بلاک شناختی کارڈز کا مسئلہ، اے این پی نے پختونخوا اسمبلی میں قرارداد جمع کرادی

بلاک شناختی کارڈز کا مسئلہ، اے این پی نے پختونخوا اسمبلی میں قرارداد جمع کرادی۔
ملک کے طول وعرض میں زیادہ ترپختونوں کے شناختی کارڈز بلاک ہیں۔
شہریوں کو معمولات زندگی اور حکومت سے متعلقہ امور میں دشواریاں پیش آرہی ہیں۔
مرکزی حکومت سنجیدگی سے بلاک شناختی کارڈز کا مسئلہ فوری طور پر حل کرنے پر توجہ دے۔
ملک کے مختلف حصوں میں قیام پذیر پختون گھرانوں کی مشکلات میں اضافہ ہوا ہے۔
وزارت داخلہ ٹھوس اقدامات اٹھاکر شہریوں کی مشکلات کا آزالہ کرے۔پارلیمانی لیڈر سردارحسین بابک

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی نے پختونخوا اسمبلی میں بلاک شناختی کارڈز کی بابت ایک قرارداد جمع کرائی ہے جس میں مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ عرضہ دراز سے پختونوں کے بلاک شناختی کارڈز ایک سنجیدہ مسئلہ بن گیا ہے اور عوام روزانہ کی بنیاد پر اس پر احتجاج کرنے پر مجبور ہیں لہذا مرکزی حکومت اور متعلقہ ادارے اس سلسلے میں فوری اور سنجیدہ اقدامات اٹھائیں۔
عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری اور پختونخوا اسمبلی میں اے این پی کے پارلیمانی لیڈر سردارحسین بابک کی طرف سے پیش کردہ قرارداد میں کہا گیا ہے کہ بلاک شناختی کارڈز کی وجہ سے عوام کو روزمرہ معمولات میں دشواریاں پیش آرہی ہیں اور حکومت سے متعلقہ سرکاری امور کی انجام دہی میں بھی بہت زیادہ مشکلات کا سامنا ہے۔ مرکزی حکومت کو سنجیدگی سے اس اہم اور ضروری نوعیت کے مسئلے کو فوری طور پر حل کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی سے تباہ حال پختون گھرانے ملک کے مختلف حصوں میں قیام پذیر ہیں لیکن شناختی کارڈ کے مسئلے نے ان کی مشکلات میں اضافہ کردیا ہے۔ انہوں نے وزارت داخلہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس مسئلے کے حل کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھائے اور پوری ذمہ داری کے ساتھ شہریوں کے مشکلات کا آزالہ کرنے میں دلچسپی لے۔ تاکہ ان کو ملک کے اندر اور باہر درپیش ضروریات میں حائل رکاوٹیں دور ہوں۔

Facebook Comments