نیا ایوان ڈگمگاتا رہے گا، پیپلز پارٹی نے سینیٹ میں نمبر گیم کیلئے رضا ربانی کی قربانی دی، میاں افتخار حسین

نیا ایوان ڈگمگاتا رہے گا، پیپلز پارٹی نے سینیٹ میں نمبر گیم کیلئے رضا ربانی کی قربانی دی، میاں افتخار حسین

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ ملک میں اداروں کے درمیان ٹکراؤ برقرار رکھنے کی سازش کی جا رہی ہے ،تمام ملکی ادارے اپنی آئینی حدود میں رہ کر کام کریں تو صورتحال بہتر ہو سکتی ہے، سینیٹ الیکشن میں کامیابی پر صادق سنجرانی کو مبارکباد پیش کرتے ہیں البتہ سینیٹ کے حوالے سے جو حالات پیدا کئے گئے یہ ایوان ڈگمگاتا رہے گا ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے18مارچ کو نوشہرہ میں اسفندیار ولی خان کے جلسہ عام کے انتظامات اور تیاریوں کے حوالے سے پبی میں تنظیمی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، انہوں نے کہا کہ نوشہرہ کی تاریخ کا یہ عظیم الشان جلسہ ہو گا اور آئندہ الیکشن پر اس کے گہرے اثرات مرتب ہو نگے ، انہوں نے کہا کہ تمام ذمہ دار اور کارکن جلسہ کی تیاریوں کے حوالے سے بھرپور کوششیں کریں اور اسے کامیاب بنانے کیلئے اپنی تمام توانائیاں بروئے کار لائیں،انہوں نے کہا کہ سینیٹ کے الیکشن بالآخر ہو گئے لیکن انتہائی افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ پیپلزپارٹی اور نواز لیگ کا بائیکاٹ کرنے والوں نے زرداری کے ساتھ بیک ڈور رابطوں کیلئے وزیر اعلیٰ بلوچستان کا سہارا لیا ، انہوں نے کہا کہ پہلے بلوچستان اسمبلی توڑنے کی کوششیں کی گئیں جس میں زرداری نے بھرپور کردار ادا کیا تاہم نواز شریف کے سیاسی تدبر کی وجہ سے اسمبلی ٹوٹنے سے بچ گئی ورنہ اگلا نمبر پختونخوا اسمبلی اور پھر سندھ و قومی اسمبلی کو توڑنے کا پلان تھا، میاں افتخار حسین نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے سینیٹ میں نمبر گیم کیلئے رضا ربانی کی قربانی دی ، ملک میں جمہوریت کی بساط لپیٹنے کیلئے ہر حربہ استعمال کیا گیا لیکن کوئی کوشش کامیاب نہیں ہوئی سینیٹ الیکشن رکوانے کی کوشش بھی اسی منصوبے کا حصہ تھی، انہوں نے کہا کہ سینیٹ الیکشن تو بہر حال ہو چکے ہیں لیکن یہ ایوان ڈگمغاتا رہے گا اور کئی مسائل سامنے آ سکتے ہیں،انہوں نے کہا کہ اداروں کے درمیان ٹکراؤ کی پالیسی جاری ہے اور اسی کا نتیجہ ہے کہ آج معیشت زبوں حالی کا شکار ہے اورسرمایہ ڈوبنے کی وجہ سے بیرونی دنیا پاکستان پر اعتماد میں کترا رہی ہے، انہوں نے ملک کے تمام اداروں سے درخواست کی کہ وہ ٹکراؤ کی پالیسی ترک کر دیں اور ملکی مفاد میں جنگ لڑنی چاہئے ، انہوں نے کہا کہ جب تک ٹکراؤ جاری رہے گا جمہوریت خطرے میں رہے گی،پاکستان کی گرے لسٹ میں شامل کرنے کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ یہ ایک وارننگ ہے اور اگر پاکستان دہشت گردی کے خلاف کام کرنے کا ثبوت دے تو اس لسٹ سے نکلا جا سکتا ہے لہٰذا حکومت کو دہشت گردی کے حوالے سے ٹھوس اقدامات اٹھانے چاہئیں اے این پی ہمیشہ سے تشدد کے خلاد اور امن سے محبت کرنے والی جماعت ہے ، ہم عدم تشدد کے پیروکار ہیں اور ملک میں دیرپا امن کے خواہاں ہیں، نئی حلقہ بندیوں کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ پرویز خٹک نے نوشہرہ میں حلقہ بندیوں کے معاملے میں سازش کی ہے اور نوشہرہ کی سطح پر تمام سیاسی جماعتوں کی متفقہ رائے کے مطابق ہم اس کے خلاف میدان میں نکلیں گے اور قانونی راستہ بھی اختیار کریں گے، انہوں نے کہا کہ حلقوں میں ردوبدل کے ذریعے جتنی مرضی دھاندلی کر لی جائے فتح اے این پی کا مقدر ہوگی۔

Facebook Comments