قبل از وقت الیکشن بارے بیان سے معاشی بحران میں مزید اضافہ ہوگا

  • قبل از وقت الیکشن بارے بیان سے معاشی بحران میں مزید اضافہ ہوگا،اسفندیار ولی خان
  • انٹرویو سے یہ تاثر مل رہا تھا جیسے ملک کا اپوزیشن لیڈر حکومت وقت سے کوئی ڈیمانڈ کررہا ہو۔
  • وزیر اعظم کا بیان معاشی دہشتگردی ہے،حکومت معاشی دہشتگردی کے ذمہ دار وں کی نشاندہی کرے۔
  • وزارت خزانہ اور وزیر اعظم ہاؤس میں رابطوں کے فقدان کا خمیازہ قوم کو بھگتنا پڑ رہا ہے۔
  • چیف جسٹس کی جانب سے عمران خان کو توہین عدالت کا نوٹس جاری ہونے کا انتظار کریں گے ۔
  • کپتان ہمت کا مظاہرہ کرے اور این آر او لینے اور ڈیل کرانے والوں کے نام سامنے لائے۔
  • امریکی خط کا جواب وزارت خارجہ نے دینا ہے ،سلیکٹڈ وزیر اعظم کریڈٹ لینے کے چکر میں ہے۔

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے کہا ہے کہ ملک پر مسلط وزیراعظم کے انٹرویو نے مزید کئی سولات کھڑے کر دیئے ہیں ،قبل از وقت انتخابات کی بات نہ صرف راہ فرار ہے بلکہ اس سے معاشی بحران میں مزید اضافہ ہوگا، سلیکٹڈ وزیر اعظم کے پہلے انٹرویو پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا ہے کہ وزیر اعظم کے انٹرویو سے یہ تاثر مل رہا تھا جیسے ملک کا اپوزیشن لیڈر حکومت وقت سے کوئی ڈیمانڈ کررہا ہو،اسفندیار ولی خان نے کہا کہ روپے کے قدر کی کمی بارے وزیر اعظم کا بیان معاشی دہشتگردی ہے،حکومت کو وضاحت کرنی ہوگی کہ اس معاشی دہشتگردی کے ذمہ دار کون ہیں،ایک دن میں ڈالر آٹھ روپے مہنگا ہونے سے معیشت کی اینٹ سے اینٹ بجا دی گئی لیکن مسلط وزیر اعظم بے خبر رہااور انہیں بعد ازاں میڈیا کے ذریعے ڈالر کی اڑان کاپتہ چلاجو اس بات کا ثبوت ہے کہ وزارت خزانہ بھی اپنے وزیراعظم پر اعتماد نہیں کرتی، انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم ہاؤس اور وزارت خزانہ میں رابطوں کا فقدان ہے جس کا خمیازہ قوم کو بھگتنا پڑ رہا ہے،اسفندیار ولی خان کا مزید کہنا تھا کہ قبل از وقت انتخابات بارے وزیراعظم کا بیان نہ صرف راہ فرار ہے بلکہ اس سے معاشی بحران میں مزید اضافہ ہوگا،وزیر اعظم کے بیان کے ساتھ ہی سٹاک ایکسچینج ساڑھے چودہ سو پوائنٹس نیچے آگئی اور لوگوں کا اربوں روپیہ ڈوب گیا ۔اسفندیار ولی خان نے کہا کہ نا اہلی اور ناتجربہ کاری ملک کیلئے ہر لحاظ سے تباہی کا پیش خیمہ ہے ، اب پی ٹی آئی اور کپتان کو بھی عدالت اور چیف جسٹس کے ریمارکس پر افسوس ہونے لگا ہے،ہمیں انتظار رہے گا کہ چیف جسٹس آف پاکستان کب عمران خان کو توہین عدالت کا نو ٹس جاری کرتے ہیں،وزیر اعظم کا چیف جسٹس بارے بیان سیدھی سادی توہین عدالت ہے۔انٹرویو میں این آر او سے متعلق سوال کے بارے میں اسفندیار ولی خان کا کہنا تھا کہ کپتان نے اس معاملے میں بھی عوامی جذبات کو ٹھیس پہنچائی کیونکہ دوران انٹرویو کپتان نے وہ سوال بھی آئیں بائیں شائیں کردیا،اگر کپتان میں ہمت ہے تو وہ این آر او لینے اور ڈیل کرانے والوں کا نام زبان پر لائے ،اسفندیار ولی خان کا مزید کہنا تھا کہ عمران خان نے افغان امن عمل کے حوالے سے امریکی صدر کے خط کا جو حوالہ دیا ہے وہ بھی مفروضوں پر مبنی خط دکھائی دے رہا ہے کیونکہ جس خط کا جواب امریکہ کو وزارت خارجہ نے دینا ہے اور افغانستان بارے پاکستان نے اپنی پوزیشن واضح کرنی ہے اُس خط کے بل بوتے پر سلیکٹڈڈ وزیر اعظم کریڈیٹ لینے کے چکر میں ہے۔

 
Facebook Comments