تیس سال اقتدار میں رہنے والوں کو آج خیبر پختونخوا کے عوام کی یاد ستانے لگی

تیس سال اقتدار میں رہنے والوں کو آج خیبر پختونخوا کے عوام کی یاد ستانے لگی ، امیر حیدر خان ہوتی 
نواز شریف تین بار وزیر اعظم رہے لیکن خیبر پختونخوا کی ترقی و عوام کی خوشحالی سے بے خبر رہے ۔
سیاست سے کرپشن کے خاتمے کے دعوے کرنے والوں نے ضمیر فروشی ا کو فروغ دیا۔
پی ٹی آئی نے لوٹوں کی فوج اکٹھی کر کے ٹکٹ جاری کئے، پشاور کی تباہی کے ذمہ دار سابق وزیر اعلیٰ ہیں ۔
اقتدار میں آ کر پشاور کی عظمت رفتہ بحال کریں گے ، بی آر ٹی منصوبہ اے این پی مکمل کرے گی۔
گدھوں کی تجارت اور چوہے مار مہم کی بجائے بے روزگاری کے خاتمے کیلئے جامع پلان لے کر آئیں گے۔
پچیس جولائی کو فتح کے پروانے کارکنوں کے ہاتھ میں ہونگے۔ این اے 27چارپریزہ میں جلسہ عام سے خطاب

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر امیرحیدرخان ہوتی نے کہاہے کہ خیبر پختونخوا کو پنجاب بنانے کے دعوے کرنے والوں نے تیس سالہ اقتدار میں اس صوبے کو نظر انداز کئے رکھا اور آج الیکشن کی آمد سے قبل عوام کو ورغلانے کیلئے پھر سے اسی نعرے کے ساتھ میدان میں نکل آئے ہیں ،انتخابی مہم میں اے این پی کے امیدواروں کی پوزیشن مستحکم ہے اور کامیابی اے این پی کا مقدر ہے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے این اے27 چارپریزہ چوک میں انتخابی مہم کے دوران منعقدہ جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا، پی کے 67کے امیدوار ملک نسیم خان نے بھی جلسہ سے خطاب کیا ، امیر حیدر خان ہوتی نے کہا کہ سیاست سے ضمیر فروشی اور کرپشن کے خاتمے کے دعوے کرنے والوں نے سب زیادہ ضمیر فروشی اور کرپشن کو فروغ دیا ،پی ٹی آئی نے لوٹوں کی فوج بھرتی کر کے ٹکٹ جاری کئے ،اے این پی واحد سیاسی جماعت ہے جس نے عوامی رائے کا احترام کرتے ہوئے کارکنوں کے مشورے سے ٹکٹ دیئے ،انہوں نے کہا کہ پشاور کی تباہی کے ذمہ دار سابق وزیر اعلیٰ ہیں جس نے اپنے ذاتی مفادات کی خاطر شہر کو آثار قدیمہ میں تبدیل کر دیا ، انہوں نے کہا کہ اقتدار میں آ کر پشاور کی عظمت رفتہ بحال کریں گے اور بی آر ٹی منصوبہ اے این پی مکمل کرے گی،حکومت میں آ کر گزشتہ پانچ سالہ محرومیوں کا ازالہ کریں گے ، صوبے کے عوام باچاخانی چاہتے ہیں، امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ صوبے کے چیف ایگزیکٹو نے پانچ سال تک دھرنوں کی سیاست کی اور عوامی مسائل کو پس پشت ڈالے رکھا جس کا خمیازہ غریب عوام کو بھگتنا پڑا ، انہوں نے کہا کہ پنجاب میں سی پیک ،سندھ میں تھرکول اور بلوچستان میں گوادر جیسے منصوبے شروع کئے گئے جبکہ یہاں صوبائی حکومت گدھوں کی تجارت میں لگ گئی ، بے روزگاری کے خاتمے کیلئے نوجوانوں کو چوہے مار مہم پر لگا دیا گیا ، انہوں نے کہا کہ انتہائی افسوس کا مقام ہے کہ حکومت کی غیر سنجیدگی کی وجہ سے بے روزگاری اور مہنگائی میں اضافہ ہوا ، انہوں نے کہا کہ اے این پی کامیابی کے بعد بے روزگاری کے خاتمے پر توجہ دے گی اور نوجوانوں کو 10لاکھ تک بلاسود قرضے فراہم کرے گی تاکہ وہ اپنے لئے روزگار کے مواقع پیدا کر سکیں ، انہوں نے پارٹی عہدیداروں اور کارکنوں پر زور دیا کہ الیکشن کی بھرپور تیاریاں جاری رکھیں اور عوام اپنے حقوق کے تحفظ اور اپنی آئندہ نسلوں کی بقا کیلئے اے این پی کو کامیاب کرئیں، انہوں نے کہا کہ اقتدارمیں آکرنہ صرف خالی خزانہ بھریں گے بلکہ ترقی کا رکا ہوا پہیہ دوبارہ چلائیں گے، بیرونی سرمایہ کاروں کو لاکر کارخانے لگائیں گے، جنوبی اضلاع میں آئل ریفارمری ،گیس سے بجلی منصوبوں کے ساتھ ساتھ چھوٹے ہائیڈل منصوبے شروع کریں گے، انہوں نے کارکنوں پر زور دیا کہ وہ انتخابی مہم میں مزید تیزی لائیں اور25جولائی کی شام فتح کے پروانے سب کے ہاتھ میں ہوں ۔

Facebook Comments