کہ وہ تاریخ کو مسخ کرنے کی غرض سے کی جانے والی تمام کوششوں سے آگاہ رہیں۔ اے این پی کے مرکزی سیکرٹری جنرل نے پختون سردار کالو خان کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ مغل تاریخی طور پر پشتون دُشمن اور تاریخی خائن رہے ہیں۔مگر موجودہ حکمرانوں نے درسی کتابوں میں اُنہیں ہیروز کی حیثیت سے پیش کر کے خود تاریخی خیانت کا ارتکاب کیا ہے۔ اور اس پر مستزاد یہ کہ پختون ہیرو ملک کالو خان جس نے مغلوں کے خلاف 79 جنگیں لڑ کر مغلوں کی ناک میں دم کیے رکھا اور ساری جنگیں جیت کر یہ ثابت کر دیا تھا کہ وہی پختون قوم کے ہیرو ہیں ان کو انہی درسی کتابوں میں ایک ڈاکو کے روپ میں پیش کر کے حکمرانوں نے پختون دُشمنی کا ثبوت دیا ہے۔
میاں افتخار حسین نے مزید کہا کہ پختون قوم کو ان کی تاریخ کو اراتاً مسخ کرنے کی کوششوں سے آگاہ رہنا چاہیے اور باچا خان اور ولی خان کی تحریک کے سپاہی ان مذموم عزائم کا ڈٹ کر مقابلہ کرینگے۔
اس موقع پر عوامی نیشنل پارٹی کے سینئر رہنما حاجی محمد عدیل نے اپنے خطاب میں کہا کہ بازار کلاں کے واقع میں ان کے والد مرحوم عبدالجلیل خود شریک تھے جہاں فائرنگ میں 40 سے زیادہ جانیں چلی گئیں۔ حاجی عدیل نے کہا کہ اس خطے کی مشترکہ آزادی کیلئے مسلمان ، سکھ اور ہندو ؤں نے اپنے خون کا نذرانہ پیش کیا ہے لیکن آج معاشرہ فرقہ ورانہ عصیبت کا شکار ہو کر گروہوں میں تقسیم ہو گیا ہے۔ بازار کلاں شہداء کو عقیدت پیش کرنے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ اس معاشرے میں باہمی برداشت اور رواداری کو فروغ دیا جائے۔

عوامی نیشنل پارٹی کی صوبائی کابینہ کا اجلاس یکم جون کو طلب کر لیا گیا

 May-2016, PRs-2016  Comments Off on عوامی نیشنل پارٹی کی صوبائی کابینہ کا اجلاس یکم جون کو طلب کر لیا گیا
May 302016
 

مورخہ 30مئی2016ء بروز پیر

عوامی نیشنل پارٹی کی صوبائی کابینہ کا اجلاس یکم جون کو طلب کر لیا گیا۔

پشاور ( پ ر ) اے این پی کے صوبائی صدر امیر حیدر خان ہوتی نے پارٹی کی صوبائی کابینہ کا اجلاس یکم جون 2016 بروز بدھ صبح ۱۱ بجے باچا خان مرکز پشاور میں طلب کر لیا ہے ، اجلاس میں انکوائری کمیٹیوں کی سفارشات سمیت تنظیمی امور اور موجودہ سیاسی صورتحال پر تفصیلی بحث کی جائیگی، صوبائی صدر نے کابینہ کے تمام ارکان کو اجلاس میں اپنی شرکت بروقت یقینی بنانے کی ہدایت کی ہے۔

شہدائے آزادی کی قربانیوں کے نتیجے میں ہم آزاد و خود مختار ملک میں جی رہے ہیں۔سردار حسین بابک

 May-2016, PRs-2016  Comments Off on شہدائے آزادی کی قربانیوں کے نتیجے میں ہم آزاد و خود مختار ملک میں جی رہے ہیں۔سردار حسین بابک
May 302016
 

مورخہ 30مئی2016ء بروز پیر

شہدائے آزادی کی قربانیوں کے نتیجے میں ہم آزاد و خود مختار ملک میں جی رہے ہیں۔سردار حسین بابک
بدقسمتی سے اس ملک میں دہشت گردی کی وجہ سے قربانیوں کا سلسلہ ابھی تک جاری ہے،
 شہداء کی قربانیوں کو مشعل راہ بنا کر ہم نے عوام کیلئے وہ حقوق حاصل کئے جس کا پہلے صرف تصور کیا جا سکتا تھا
شہدائے آزادی کے نقش قدم پر چلتے ہوئے آئندہ بھی اپنی جانیں نچھاور کرنے سے گریز نہیں کریں گے۔

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے جنگ آزادی کے شہداء کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان شہداء کی قربانیوں کی وجہ سے آج ہم آزاد اور خودمختار ملک میں جی رہے ہیں ،لیکن بدقسمتی سے اس ملک میں دہشت گردی کی وجہ سے قربانیوں کا سلسلہ ابھی تک جاری ہے اور عوامی نیشنل پارٹی کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ جنگ آزادی کی جنگ ہو یا ملک کی بقاء اور سلامتی کا تحفظ ہو ، ہمیشہ اے این پی کے ورکروں نے بے پناہ قربانیاں دی ہیں اور آئندہ بھی کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔شہداء بازار کلاں کی برسی کے موقع پر اپنے ایک بیان میں صوبائی جنرل سیکرٹری نے کہا کہ ان شہداء کی لازوال قربانیوں کو مشعل راہ بنا کر ہم نے اپنے عوام کیلئے وہ حقوق حاصل کئے جس کا پہلے صرف تصور ہی کیا جا سکتا تھا جن میں صوبے کا تاریخی نام، متفقہ این ایف سی ایوارڈ،پن بجلی منافع اور 18ویں ترمیم کی شکل میں مکمل صوبائی خود مختاری کا حصول شامل ہیں، انہوں نے کہا کہ بازار کلاں اور قصہ خوانی بازار میں پختونوں کے حقوق کیلئے پرامن مظاہرہ کرنے والے معصوم اور بے گناہ شہریوں کے قتل عام کے اندوہناک واقعات تاریخ کا سیاہ ترین باب بن چکے ہیں اور پختونوں کی ہر نسل ہر عہد میں اس کی مذمت کرتی رہے گی،انہوں نے کہا کہ 1930میں آج ہی کے روز بازار کلاں میں خدائی خدمتگاروں کے پر امن احتجاجی جلوس پر اچانک گولیوں کی بوچھاڑکردی گئی تھی جس کے نتیجے میں سینکڑوں خدائی خدمتگار شہید ہو گئے،انہوں نے کہا کہ ہم شہدائے آزادی کے نقش قدم پر چلتے ہوئے قوم کی بقاء اور سلامتی کیلئے آئندہ بھی اپنی جانیں نچھاور کرنے سے گریز نہیں کریں گے۔