یوسف رضا گیلانی کے معاملے میں حکومت نے انسانی حقوق کی پامالی کی، میاں افتخار حسین

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے پیپلزپارٹی کے سینئر رہنما اور سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کو نیب کی جانب سے ایئرپورٹ پر روکے جانے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت کا انتقامی چہرہ عیاں ہو چکا ہے،انہوں نے کہا کہ سابق وزیرِ اعظم سید یوسف رضا گیلانی اپنے دور حکومت میں بھی پیشیاں بھگتتے رہے ہیں اور جب انہیں وزارت عظمی سے ہٹایا توآئین و قانون کی خاطر انہوں نے عہدہ چھوڑنے کے بعد بھی ملک سے بھاگنے کی بجائے عدالت میں پیشیوں کو ترجیح دی جبکہ وہ مسلسل جھوٹے مقدمات کاسامنا کرتے ہوئے عدالت میں پیش ہوتے رہے ہیں, 
ورلڈ سمٹ میں شرکت سے متعلق نیب کو آگاہ کرنے کے باوجود سابق وزیرِ اعظم کو ائیرپورٹ پر روکنا پی ٹی آئی حکومت کی انتقامی سیاست کا بین ثبوت ہے، میاں افتخار حسین نے کہا کہ انسانی حقوق پامال کر کے نئے پاکستان کی بنیاد رکھنے کی جو کوشش ہو رہی ہے وہ ملک کی سلامتی کیلئے خطرناک ہے ، انہوں نے کہا کہ یوسف رضا گیلانی جیسے شخص کی طرف سے سمٹ کانفرنس میں پاکستان کی نمائندگی سے ملک کا وقار بلند ہو سکتا تھا لیکن حکومت نے ملکی عزت بھی داؤ پر لگا دی،اور یہ سب کچھ ارادتاً اور انتقاماً کیا جا رہا ہے ، انہوں نے کہا کہ سابق وزیر اعظم کی اس حوالے سے اہلیت زیادہ اہم ہے ، انہوں نے کہا کہ حکمران ہوش کے ناخن لیں اور سیاسی مخالفین کو انتقام کا نشانہ بنانے سے گریز کریں ، انہوں نے کہا کہ آج جو کچھ حکومت بو رہی ہے کل وہ اسے کاٹنا پڑے گا۔

Facebook Comments