اے پی ایس شہدا کے لواحقین کی ثمر ہارون بلور سے ملاقات

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کی صوبائی رکن صوبائی اسمبلی ثمر ہارون بلور نے کہا ہے کہ اے پی ایس کے شہید بچوں کا خون ہم پر قرض ہے اور سانحہ کے شہداء کے خون کا حق ادا کرنے کیلئے نیشنل ایکشن پلان پر من و عن عملدرآمد ضروری ہے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنی رہائشگاہ پر ملاقات کیلئے آنے والے اے پی ایس شہداء کے لواحقین اور والدین سے ملاقات کے دوران کیا، وفد کے ارکان نے اے پی ایس سانحہ اور اس میں پیشرفت میں تاخیری حربوں کے حوالے سے آگاہ کیا ، انہوں نے کہا کہ اندوہناک سانحہ کو چار سال گزرنے کے باوجود انصاف تک رسائی میں مشکلات کے باعث ہمارے زخم مندمل نہ ہو سکے ، شہید بچوں کے والدین نے حکومتی بے حسی کے حوالے سے بھی ثمر بلور کو آگاہ کیا ، ثمر بلور نے وفد کو یقین دہانی کرائی کہ سانحہ کی تحقیقات میں پیش رفت کے حوالے سے ہر ممکنہ فورم پر آواز اٹھائی جائے گی، انہوں نے کہا کہ میں خود اس سانحہ سے گزر چکی ہوں اس لئے غمزدہ ماؤں کے درد کو سمجھ سکتی ہوں،انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف ہم نے بھاری قیمت ادا کی ہے کاش ہم نے یہ قیمت ادا نہ کی ہوتی تاہم ان قربانیوں کے نتیجے میں سیاسی ، عسکری ، مذہبی قیادت سول سوسائٹی اور دیگر دہشت گردی کے خلاف 20نکاتی دستاویز پر متفق ہوئیں لیکن بد قسمتی سے اس دستاویز پر من و عن عمل درآمد نہ ہو سکا،، ثمر بلور نے مزید کہا کہ سانحہ اے پی ایس قومی المیہ ہونے کے ساتھ تجدید عہد کا بھی دن ہے، شہدا کے غمزدہ والدین سے دلی ہمدردی کا اظہارکرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ قوم نے دہشتگردی کیخلاف جنگ میں وہ قیمت ادا کی ہے جس کا کوئی تخمینہ نہیں لگایا جاسکتا، انہوں نے کہا کہ سانحہ اے پی ایس پشاورمیں بچھڑ جانیوالوں کی یاد ہمیشہ موجود رہے گی۔

 

Facebook Comments