پشاور بارش نے مسلط حکمرانوں پر لگائے گئے جوئے کا پول کھول دیا، ایمل ولی خان


پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی ڈپٹی جنرل سیکرٹری ایمل ولی خان نے پشاور میں گزشتہ روز کی بارش کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ صوبائی حکومت کی کارکردگی ایک بارش کے بعد ہی دھل کر سامنے آ گئی ہے ،سڑکیں ندی نالوں اور گلیاں نہروں کا منظر پیش کرنے لگیں ، اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ بارش نے نجی کمپنیوں کے بلا جواز جوئے کا پول بھی کھول دیا ہے اور عملہ مشینری سمیت غائب تھا ، انہوں نے کہا کہ اربوں روپے بی آر ٹی کی بھٹی میں جھونکنے والوں کو 120ارب روپے پشاور میں ڈرینج سسٹم پر خرچ کرنے چاہئیں تھے ،لیکن بدقسمتی سے کرپشن اور کمیشن مافیا تبدیلی سرکار نے اپنی تجوریاں بھرنے کی خاطر قوم کا مستقبل داؤ پر لگا دیا،ایمل ولی خان نے کہا کہ صوبے میں گونگے بہروں کی حکومت ہے جس کا خمیازہ عوام بھگت رہے ہیں ،انہوں نے کہا کہ انتخابات سے قبل بلند و بانگ دعوے کرنے والوں نے بیروزگاری اور مہنگائی میں مزید اضافہ کیا ہے جو اس بات کا ثبوت ہے کہ موجودہ حکمران کسی اور ہی ایجنڈے پر کام کررہے ہیں، ایمل ولی نے مزید کہا کہ صوبے میں گزشتہ پانچ سال تک حکومت کرنے والوں کو آج پھر آٹھ ماہ ہو چکے ہیں لیکن ان چھ برسوں میں نکاسی آب کا مسئلہ تک حل نہیں کیا جا سکا، مسلط حکمرانوں نے پشاور کو فراموش کر کے بیڈ گورننس کی منفرد مثال قائم کر دی ہے ، انہوں نے کہا کہ صرف چند گھنٹوں کی بارش نے بلند و بانگ دعوؤں کی قلعی کھول کر رکھ دی جبکہ غیر سنجیدہ منصوبہ بندی کا نشانہ عوام بنے رہے۔انہوں نے کہا کہ صوبے خصوصاً پشاور اور مضافات میں جاری بارشوں سے عوام کے جان و مال کو ممکنہ نقصانات اور مشکلات کے تناظر میں تمام متعلقہ محکموں کو الرٹ رہنے کی ضرورت ہے اور حکومت کو چاہئے کہ ممکنہ خطرات سے نمٹنے کیلئے ہنگامی بنیادوں پر کام کا آغاز کرے۔

Facebook Comments