وفاداریاں تبدیل کرنے والوں کی سیاست کا دور گزر چکا ہے، میاں افتخار حسین

وفاداریاں تبدیل کرنے والوں کی سیاست کا دور گزر چکا ہے، میاں افتخار حسین
ہمارے جلسوں میں رکاوٹ ڈالنے والے 25جولائی کے بعد عوام سے منہ چھپاتے پھریں گے۔
قوم کی خدمت ہمارا نصب العین ہے ،بلا رنگ و نسل اور بلا تفریق سب کی خدمت کریں گے ۔
پی کے65کے سابق رکن اسمبلی نے پانچ سال تک اسمبلی میں ایک لفظ تک نہیں بولا۔
حکومت میں آ کر اجمل خٹک پولی ٹیکنیک انسٹی ٹیوٹ واپس لے آئیں گے۔
لوگوں کو ورغلانے کیلئے وسائل کا بے دریغ استعمال کیا جا رہا ہے۔
بیورکریسی کی تقرریوں اور تبادلوں پر تاحال سوالیہ نشان ہے، خوشمقام میں انتخابی جلسہ عام سے خطاب 

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری اور پی کے65کے امیدوار میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ کرسی کی سیاست اور وفاداریاں تبدیل کرنے والوں کا دور گزر چکا ہے اور ہمارے جلسوں میں رکاوٹ ڈالنے والے 25جولائی کے بعد عوام سے منہ چھپاتے پھریں گے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے خوشمقام میں انتخابی جلسہ عام اور یو سی جبہ تر ، جبہ خشک سمیت مختلف علاقوں میں شمولیتی تقاریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، انہوں نے کہا کہ سابق وزیر اعلیٰ اے این پی پر الزامات لگاتے نہیں تھکتے حالانکہ انہوں نے جب سے سیاست میں قدم رکھا صرف کرسی کو ترجیح دی اور ہر حکومت کا حصہ رہے ، انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی میں کرپشن کی بنیاد رکھنے والے بھی پرویز خٹک ہیں اور ان کی گروپ بندیوں اور حرکات کی وجہ سے وجیہ الدین نے استعفیٰ دے دیا تھا ، انہوں نے خبر دار کیا کہ ہم باچا خان بابا کے عدم تشدد کے فلسفے پر کاربند ہیں لہٰذا نفرت پر مجبور نہ کیا جائے اور ہمارے جلسوں کو خراب کرنے کی بھونڈی کوششیں نہ کی جائیں ، انہوں نے کہا کہ ہم باچا خان کے سپاہی ہیں اور صرف عوامی مفاد اور انسانیت کی خدمت کے پیش نظر عملی سیاست کرتا ہوں ، انہوں نے کہا کہ قوم کی خدمت ہمارا نصب العین ہے اور یہی ہمارے ایمان کا حصہ ہے ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ ہم بلا رنگ و نسل اور بلا تفریق سب کی خدمت کریں گے ،انہوں نے کہا کہ زیادتی اتنی کی جائے جتنی کل کو خودبرداشت کر سکیں ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ میرے حلقہ سے گزشتہ الیکشن میں کامیاب ہونے والے پی ٹی آئی کے رکن اسمبلی نے نیا ریکارڈ قائم کیا ہے اور اسمبلی میں پانچ سال تک چپ کا روزہ رکھے رکھا اور کوئی لفظ تک نہ بولا انہوں نے کہا کہ حلقے کے عوام کی خاطر کوئی کام نہیں کیا گیا اس کے برعکس میں نے اپنے دور میں اجمل خٹک پولی ٹیکنیک انسٹی ٹیوٹ قائم کیا اسے بھی یہاں سے منتقل کر دیا گیا اور اس میں امورٹڈ افراد کو ملازمتیں دی گئیں ، انہوں نے کہا کہ حکومت میں آ کر اپنے حلقے کا کالج واپس لے کر آئیں گے ،میاں افتخار حسین نے الیکشن کمیشن کی توجہ ایک بار پھر اس جانب دلائی کہ مختلف حلقوں میں سابق حکومت کے نمائدوں نے سیاسی رشوت کا بازار گرم کر رکھا ہے اور لوگوں کو ورغلانے کیلئے سرکاری وسائل کا بے دریغ استعمال کیا جا رہا ہے ، انہوں نے کہا کہ بیورکریسی کی تقرریوں اور تبادلوں پر تاحال سوالیہ نشان ہے جو نگران حکومت کی جانبداری کی طرف اشارہ کر رہا ہے ، انہوں نے کہا کہ اس معاملے کی نزاکت کا احساس کرتے ہوئے الیکشن کمیشن نوٹس لے اور تحفظات دور کرنے کیلئے اقدامات کرے ، انہوں نے کہا کہ حکومت میں آ کر عارضی امن کو حقیقی اور مستقل امن میں تبدیل کریں گے اور ملک کی بقا اور سلامتی کیلئے ہر حد تک جائیں گے۔ انہوں نے پارٹی عہدیداروں اور کارکنوں پر زور دیا کہ الیکشن مہم میں مزید تیزی لائیں ۔

Facebook Comments