صوبائی حکومت نے عوام کو ٹرک کی بتی کے پیچھے لگادیا ہے،ایمل ولی خان

پشاور (پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی ڈپٹی جنرل سیکرٹری نے صوبائی وزراء کی جانب سے بی آر ٹی پشاور کے جزوی افتتاح کی خبروں کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ صوبائی حکومت نے عوام کو ٹرک کی بتی کے پیچھے لگایا ہوا ہے۔ آئے روز دعووں نے پشاور کے باسیوں کی زندگی اجیرن بنائی ہوئی ہے۔ شہر کے نقشے کو تباہ و برباد کرنے کے علاوہ پی ٹی آئی حکومت پشاور کے شہریوں کو کچھ نہ دے سکی۔ انہوں نے مزید کہا کہ پرویزخٹک کے دورحکومت میں شروع کیا گیا منصوبہ بغیر کسی پلاننگ کی شروع کیا گیا جس کی گواہی گذشتہ روز اس ویڈیو کلپ میں بھی عیاں ہوچکی ہے جس میں خود وزیراعلیٰ کہہ رہا ہے کہ اس منصوبے کے لئے کوئی پلاننگ نہیں کی گئی تھی۔ آج احتساب کا نعرہ لگانے والوں کو بی آر ٹی میں کرپشن اور ذاتی فوائد کیوں نظر نہیں آرہے۔ اے این پی کے صوبائی ڈپٹی جنرل سیکرٹری نے مزید کہا کہ صوبائی حکومت کے غیرحقیقی بلندوبانگ دعووں نے پھولوں کے شہر کو دھول اور مٹی کا شہر بنادیا۔ پشاور بس ٹرانزٹ منصوبہ دنیا کا واحد ترقیاتی منصوبہ ہے جس نے بیک وقت صوبے کی معیشت، ماحول،گورننس اور صحت کا بیڑا غرق کردیا ہے لیکن یہاں بیٹھے وزراء اور فیصلہ سازوں سے کوئی پوچھ نہیں رہا۔انہوں نے کہا کہ پشاور بس ٹرانزٹ تحریک انصاف حکومت کی نااہلی، پشاور کے باسیوں کے لئے عذاب،پختونخوا کی معیشت کے لئے سفیدہاتھی اور ماحولیاتی آلودگی کی ایسی کہانی ہے جسے پشاور کے لوگ کبھی بھلانہیں سکیں گے۔ 49ارب روپے کی خطیر رقم سے شروع کیا گیا منصوبہ آج 80ارب سے تجاوز کرچکا ہے۔لاہور اور اسلام آباد کے منصوبوں کو جنگلہ کہنے والے کپتان نے بھی منصوبے اور پشاور کے شہریوں کی تکالیف پر چپ سادھ لی ہے۔انہوں نے نیب سے بھی مطالبہ کیا کہ بی آر ٹی منصوبہ میں کئے گئے کرپشن پر جلد سے جلد تحقیقات مکمل کریں اور عوام کے پیسے لوٹنے والوں کو قرارواقعی سزاد دی جائے۔اے این پی کے صوبائی ڈپٹی جنرل سیکرٹری نے مزید کہا کہ ایک منصوبے کے لئے صوبے کو قرضوں کے بوجھ تلے دبانے سے معیشت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا جاچکا ہے جس کا ازالہ دہائیوں میں بھی ممکن نہیں۔ عوام کے پیسوں سے عوام کی بھلائی نہیں بلکہ انہیں مزید ذلیل و خوار کیا جارہا ہے۔

Facebook Comments